Breaking News
Home / اہم ترین / سریمالا مندر میں خواتین کے داخلے خلاف پر تشدد ہڑتال کی رپورٹنگ کرتی رہی خاتون کیمرہ پرسن ،فوٹو وائرل، فرقہ پرستوں نے صحافیوں کو بھی بنایا نشانہ

سریمالا مندر میں خواتین کے داخلے خلاف پر تشدد ہڑتال کی رپورٹنگ کرتی رہی خاتون کیمرہ پرسن ،فوٹو وائرل، فرقہ پرستوں نے صحافیوں کو بھی بنایا نشانہ

تھری ونت پورم ( ہرپل نیوز، ایجنسی) 4جنوری:کیرالہ کے سبریمالا مندر میں دو خواتین کے داخل ہونے کے خلاف ہندو تنظیموں کے بلائے گئے ہڑتال کے دوران جمعرات کو بڑے پیمانے پر تشدد کے واقعات رونما ہوئے ۔ ہڑتال کے دوران رپورٹنگ کررہے میڈیا اہلکاروں پر بھی حملے کئے گئے ۔ اس واقعہ کی ایک تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہورہی ہے۔ کیرالہ کے اخبار ماتربھومی نے ایک خاتون کیمرہ پرسن کی تصویر شائع کی ہے۔ شاجلہ عبدا لرحمان نام کی اس کیمرہ پرسن پر ہڑتال کے دوران حملے کئے گئے، اس کے باوجود وہ کام پر ڈٹی رہی ۔ چہرے پر اس کے درد کو صاف طور پر دیکھا جاسکتا ہے۔

اس واقعہ کے بعد اپنے آنسووں کو چھپانے کی کوشش کرتے ہوئے شاجلہ نے کہا کہ جب مجھے کسی نے پیچھے سے مارا تو میں حیران رہ گئی ۔ یہ میرے پروفیشنل کیرئیر کا سب سے برا تجربہ تھا ۔ہڑتال کی رپورٹنگ کرنے کیلئے آئی شاجلہ کو لوگوں نے گالیاں اور دھمکی بھی دی ، لیکن ان کا کیمرہ مسلسل پورے واقعہ کو قید کرتا رہا ۔ انہوں نے کہا کہ مجھے کس  پیچھے سے کک ماری یہ نہیں معلوم ، میں درد سے کراہ رہی تھی ، مجھ سے کیمرہ چھیننے کی کوشش کی گئی ، لیکن میں ڈٹی رہی ،میرے گلے میں تھوڑی چوٹ آئی ہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/BajM5

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے