Breaking News
Home / اہم ترین / افغانستان کے قندھار میں فوجی کیمپ پر طالبان کا حملہ،43 فوجیوں کی موت،ہندوستان نے کی شدید مذمت

افغانستان کے قندھار میں فوجی کیمپ پر طالبان کا حملہ،43 فوجیوں کی موت،ہندوستان نے کی شدید مذمت

کابل(ایجنسی)20 اکتوبر۔ افغانستان کے صوبہ قندھار میں ایک فوجی اڈے پر طالبان کے حملے میں کم ازکم 43فوجی ہلاک ہوگئے ،جبکہ طالبان نے 60فوجیوں کو ہلاک کرنے کا دعوی کیا ہے ۔ حملہ کا آغاز خودکش کار بم دھماکہ سے ہوا اور اسکے بعد فوجی اڈے پر دھاوا بول دیا گیا ۔طالبان کے مقامی ترجمان قاری یوسف احمدی نے بتایا کہ اس حملے میں کم سے کم 60فوجی مارے گئے اور متعدد زخمی ہوگئے ۔ لڑائی میں کم ازکم  10طالبانی بھی ہلاک ہونے کی خبر ہے ۔وزارت دفاع کے ایک بیان میں بتایا گیا کہ کل نصف شب اس حملے کے وقت 60فوجی جوان فوجی اڈے پر موجود تھے ۔43جوان ہلاک ہوئے جبکہ9زخمی ہوگئے ۔چھ فوجی جوان اب بھی لاپتہ ہیں ۔ افغانستان میں مغربی ممالک کی حمایت یافتہ حکومت کو اکھاڑ پھینکنے اور پھر سے اسلامی نظام قائم کرنے کی کوشش کے تحت طالبان پچھلی ڈیڑھ دہائی سے جدوجہد کررہے ہیں ۔الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق طالبان نے حملے کی ذمہ داری لی ہے ۔

ہندوستان نے کی دہشت گردانہ حملہ کی مذمت: ہندستان نے فوجی اڈے پر دہشت گردانہ حملے کی سخت مذمت کرتے ہوئے متاثرین کے تئیں رنج غم کا اظہار کیا ہے ۔ وزارت خارجہ نےایک بیان میں کہا کہ ہندستان اس حملے کی سخت مذمت کرتاہے ۔اس سے پہلے پکتیہ اور غزنی میں بھی دہشت گردانہ حملے ہوئے ہیں ۔بیان میں کہا گیا ہے اس حملے میں ہلاک ہونے افراد کے اہل خانہ اور دیگرمتاثرین کے ساتھ ہندستان اظہار ہمدردی کرتا ہے ۔ہندستان نے امید ظاہر کی ہے نئی حکمت عملی اور کوششوں سے ملک میں امن قائم ہوگا۔

ہندستان نے افغانستان کے خلاف حالیہ دہشت گردانہ کارروائیوں پر تشویش ظاہرکی ہے۔ہندوستان نے کہا ہے کہ افغانستان میں تشدد کے خاتمہ کے لئے ضروری ہے کہ وہ اپنا اور اپنی قیادت والاایک قومی مصالحتی نظام قائم کرنے کا آغاز کرے ۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/sGGCC

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے