Breaking News
Home / اہم ترین / دو ہزار سترہ کا بجٹ ریاستی اسمبلی میں پیش۔کئی لبھاونے وعدوں کے ساتھ اتر کنڑاضلع میں ایر پورٹ بنانے کااعلان بجٹ میں بھٹکل کا ڈرینیج ایشو یکسر نظرانداز۔ دو سال پہلے کیا گیا تھاوعدہ

دو ہزار سترہ کا بجٹ ریاستی اسمبلی میں پیش۔کئی لبھاونے وعدوں کے ساتھ اتر کنڑاضلع میں ایر پورٹ بنانے کااعلان بجٹ میں بھٹکل کا ڈرینیج ایشو یکسر نظرانداز۔ دو سال پہلے کیا گیا تھاوعدہ

بنگلورو،بھٹکل (ہرپل نیوز،ایجنسی)16مارچ: کرناٹک کےوزیر اعلیٰ سدارامیا نےاپنا بارہواں بجٹ پیش کیا ۔جس میں ضلع شمالی کینرا کے لئے دو تحفے کا اعلان کیا ہے۔ جس میں ڈانڈیلی کو تعلقہ کا درجہ دینا اور کاروار میں ایئر پورٹ کی تعمیر شامل ہے۔جبکہ بجٹ میں ضلع جنوبی کینرا کے منگلورو میں حج ہاؤس کی تعمیر کے لئے فنڈ مختص کیا گیا ہے۔بجٹ میں ریاست کے اکیس اضلاع میں کل انچاس نئے تعلقہ جات تشکیل دینے کا اعلان کیا ہے۔ جس میں اڈپی ضلع کے بیندور، برہماور اور کاپوجبکہ جنوبی کینرا میں موڈبدری اور کڈبااور ضلع شمالی کینرا میں ڈانڈیلی کو تعلقہ کا درجہ دیا گیا ہے۔اور اس کے علاوہ بجٹ میں ریاست کے تین مقامات پر نئے ایئر پورٹ تعمیر کرنے کا اعلان کیا گیا ہے ۔جس میں کاروار کا نام بھی شامل ہے۔ جس سے نہ صرف کاروار اور اطراف کے عوام کو راحت ملے گی بلکہ ضلع کی ترقی اور خوشحالی کے مزید مواقع پیدا ہونگے۔ایک اور خاص بات یہ ہے کہ ریاست میں جو اردو سرکاری اسکول بند ہوچکے ہیں کہ ان کی جگہ آئندہ دو برسوں میں دو سو مولانا آزاد ماڈل اسکول قائم کرنے کا بھی وعدہ کیا گیا ہے۔اس کے علاوہ تمام تعلقہ جات کے سرکاری ہاسپٹلوں میں ۔آئی سی یو۔ کی سہولت فراہم کرنے کی بات بھی کہی گئی ہے۔

بھٹکل غوثیہ محلہ کا ڈرینیج سسٹم نظر انداز : اس بیچ دو سال قبل کیا ہوا اپنا وعدہ وزیر اعلی سد رامیا اس بار بھی نہیں نبھا پائے ۔ حالانکہ دوسال قبل بھٹکل میں مجلس اصلاح و تنظیم کے صد سالہ اجلاس کے موقع پر اپنی آمد کے دوران وزیر اعلی نے خطاب کرتے ہوئے وعدہ کیا تھا کہ وہ جلد از جلد اس مسئلہ کو حل کر نے کے لئے ایک بڑی رقم مختص کریں گے ۔ لیکن اس بار وزیر اعلی نے اگر چہ کہ عوام پرور بجٹ پیش کیا لیکن بھٹکل کے غوثیہ محلہ کے ڈرینیج سسٹم کو نظر انداز کر دیا ۔

عوام میں مایوسی:اد ھر وزیر اعلی نے اپنا بجٹ پیش کیا اور جب بھٹکل والوں کے سوشیل میڈیا گروپس پر یو جی ڈی سسٹم نظر ناداز کرنے کی خبر گردش کر نے لگی تو لوگوں کو بڑی مایوسی ہوئی ۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/VW6fM

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے