Breaking News
Home / اہم ترین / سری نگر میں مارے گئےملیٹنٹ کے جنازہ میں لوگوں کا ہجوم

سری نگر میں مارے گئےملیٹنٹ کے جنازہ میں لوگوں کا ہجوم

سری نگر(ہرپل نیوز، ایجنسی)18نومبر۔سری نگر میں انتظامیہ کی طرف سے نافذ کرفیو کی بڑی تعداد میں لوگوں نے خلاف ورزی کی ۔ جمعہ کو پولیس تصادم میں مارے گئے نوجوان مغیث احمد میر کے جنازے میں شامل ہوئے ۔ انتظامیہ نے قانونی نظام برقرار رکھنے کے لئے سری نگر کے کئی مقامات پر پابندی لگائیں تھیں ۔ شہر کے مختلف حصوں سے لوگ پريم پورہ پہنچے، جہاں نوجوان کو مار گرایا گیا تھا۔جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے صدر یاسین ملک کو گرفتار کر لیا گیا اور انتظامیہ نے انہیں ہفتہ کو سری نگر سینٹرل جیل بھیج دیا۔اس کے علاوہ میر واعظ عمر فاروق کو نظربند رکھا گیا ہے۔غور طلب ہے کہ سری نگر کے زکرہ کے علاقے میں جمعہ کو پولیس کے ساتھ تصادم میں مغیث احمد میر کو مار گرایا گیا تھا۔ جموں و کشمیر پولیس کے ذیلی انسپکٹر عمران ٹاک اس تصادم میں شہید ہو گئے تھے۔پولیس کا کہنا ہے کہ مغیث پہلے لشکر طیبہ سے منسلک تھا اور بعد میں وہ دیگر جہادی تنظیموں میں شامل ہو گیا تھا۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/UpXE7

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے