Breaking News
Home / اہم ترین / برے دن میں کام نہیں آئی دولت، دوستوں نے چھوڑا عرب شہزادہ کا ساتھ

برے دن میں کام نہیں آئی دولت، دوستوں نے چھوڑا عرب شہزادہ کا ساتھ

ریاض (ایجنسی)30نومبر۔ انسداد بدعنوانی کمیٹی کے تحت گرفتار سعودی ارب پتی شہزادہ الولید بن طلال کے برے دنوں میں اب ان کے احباب نے بھی ان کا ساتھ چھوڑ دیا ہے۔ پچھلے برسوں میں مغربی ممالک کے ساتھ انہوں نے خوشگوار تجارتی رشتے ہموار کئے تھے، لیکن سعودی عرب کی انسداد بدعنوانی مہم کے دوران کئی ہفتے پہلے ان کی حمایت میں یا ان کی گرفتاری کے خلاف کسی نے کوئی آواز نہیں اٹھائی۔عرب ملکوں کے سب سے امیر کی فہرست میں اٹھارہ اعشاریہ سات بلین امریکی ڈالر کی مجموعی املاک کے ساتھ الولید بن طلال ٹوئٹر انک کے دوسرے سب سے بڑے شئیرہولڈر بھی ہیں۔ انہوں نے ایپل، روپر مرڈوک کی نیوز کارپ، سٹی گروپ، فورسیزن، فئیرمانٹ اور موون پک ہوٹل چین میں سرمایہ کاری کی ہے۔ وہ امریکہ اور مشرق وسطیٰ میں اوبیر کے لئے رائڈ۔ شئیرنگ سروسیز کے سرمایہ کار بھی ہیں۔باسٹھ سالہ اس امیر شہزادے نے کئی شراکت دار بنائے اور مغربی ملکوں کی تجارت میں کئی بلین امریکی ڈالر کی سرمایہ کاری کی، لیکن بلومبرگ کے مطابق، ان میں سے چند نے ہی اب تک ان کی کھلے عام حمایت کا اظہار کیا ہے۔تاہم، بل گیٹس نے پیر کے روز اس معاملہ میں اس وقت اپنی چپی توڑی جب انہوں نے فلاحی کاموں میں طلال کو ’ ایک اہم شراکت دار‘ کے طور پر یاد کیا۔

ڈیلی صبح ڈاٹ کام کے مطابق، بل گیٹس نے بلومبرگ کو ایک ای میل بیان میں کہا کہ دنیا بھر کے بچوں کو لائف سیونگ ٹیکہ کاری کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے شہزادہ الولید میری فاونڈیشن کے کام میں ایک اہم ترین شراکت دار رہے ہیں۔ ہم نے پولیو، خسرہ اور دیگر روکی جانے والی بیماریوں کو پھیلنے سے روکنے کے لئے ایک ساتھ کام کیا ہے۔ مائیکرو سافٹ انک کے بانی نے کہا کہ خدمت خلق کے تئیں طلال کی عہد بستگی حوصلہ افزا رہی ہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/FFgxn

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے