Breaking News
Home / اہم ترین / امت شاہ نے استعمال کیا اپنے ترکش کا آخری تیر ۔ بولے رام مندرکی تعمیر کے لئےبی جے پی پابند عہد مگر کانگریس بن رہی ہے رکاوٹ

امت شاہ نے استعمال کیا اپنے ترکش کا آخری تیر ۔ بولے رام مندرکی تعمیر کے لئےبی جے پی پابند عہد مگر کانگریس بن رہی ہے رکاوٹ

 نئی دہلی( ہرپل نیوز،ایجنسی)12جنوری: بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے قومی صدر امت شاہ نے آج کہا کہ ان کی پارٹی اجودھیا کے رام جنم بھومی- بابری مسجد پرجلد ہی شانداررام مندرکی تعمیر کے حق میں ہے، لیکن کانگریس اس میں روڑے (رکاوٹ) ڈال رہی ہے۔امت شاہ نے یہاں رام لیلا میدان میں بی جے پی کے نیشنل کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا "بی جے پی چاہتی ہے کہ رام جنم بھومی پرجلد ازجلد ایک شاندارمندربنے۔ سپریم کورٹ میں مقدمہ چل رہا ہے۔ ہم کوشش کر رہے ہیں کہ اس کا فیصلہ کوجلد ازجلد ہو، لیکن کانگریس پارٹی اس میں ایک کے بعد ایک روڑے ڈالنے کا کام کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کانگریس کے اعلی رہنما اوروکیل کپل سبل نے سپریم کورٹ میں سماعت 2019 کے عام انتخابات تک س ٹالنے کی اپیل کی تھی۔ انہوں نے کانگریس سےاس معاملے میں اپنے موقف کو واضح کرنے کے لئےکہا۔ بی جے پی کے صدرنےکہا "ہم آئینی طورپر رام مندرتعمیرکرنےکے لئے پابندعہد ہیں"۔امت شاہ نے عظیم اتحاد پرتنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایک وقت میں کانگریس بنام سب کچھ تھا، لیکن اب بی جے پی بنام ہرکوئی ہے۔ ایسا اس لئے ہے کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ وزیراعظم مودی کو ہٹانا ناممکن ہے۔ عظیم اتحاد بھی مودی کی طاقت کا اعتراف کرتا ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہماری حکومت نے ساڑھے چارسالوں میں 9 کروڑ بیت الخلا بناکرماوں اوربہنوں کو شرم سے آزاد کرکے عزت کے ساتھ جینے کا حق دیا ہے۔ 2014 تک 60 کروڑ گھرایسے تھے، جن کے پاس اپنا بینک اکاونٹ نہیں تھا، لیکن مودی جی نے ایک جھٹکے میں ہی ان سبھی کا اکاونٹ بینک میں کھول دیا۔

امت شاہ نے کانگریس پرالزام لگاتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے دوراقتدارکے دوران ملک میں  بدعنوانی کرنے اورمقروض لوگوں کو بچانے کے لئے جانے جاتے تھے۔ کانگریس نے وجے مالیا، نیرومودی اورمیہل چوکسی کوقرض دیا۔ یہ سبھی کانگریس کے دوراقتدارمیں محفوظ تھے۔ یہی وجہ ہے کہ مودی حکومت کے اقتدارمیں آنے کے بعد وہ ملک چھوڑکرفرارہوگئے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے سرجیکل اسٹرائیک کے ساتھ ہی اری حملوں کا بدلہ لیا ہے۔ ہم نے مودی حکومت کے تحت دہشت گردوں پرگولیوں کی بوچھارکرکے جواب دیا ہے، جس کی وجہ سے دہشت گردانہ حملے کم ہوئے ہیں۔ گزشتہ دوراقتدارمیں ملک غیرمحفوظ تھا۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/59UGm

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے