Breaking News
Home / اہم ترین / اتل کمار انجان نے مودی سے کیا بڑا چیلنج کہا پارلیمنٹ سے استعفی دے کردوبارہ اپنی مقبولیت ثابت کرکے دکھائیں

اتل کمار انجان نے مودی سے کیا بڑا چیلنج کہا پارلیمنٹ سے استعفی دے کردوبارہ اپنی مقبولیت ثابت کرکے دکھائیں

نئی دہلی(ہرپل نیوز،ایجنسی)25نومبر۔ کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا(سی پی آئی) کے قومی سکریٹری اتل کمار انجان نے ایپ کے ذریعہ رائے شماری میں 90فیصد سے زیادہ لوگوں کے نوٹ بندی کے حق میں رائے دینے کے دعوی کو ’بے بنیاد جھوٹ‘ قرار دیتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی کو چیلنج کیا کہ اگر وہ خود کو واقعی اتنے مقبول سمجھ رہے ہیں تو پارلیمنٹ کی رکنیت سے استعفی دے کر دوبارہ الیکشن جیت کر دکھائیں۔ مسٹر انجان نے کہا کہ مودی حکومت راے شماری کے نام پر لوگوں کو گمراہ کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پانچ لاکھ لوگوں کی رائے شماری کی بنیاد پر دعوی کررہی ہے کہ 93%لوگوں نے نوٹ بندی کے حق میں رائے دی ہے لیکن نیوز چینلوں اور اخبارات میں شائع ہونے والی رپورٹیں اس کے بالکل برعکس حقیقت بیان کررہی ہیں۔ شہر ہو یا گاوں ہر جگہ لوگ نوٹ بندی سے پریشان اور بے حال نظر آرہے ہیں ۔ اب تک 75سے زیادہ افراد اس نوٹ بندی کی وجہ سے موت سے دوچار ہوچکے ہیں۔سی پی آئی کے رہنما نے کہا کہ اگر وزیر اعظم نریندر مودی کو اپنی مقبولیت پر اتنا ہی یقین ہے تو انہیں پارلیمنٹ کی رکنیت سے استعفی دے دینا چاہئے اور وارانسی سے دوبارہ الیکشن لڑ کر اپنی مقبولیت ثابت کرنی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کو استعفی دے کر اسی طرح مثال قائم کرنی چاہئے جیسا کہ ان کے ’دوست‘ برطانیہ کے سابق وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے بریکزٹ ریفرینڈم میں اپنی شکست کے بعد کیا تھا۔مسٹر انجان نے وزیراعظم مودی کے نوٹ بندی کے فیصلے کو’اقتصاد ی دہشت گردی ‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس فیصلے سے کسان، کھیت مزدور ، دست کار ، غیر منظم سیکٹر کے ورکر اور عام آدمی ہرکوئی پریشان ہے۔ تجارت ٹھپ ہوگئی ہے او رچھوٹے کارخانے بند پڑے ہیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/T8CXg

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے