Breaking News
Home / اہم ترین / احمد سدي بایا عرف یاسین بھٹکل کی پھانسی پر اویسی کا سوال، این آئی اے اتنی تیزی دوسرے کیس میں کیوں نہیں دکھاتی؟

احمد سدي بایا عرف یاسین بھٹکل کی پھانسی پر اویسی کا سوال، این آئی اے اتنی تیزی دوسرے کیس میں کیوں نہیں دکھاتی؟

نئی دہلی۔(ہرپل نیوز،ایجنسی )20ڈسمبر: مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اسد الدین اویسی نے حیدرآباد میں ہوئے دھماکے میں کورٹ کا فیصلہ آنے پر سوال اٹھایا ہے کہ اتنی ہی تیزی سے مکہ مسجد دھماکے، سمجھوتہ دھماکے یا بابری مسجد کیس کی سماعت کیوں نہیں کی جاتی۔ اویسی نے کہا کہ این آئی اے نے جس تیزی سے 2013 میں دلسکھ نگر میں ہوئے دھماکے کی تحقیقات مکمل کی، اتنی ہی تیزی دوسرے کیس میں کیوں نہیں کرتی۔

اویسی نے کہا کہ دلسکھ نگر دھماکے میں جس طرح سے حکام نے دلچسپی دکھائی، اس سے تین سال میں رزلٹ آ گیا۔ ہم یہ بول رہے ہیں کہ مکہ مسجد دھماکے یا مالیگاؤں دھماکے میں این آئی اے کیوں نہیں دلچسپی دکھا رہی ہے۔ آخر مرنے والے تمام ہندوستانی ہیں۔ سوامی اسیمانند کو ضمانت ہونے پر این آئی اے اپیل نہیں کرتی۔ 1992 میں بابری مسجد معاملے میں اب تک کیس چل رہا ہے۔ واضح رہے کہ حیدرآباد دھماکے میں پیر کو ہی کورٹ نے یاسین بھٹکل سمیت پانچ افراد کو پھانسی کی سزا سنائی تھی۔

وہیں اویسی کے سوال پر بی جے پی نے کہا ہے کہ وہ فرقہ واریت پھیلا رہے ہیں۔ بی جے پی لیڈر سدھارتھ ناتھ سنگھ نے کہا کہ اویسی بھٹکل پر عدالت کے فیصلے کو فرقہ وارانہ رنگ دے رہے ہیں۔ ہم اس کی مذمت کرتے ہیں۔ یہ دہشت گردوں پر سیاسی روٹیاں سینكتے ہیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/xrSDr

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے