Breaking News
Home / اہم ترین / اراضی گھپلے کے الزامات ،چیف سکریٹری اروند جادھو کی برطرفی کا امکان

اراضی گھپلے کے الزامات ،چیف سکریٹری اروند جادھو کی برطرفی کا امکان

بنگلورو۔24؍اگست(ہرپل نیوز) ریاست کے چیف سکریٹری اروند جادھو کی طرف سے مضافات شہر آنیکل میں بہت بڑی زمین خرید کر اپنی ماں کے نام کرنے کا گھپلہ سامنے آنے کے بعد کسی بھی وقت انہیں حکومت عہدہ سے برطرف کرسکتی ہے۔ چیف سکریٹری کے اراضی گھپلے میں ملوث ہونے کے الزامات ریاستی انتظامیہ میں زبردست ہلچل کا سبب بنے ہوئے ہیں، ان الزامات کے بے نقاب ہوتے ہی خود وزیر اعلیٰ سدرامیا نے محکمۂ مالگذاری کو جانچ کرنے کا سخت حکم صادر کیا اور اس سلسلے میں انہوں نے الزامات کا سامنا کرنے والے چیف سکریٹری سے کسی طرح کا استفسار نہ کرنے کا فیصلہ کیا اور چیف سکریٹری کی وضاحت قبول کرنے کی بجائے محکمۂ مالگذاری سے جانچ رپورٹ طلب کرنے کا فیصلہ کیا۔ ریاست میں افسر شاہی کے سربراہ اروند جادھو کی طرف سے غیر قانونی طریقے سے زمین حاصل کرنے اور اسے اپنی ماں کے نام کرنے کی جہاں تمام حلقوں سے نکتہ چینی کی جارہی ہے وہیں اس معاملے کی جانچ میں غیر معمولی تیزی آچکی ہے۔ اروند جادھو نے اپنی ماں تارا بائی ماروتی راؤ جادھو کے نام پر آنیکل تعلقہ کے رام نائیکنا ہلی کی سروے نمبر 29 میں زمین غیر قانونی طور پر خریدی ، اس گھپلے کے منظر عام پر آتے ہی حکومت کی طرف سے کسی بھی وقت اروند جادھو کو عہدہ سے ہٹا دئے جانے کے امکانات بڑھ گئے ہیں۔وزیر اعلیٰ سدرامیا کیلئے یہ گھپلہ پریشانی کا سبب بن گیا ہے، اور انہوں نے اروند جادھو کو یہ سخت ہدایت دی ہے کہ الزامات کو جھٹلائیں یا عہدہ چھوڑ دیں۔ بتایاجاتاہے کہ آج ریاستی کابینہ اجلاس میں بھی بیشتر وزراء نے اراضی گھپلے میں چیف سکریٹری کے ملوث ہونے پر شدید ناراضگی ظاہر کی اور اس معاملے کی جانچ تیزی سے کرانے وزیراعلیٰ سدرامیا پر زور دیا۔ ان لوگوں نے کہاکہ ان الزامات سے ریاستی حکومت کی ساکھ متاثر ہورہی ہے اسی لئے جلد ا زجلد اس معاملہ کو نمٹا لیا جائے، چیف سکریٹری نے یہ وضاحت کرنی چاہی کہ ان کی ماں کے نام زمین کی خریداری کے سودے میں کسی طرح کی قانون شکنی نہیں ہوئی ہے، ان کی ماں نے اپنے طور پر یہ زمین خریدی ہے۔ سدرامیا نے میٹنگ کے بعد کہاکہ اروند جادھو کی اراضی سودے بازی کی جانچ کیلئے انہوں نے پہلے ہی ہدایت دے دی ہے۔اگر الزامات ثابت ہوئے تو چیف سکریٹری کو قانونی کارروائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔اس دوران بنگلور ساؤتھ تحصیلدار کے دفتر میں کل رات چیف سکریٹری کے پی اے کی طرف سے دستاویزات میں تحریف کی مبینہ کوشش کے بارے میں ایک سوال پر اس واقعہ سے وزیر اعلیٰ نے لاعلمی کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہاکہ چیف سکریٹری پر جو بھی الزامات ہیں محکمۂ مالگذاری کے پرنسپل سکریٹری رمن ریڈی کو اس کی جانچ کی ہدایت دی گئی ہے۔ اس دوران وزیر مالگذاری کاگوڈ تمپا نے بنگلور ساؤتھ تحصیلدار کے دفتر میں چیف سکریٹری کے پی اے کی طرف سے فائلوں میں تحریف کے الزامات کی جانچ کرنے محکمہ کو ہدایت جاری کردی ہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/xrEGP

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے