Breaking News
Home / اہم ترین / الواداع اماں ! تمل ناڈو کی وزیراعلی جے للتا نےرات 11.30 بجے لی آخری سانس،ملک بھر میں سوگ، تمل ناڈو میں کہرام ، سات دنوں کے سوگ کا اعلان
  • تمل ناڈو کی ہر دلعزیز وزیر اعلی

  • غم سے نڈھال مداحوں کی تصویر

  • اما کا جسد خاکیلے جانے والی ایمبولینس

  • نوحہ کناں خواتین کی بھڑ

  • سیکوٹی اہلکار

  • چاہنے والوں کی محبت کی انتہا

  • ماتم کناں عمر رسیدہ شخص

  • سیکورٹی اہلکاروں سمیت چاہنے والوں میں غم

الواداع اماں ! تمل ناڈو کی وزیراعلی جے للتا نےرات 11.30 بجے لی آخری سانس،ملک بھر میں سوگ، تمل ناڈو میں کہرام ، سات دنوں کے سوگ کا اعلان

چنئی ( ہرپل نیوز، ایجنسی) 6ڈسمبر : ریاست تمل ناڈو کی وزیر اعلیٰ جے للیتا چنئی کے اپولو ہسپتال میں انتقال کر گئی ہیں۔جے للیتا نے پیر کی شب ساڑھے گیار بجے آخری سانس لی ۔ جیہ کو اتوار کی شب دل کا دورہ پڑا تھا اور پیر کی شب اپولو ہسپتال کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں وزیراعلیٰ جے للیتا کی موت کی تصدیق کی گئی ہے۔اس سے قبل ہسپتال نے وزیراعلیٰ جے للیتا کی صحت کے بارے میں ایک بیان میں کہا تھا کہ ڈاکٹروں کی ایک ٹیم مسلسل ان کی نگرانی کر رہی تھی اور انھیں مصنوعی طریقے سے سانس دلایا جا رہا تھا۔چنئی کے اپولو ہسپتال کے باہر جے للیتا کے ہزاروں کی تعداد میں مداح جمع ہیں جبکہ ریاستی حکومت نے ہسپتال کے باہر جمع مداحوں کو کنٹرول کرنے کے لیے سکیورٹی کا سخت انتظام کر رکھا ہے۔

وزیر اعلیٰ جے للیتا کے انتقال بعد ریاست میں غم کی لہر دوڑ گئی ہے۔ انتقال کی خبر سنتے ہی تمل ناڈو سمیت ملک بھر میں غم کی لہر دوڑ گئی ۔ صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی ، وزیر اعظم نریندر مودی ، کانگریس صدر سونیا گاندھی اور مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی سمیت ملک کی سرکردہ شخصیات نے جے للیتا کی موت پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔جے للیتا کے سب سے قریبی سمجھے جانے والے رہنما اے پنيرسیلوم تمل ناڈو کے نئے وزیر اعلی بنے ہیں۔چنئی میں اے آئی ڈی ایم کے کے ہیڈ کوارٹر میں پیر کو رات گئے پارٹی کے ارکان اسمبلی کے اجلاس میں انھیں پارٹی اراکین کا لیڈر منتخب کیا گیا ہے۔اپولو ہسپتال سے جے للتا کے جسدخاکی کو پوذ گارڈنز میں ان سرکاری رہائش گاہ پر لے جایا گیا ہے جہاں راجاجي ہال میں منگل صبح سے شام چھ بجے تک رکھا جائے گا۔پوذ گارڈنز کی علاقے میں بھی سیکورٹی کے بھاری انتظامات کئے گئے ہیں۔تمل ناڈو میں جے للیتا کے انتقال پر چھ دسمبر سے سات دن کے سوگ کا اعلان کیا گیا ہے جبکہ تعلیمی اداروں میں چھٹی کا اعلان کیا گیا ہے اور سرکاری عمارتوں پر پرچم سر نگوں رہیں گے۔خیال رہے کہ گذشتہ شب میڈیا میں جے للیتا کی موت کی غلط خبروں کے سبب ہسپتال کے باہر جھگڑے شروع ہو گئے تھے۔68 سالہ جے للیتا کئی ماہ سے صحت کے مسائل سے دوچار تھیں اور ان کو آخری بار ستمبر میں دیکھا گیا تھا۔سابق فلم سٹار جے للیتا چار مرتبہ تمل ناڈو کی وزیر اعلیٰ بنیں اور ان کے حامی انھیں 'اماں' کہہ کر پکارتے ہیں۔ان کی موت سے خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ ریاست میں بدامنی پھیل سکتی ہے۔جے للیتا 22 ستمبر سے ہی اپولو ہسپتال میں زیرِ علاج تھیں اور چند ہی روز قبل انھوں نے بطورِ وزیر اعلیٰ اپنی ذمہ داریاں نائب وزیر اعلیٰ کو سونپی تھیں۔دل کا دورہ پڑنے کے بعد جے للیتا کو اپولو ہسپتال کے انتہائی نگہداشت والے شعبے (آئی سی یو) میں منتقل کر دیا گيا تھا۔ماضی کی فلموں کی ہیروئن جے للیتا ریاست تمل ناڈو میں بہت مقبول ہیں اور وہ اہم علاقائی سیاسی جماعت 'اے آئی اے ڈی ایم کے' کی سربراہ تھیں۔اُن کے بارے میں مشہور ہے کہ وہ انتخابات کے دنوں میں لوگوں کو مختلف تحائف جیسے الیکٹرانک بلینڈر، بکریاں، سونا وغیرہ تقسیم کرتی تھیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/FRliV

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے