Breaking News
Home / اہم ترین / اعلیٰ کمان کو رقم کی ادائیگی کاالزام سیاسی رنگ اختیار کرگیا،ضبط شدہ ڈائری منظر عام پر لانے مرکز سے یڈیورپا کا مطالبہ

اعلیٰ کمان کو رقم کی ادائیگی کاالزام سیاسی رنگ اختیار کرگیا،ضبط شدہ ڈائری منظر عام پر لانے مرکز سے یڈیورپا کا مطالبہ

بنگلورو(ہرپل نیوز)23؍فروری: وزیر اعلیٰ سدرامیاپر کانگریس اعلیٰ کمان کو ایک ہزار کروڑ روپے ادا کئے جانے کا الزام دن بدن سیاسی رخ اختیار کرتا جارہا ہے۔ ایک طرف سابق وزیراعلیٰ اور ریاستی بی جے پی صدر بی ایس یڈیورپا نے مرکزی حکومت کو ایک مکتوب روانہ کرکے مطالبہ کیا ہے کہ وزیراعلیٰ کے دست راست رکن کونسل گووند راجو کے گھر سے ضبط کی گئی ڈائری کے مشمولات منظر عام پر لائے جائیں تو دوسری طرف سابق وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے اس معاملے کی سختی کے ساتھ جانچ کرانے کا مطالبہ کیا۔ کلبرگی میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے یڈیورپا نے کہاکہ انہوں نے مرکزی حکومت کو مکتوب روانہ کرکے محکمۂ انکم ٹیکس کی طرف سے ضبط شدہ ڈائری کی تفصیلات منظر عام پر لانے کا مطالبہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ وزیر اعلیٰ سدرامیا نے کانگریس اعلیٰ کمان کو ایک ہزار کروڑ روپے ادا کئے ہیں اور اس ڈائری میں اس سلسلے میں واضح ثبوت موجود ہیں۔ گووند راج کے گھر پر چھاپہ مارکر انکم ٹیکس افسران نے یہ ڈائری ضبط کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ بنگلور میں اسٹیل برڈج کی تعمیر کے عوض دیڑھ سو کروڑ روپیوں کی رشوت میں سے 65کروڑ روپیوں کی رقم پیشگی طور پر لئے جانے کی بھی اس ڈائری میں تصدیق کی گئی ہے۔ ڈائری منظر عام پر آئے گی تو کانگریس کو بھاری ندامت اٹھانی پڑسکتی ہے۔ یڈیورپانے کہاکہ مرکزی حکومت کو چاہئے کہ اس معاملے کی گہرائی سے جانچ کرے ، ریاست کے سبھی بی جے پی اراکین پارلیمان اس سلسلے میں مرکز سے نمائندگی کرنے تیار ہیں۔ اس دوران ریاستی کانگریس قائدین نے بی جے پی کے ان الزامات کے خلاف وزیر اعلیٰ سدرامیا کا کھل کر دفاع کرنے کیلئے کل شہر میں ستیہ میو جیاتے ریلی کا اہتمام کیا ہے۔ یڈیورپا نے دعویٰ کیا کہ بہت جلد کانگریس کے تین چار سینئر لیڈرپارٹی چھوڑنے والے ہیں، کمار بنگارپا نے بی جے پی میں شامل ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلے میں کمار کے ساتھ ان کی بات چیت بھی ہوچکی ہے۔ سابق وزیراعلیٰ ایس ایم کرشنا بھی بی جے پی میں شمولیت کا فیصلہ عنقریب کرنے والے ہیں۔ کانگریس کی طرف سے ستیہ میو جیاتے ریلی کا اہتمام کئے جانے پر طنز کرتے ہوئے یڈیورپا نے کہاکہ کانگریس کو کم از کم اب تو یہ احساس ہورہا ہے کہ سچائی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہاکہ اگر وزیراعلیٰ سدرامیا کو اتنا ہی یقین ہے تو انہیں چاہئے کہ اس سلسلے میں تمام تفصیلات خود منظر عام پر لائیں۔ وہ یہ واضح کردینا چاہتے ہیں کہ سدرامیا اگر ان کے الزام کو جھوٹا ثابت کردیں تو وہ سرگرم سیاست سے سنیاس لینے کیلئے تیار ہیں۔ ریاست میں خشک سالی کی صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے یڈیورپا نے کہاکہ حکومت کو خشک سالی سے بدحال عوام کی فلاح وبہبود اور بازآباد کاری سے کچھ سروکار نہیں۔ مرکزی حکومت پر الزام لگاکر حکومت اپنی ذمہ داری سے بچنے کی کوشش کررہی ہے۔ اس موقع پر یڈیورپا کے ہمراہ کونسل کے اپوزیشن لیڈر ایشورپا ،سابق وزراء اروند لمباولی، رگھوناتھ ملکا پورے ، رکن کونسل بی ایس ویریا وغیرہ موجود تھے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/u90Ks

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے