Breaking News
Home / اہم ترین / راشن کارڈ کو آدھار سے جوڑنے کی میعاد میں توسیع

راشن کارڈ کو آدھار سے جوڑنے کی میعاد میں توسیع

ریاست میںLink-Aadhaar-Card-and-Ration-Card عنقریب فوڈ کمیشن کا قیام :دنیش گنڈو راؤ
بنگلورو۔13؍جون(ہرپل نیوز) ریاستی وزیر برائے شہر رسد وخوراک دنیش گنڈو راؤ نے آج بتایاکہ راشن کارڈ سے آدھار کارڈ کو جوڑنے کی میعاد میں اس ماہ کے آخرتک توسیع کی گئی ہے۔اگر اس کے بعد بھی یہ عمل پورا نہیں کیاگیا تو راشن کی فراہمی کا سلسلہ بند کردیا جائے گا۔ اخباری نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایاکہ راشن کارڈ کو آدھار سے جوڑنے کیلئے 15جون آخری تاریخ مقرر کی گئی تھی ، جس میں اواخر ماہ تک توسیع کی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اب تک 87 فیصد لوگوں نے اپنے راشن کارڈوں سے آدھار کارڈ سے جوڑنے کا کام مکمل کرلیا ہے، جس میں 60 فیصد کی جانچ بھی مکمل کرلی گئی ہے۔ ان کے مطابق بوگس راشن کارڈوں کے خاتمے کے مقصد سے ایسے کارڈوں کی تفصیل بتانے والوں کو نقد انعام دینے کا فیصلہ لیا گیا ہے۔ جس کے تحت فی بوگس کارڈ کی نشاندہی پر چار سو روپے انعام دیا جائے گا۔کالا بازاری پر قابو پانے کے مقصد سے اس کی تفصیلات فراہم کرنے والوں کو ضبط شدہ اناج کی قیمت میں سے پانچ فیصد رقم بطور انعام دی جائے گی اور اطلاع دینے والے کا نام راز میں رکھا جائے گا۔ یہ نظام راشن اکرڈوں کو آدھار کارڈ سے جوڑنے کا عمل مکمل ہونے کے بعد رائج کیا جائے گا۔ ہر راشن ڈپو کی حدود میں تین افراد پر مشتمل خصوصی ٹیم تشکیل دی گئی ہے جو اناج کے معیار کے علاوہ غیر قانونی فروخت پر نظر رکھیں گے۔ مسٹر دنیش نے بتایاکہ قومی غذائی تحفظ قانون کے تحت ریاست میں فوڈ کمیشن کے قیام کا فیصلہ لیا گیا ہے۔ جس کیلئے کابینہ کی منظوری کے بعد سرکیولر بھی جاری کردیا گیا ہے، جس کے تحت ایک چیرمین ، چھ اراکین اور ایک ممبر سکریٹری کا تقرر عمل میں آئے گا۔ اور اگلے تین ماہ میں اس عمل کو مکمل کرلیا جائے گا۔ ان تقررات سے متعلق وزیر اعلیٰ کی قیادت میں اعلیٰ سطحی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جس میں اسمبلی اسپیکر ، قانون ساز کونسل کے چیرمین اور اپوزیشن لیڈران شامل رہیں گے۔ ضلعی سطح پر بھی کمیشن کے افسران موجود رہیں گے۔ جو اناج کے معیارسے متعلق کمیشن کو رپورٹ پیش کریں گے۔خاطی افسران کے خلاف پانچ ہزار روپیوں تک کا جرمانہ عائد کیا جاسکتا ہے۔ کمیشن کو سنوائی کا اختیار بھی حاصل رہے گا۔
وزیراعلیٰ کا دورۂ دہلی ملتوی،وزراء کے اجتماعی استعفے حاصل کرنے کی توقع
بنگلورو۔13؍جون(ہرپل نیوز) ریاستی کابینہ کی از سر نو تشکیل سے متعلق ایک طرف جہاں سرگرمیاں تیز ہوگئی ہیں وہیں اہم سیاسی تبدیلی میں وزیر اعلیٰ سدرامیا نے اپنے دورۂ دہلی کو ملتوی کرتے ہوئے کل بنگلور سٹی راؤنڈس کا فیصلہ لیاہے۔ ذرائع کے مطابق اعلیٰ کمان کی ہدایت پر وزیراعلیٰ نے اپنا دورۂ دہلی ملتوی کیا ہے، اور عنقریب وزارتی کونسل کا اجلاس طلب کرتے ہوئے وہ تمام وزراء کے اجتماعی استعفے حاصل کرنے والے ہیں۔ جس کے ساتھ وہ نئے وزراء کی فہرست کے ہمراہ اعلیٰ کمان سے جمعرات یا جمعہ کو ملاقات کریں گے۔ اس دوران کابینہ کی از سر نوتشکیل کے موقع پر ممکنہ بغاوت کو روکنے کیلئے اعلیٰ کمان نے حکمت عملی پر غور کرنا شروع کردیاہے، جس کے تحت سینئر وزراء کو اعتماد میں لینے کی کوشش کی جارہی ہے۔اس خصوص میں چند وزراء کو اعلیٰ کمان نے دہلی طلب کرلیا ہے۔ اواخر ماہ تک کابینہ کی از سر نوتشکیل متوقع ہے۔ جس میں تقریباً 15وزراء کو بے دخل کرتے ہوئے پندرہ نئے چہروں کو شامل کرنے کی تجویز ہے۔ جس میں علاقائی اور تمام طبقات کو نمائندگی دینے کا فیصلہ لیا گیا ہے۔ وزیر اعلیٰ سدرامیا اور کے پی سی سی صدر ڈاکٹر جی پرمیشورکو آج دہلی جانا تھا، مگر اعلیٰ کمان کی ہدایت پر انہوں نے اپنا دورہ ملتوی کردیاہے۔ ذرائع کے مطابق 16جون تک کابینہ کی از سر نو تشکیل ہونے کی توقع ہے۔ راجیہ سبھا اور کونسل انتخابات کے موقع پر جس طرح سدرامیا نے دور اندیشی کا مظاہر ہ کرتے ہوئے اعلیٰ کمان کی ہدایت پر امیدواروں کا انتخاب کیا تھا، اسی طرح کابینہ کی از سر نوتشکیل کے معاملے پر بھی وہ اعلیٰ کمان کی ہدایت پر عمل کرنے والے ہیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/5HGFK

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے