Breaking News
Home / اہم ترین / ریاستی وزیر تعلیم پرفحش ویڈیو دیکھنےکے الزام کے بعد بھٹکل میں اے بی وی پی کا احتجاج. وزارت سے برطرفی کا مطالبہ

ریاستی وزیر تعلیم پرفحش ویڈیو دیکھنےکے الزام کے بعد بھٹکل میں اے بی وی پی کا احتجاج. وزارت سے برطرفی کا مطالبہ

بھٹکل (ہرپل نیوز):12/نومبر: دس نومبر کوٹیپو جینتی کے پروگرام کے دوران ریاستی وزیر برائے پرائمری تعلیم تنویر سیٹھ کے موبائل فون پر فحش ویڈیو دیکھنے کی خبروں کے بعد اب ان کے خلاف احتجاج کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔ اس سلسلے میں اے بی وی پی بھٹکل نے بھٹکل اے سی کے ذریعے ریاستی گورنر کو اپیل سونپتے ہوئے مانگ کی ہے کہ تنویر سیٹھ فوری طورپر اپنے عہدے سے استعفیٰ دیں۔

میمورنڈم میں اکھل بھارتی ودھیارتی پریشد نے الزام لگایا ہے کہ تنویر سیٹھ نے جینتی کے پروگرام میں جو حرکت کی ہے وہ ناقابل قبول ہے اور اس کو میڈیا میں دکھایا گیا ہے اب اس طرح کے الزام کا سامنا کرتے ہوئے وزارت کے عہدے پربنے رہنا صحیح نہیں ہے اس سے طلبا میں غلط پیغام جائے گا۔ اس موقع پر اے بی وی پی کے دیواکر نائک، سکریٹری راگھو نائک، سمیت کئی لیڈران موجود تھے. واضح رہے کہ دس نومبر کو بعض کنڑا نیوز چینل نے ان کی ایک وڈیو جاری کی تھی جس میں اُن کو موبایل پرناپسندیدہ تصاویر دیکھنے  کی بات کی گئی تھی.دوسری جانب وزیر تعلیم تنویر سیٹھ نے بھی اپنے اوپر لگے الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا تھا کہ انہوں نے وہاٹس ایپ پر آئی ہوئی بعض تصاویر کو اسکرول کیا تھا اور اپوزیشن نے ان کے خلاف ماحول بنانے کے لئے ایسی تشھیر کی تھی ۔ اس واقعہ کے بعد سے ان کے متعلق اس قسم کی خبریں گردش کر رہی ہیں

The short URL of the present article is: http://harpal.in/9nPwy

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے