Breaking News
Home / اہم ترین / الوک ورما معاملے میں پھر سنسنی خیز موڑ۔ سپریم کورٹ کی جانب سے بحال کئے جانے کے بعد حکومت نے ہنگامی طور پر پھر کیا برطرف۔ورما نے ملک کے حالات پر ظاہر کی تشویش ۔ کہا یہ اجتماعی غور و فکر کا وقت ہے

الوک ورما معاملے میں پھر سنسنی خیز موڑ۔ سپریم کورٹ کی جانب سے بحال کئے جانے کے بعد حکومت نے ہنگامی طور پر پھر کیا برطرف۔ورما نے ملک کے حالات پر ظاہر کی تشویش ۔ کہا یہ اجتماعی غور و فکر کا وقت ہے

 نئی دہلی( ہرپل نیوز،ایجنسی)12جنوری:مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کے ڈائریکٹر کے عہدے سے ہٹائے گئے مسٹر آلوک ورما نے فائر بریگیڈ سروس کے ڈائریکٹر جنرل کا عہدہ سنبھالنے سے انکار کرتے ہوئے آج استعفی دے دیا۔ سی بی آئی ڈائریکٹر کی انتخابی کمیٹی نے بدھ کی رات ان کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا تھا ، جس کے بعد حکومت نے انہیں فائربریگیڈ سروس ، سول ڈیفنس اور ہوم گارڈز کا ڈائریکٹر جنرل مقرر کیا تھا۔مسٹر ورما نے نئی ذمہ داری قبول کرنے سے انکار کر دیا اور عملہ جات وزارت کے سکریٹری کو مرسلہ استعفی میں کہا کہ انہیں آج سے ہی سبکدوش مانا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی کمیٹی نے فیصلہ کرنے سے قبل سینٹرل ویجلینس کمیشن کی رپورٹ پر اپنا موقف رکھنے کا موقع نہیں دیا۔ انہوں نے کہا کہ قدرتی طور پر عدالتی عمل میں مداخلت کی گئی تھی اور پورے عمل کو الٹ دیا گیا ، جس سے انہیں سی بی آئی ڈائریکٹر کے عہدے سے ہٹایاجاسکے۔

مرکزی تفتیشی ایجنسی کے سابق ڈائریکٹر نے کہا ہے کہ وہ 31 جولائی، 2017 کو ریٹائرمنٹ لے چکے ہوتے اوروہ صرف 31 جنوری 2019 تک سی بی آئی ڈائریکٹرکے عہدے پر مقرر کئے گئے تھے۔ انہیں یہ ذمہ داری اس مقررہ مدت کی دی گئی تھی ۔فائر بریگیڈ سروس ، سول ڈیفنس، اور ہوم گارڈز کے ڈائریکٹر جنرل کے عہدے سے ریٹائرمنٹ کی جو عمرہے، اس سے وہ پہلے ہی گزر چکے ہیں۔ لہذا انہیں آج سے ریٹائرما نا جائے۔مسٹر ورما نے یہ بھی لکھا ہے کہ بدھ کو کیا گیا فیصلہ ان کے کام کاج کے بارے میں تو اشارہ دیتا ہے ، لیکن ساتھ ہی اس بات کا بھی ثبوت بنے گا کہ کوئی بھی حکومت مرکزی ویجیلینس کمیشن کے ذریعہ ایک ادارہ کے طور پر سی بی آئی کے ساتھ کس طرح سلوک کرے گی، یہ اجتماعی غور و فکر کا لمحہ ہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/7GnhA

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے