Breaking News
Home / اہم ترین / اجودھیا میں شری رام کی مورتی کے ترکش کیلئے شیعہ سینٹرل وقف بورڈ دے گاچاندی کے 10 تیر

اجودھیا میں شری رام کی مورتی کے ترکش کیلئے شیعہ سینٹرل وقف بورڈ دے گاچاندی کے 10 تیر

لکھنو (ہرپل نیوز،ایجنسی)16 اکتوبر۔یوگی حکومت کے ذریعہ اترپردیش کے شہر اجودھیا میں شری رام کی مورتی لگائے جانے کی تجویز پر یوپی شیعہ وقف بورڈ نے اعلان کیا ہے کہ ضرورت پڑنے پر وہ مورتی کیلئے ریاستی حکومت کو زمین فراہم کرائے گا۔ یہی نہیں شیعہ وقف بورڈ نے وزیر اعلی یوگی کو ایک خط بھیج کر کہا ہے کہ مورتی میں شری رام کے ترکش کیلئے 10 چاندی کے تیر بھی بورڈ کی طرف سے دئے جائیں گے۔شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی نے پیر کو وزیر اعلی یوگی کو ایک خط بھیجا ہے ، جس میں ان پیشکش کا تذکرہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے خط میں لکھا ہے کہ اجودھیا میں شری رام کی ایشیا کی سب سے بڑی مورتی لگانے کی ریاستی حکومت کی تجویز کی شیعہ وقف بورڈ سراہنا کرتا ہے ۔ اجودھیا ایک ثقافتی شہر ہے ، جس کی ترقی کیلئے ریاستی حکومت کے ذریعہ جو کام کئے جارہے ہیں ، وہ قابل ستائش ہیں اور اجودھیا میں بھگوان رام کی مورتی نصب ہونے سے ریاست کا قد دنیا بھر میں بڑھے گا۔

وسیم رضوی نے خط میں مزید لکھا ہے کہ شیعہ سماج سے تعلق رکھنے والے متعدد معزز شخصیتوں نے مجھ سے کہا ہے کہ ہے اگر اجودھیا میں مورتی نصب کی جاتی ہے تو شیعہ سماج کی جانب سے بورڈ کے ذریعہ بھگوان رام کی مورتی کے ترکش کیلئے 10 چاندی کے تیر بھی عطیہ کئے جائیں۔

خیال رہے کہ اجودھیا میں سیاحت کو فروغ دینے کے مقصد سے ریاست کی یوگی حکومت نے سرجوندی کے کنارے بھگوان رام کی 108فٹ اونچی مورتی نصب کرنے کا منصوبہ بنایا ہے ۔ یوگی حکومت کا ماننا ہے کہ اس سے اجودھیا کو سیاحت کے نقطہ نظر سے عالمی نقشہ پر پیش کرنے میں مدد ملے گی ۔ بھگوان رام کی یہ مورتی دھنش اورتیر لئے ہوگی ۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/6aLJq

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے