Breaking News
Home / اہم ترین / دو سال بعد بھی’’ انتخابی موڈ‘‘ میں ہیں مودی

دو سال بعد بھی’’ انتخابی موڈ‘‘ میں ہیں مودی

غیربی جے پی ریاستوں میں وزراء اعلیٰ کو چھوٹاثابت کرنے کے بجائیں مل کر ملک کو آگے بڑھائیں:جوشی

modi_اندور28مئی(ایس اونیوز/آئی این ایس انڈیا)وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت پر نشانہ لگاتے ہوئے کانگریس جنرل سکریٹری سی پی جوشی نے آج کہا کہ یہ حکومت اپنی مدت کے دو سال گزرنے کے بعد بھی وعدے پورے نہیں کر سکی ہے اورمودی اب تک ’’انتخابی موڈ‘‘میں ہیں۔جوشی نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ مرکز کا اقتدار سنبھالنے کے دو سال بعد بھی مودی انتخابی موڈ میں ہیں۔وزیر اعظم جب بھی غیر بی جے پی حکومت والے صوبوں میں جاتے ہیں تو وہاں کے وزرائے اعلیٰ کو چھوٹا ثابت کرناچاہتے ہیں جبکہ وزیر اعظم کے طور پر ان کی ذمہ داری ہے کہ وہ تمام ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ کی مدد لے کر ملک کو آگے بڑھائیں۔انہوں نے کہا کہ مودی کو یاد رکھنا چاہیے کہ اب وہ ملک کے وزیر اعظم ہیں نہ کہ اس عہدے کے امیدوار۔جوشی نے الزام لگایا کہ مودی حکومت غیر ملکی بینکوں میں جمع کالا دھن واپس لانے، مہنگائی میں کمی، روزگار میں اضافہ اور گڈ گورننس کے اپنے انتخابی وعدے نبھانے میں ناکام رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ جملوں کے بل پر اقتدار حاصل کرنے والی مودی حکومت اپنے انتخابی منشور کو حقیقت میں نہیں بدل سکی ہے۔سینئر کانگریسی لیڈر نے یہ الزام بھی لگایا کہ مودی حکومت عدلیہ اورآئینی اداروں کی خود مختاری کو منظوری نہ دے کر جمہوریت کو کمزور کرنا چاہتی ہے۔کانگریس لیڈرنے بی جے پی کے ’’کاگریس مکت بھارت‘‘کے نعرے پر جوابی حملہ کرتے ہوئے دعوی کیا کہ سال 2019کے اگلے لوک سبھا انتخابات میں سیاسی منظر نامہ کانگریس کے حق میں بدلے گا اور ملک ’’مودی مکت‘‘ہو جائے گا۔کانگریس نائب صدر راہل گاندھی کی قیادت کی صلاحیت کو لے کر بی جے پی کے سوال اٹھائے جانے پر جوشی نے کہا کہ راہل کی قیادت کے نتائج آنے والے دنوں میں سب کو نظر آئیں گے۔یہ پوچھے جانے پر کہ کانگریس صدر کے طور پر راہل پارٹی کی کمان آخر کب سنبھالیں گے؟ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں ہم حکمت عملی کے تحت کام کر رہے ہیں،وہ صحیح وقت پر کانگریس کی کمان سنبھالیں گے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/hMf7g

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے