Breaking News
Home / تازہ ترین / سیاسی جماعتوں کی اندرونی جمہوریت کا مطالعہ کیا جانا چاہئے: نریندر مودی

سیاسی جماعتوں کی اندرونی جمہوریت کا مطالعہ کیا جانا چاہئے: نریندر مودی

نئی دہلی(ہرپل نیوز، ایجنسی)28 اکتوبر۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کسی پارٹی کا نام لئے بغیر کہا کہ ملک کی سیاسی پارٹیوں کی اندرونی جمہوریت کا مطالعہ کیا جانا چاہیے تاکہ سچے جمہوری اقدار کو مضبوط کیا جا سکے۔ مسٹر مودی نے یہاں بھارتیہ جنتا پارٹی کے صدر دفتر میں صحافیوں کے ساتھ دیوالی ملن پروگرام میں کہا کہ سیاسی جماعتوں میں اندرونی جمہوریت، تنظیمی نظام، انتخابی نظام، پارٹی قیادت وغیرہ پر مطالعہ کیا جانا چاہیے جس سے لوگوں کو اصل صورت حال کی معلومات حاصل ہوسکے۔ ان کا ماننا ہےکہ ملک کے مستقبل اور جمہوری نظام کو مضبوط بنانے کے لئے ایسا کرنا ضروری ہے۔ وہ اس بات پریقین رکھتے ہیں کہ سیاسی جماعتوں میں صحت مند جمہوری نظام کے تعلق سے ایک دن میڈیا میں وسیع بحث ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کے چندے کے سلسلے میں میڈیا میں بہترین بحث ہوئی ہے لیکن ان میں سچے جمہوری اقدار کے سلسلے میں بھی بحث کی جانی چاہیے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ جب جنتا پارٹی تھی تو اس کی شکل چھوٹی تھی اور کسی واقعہ پر مرکزی قیادت کی جو رائے ہوتی تھی پارٹی کے چھوٹے کارکن کا احساس بھی ٹھیک اسی طرح کا ہوتا تھا اگرچہ الفاظ کے استعمال میں فرق ہوتا تھا۔ اس سے الگ هونےكے بعد بنی بی جے پی آج بہت بڑی پارٹی بن گئی ہے اور مختلف مسائل پر الگ الگ خیالات سامنے آنے لگے ہیں۔ مسٹر مودی نے کہا کہ سیاسی جماعتوں میں کس قسم کے لوگوں کو کارکن بنایا جا رہا ہے اس پر بھی غور کیا جاناچاہیے۔ انہوں نے اپنے پرانے دنوں کی یاد تازہ کرتے ہوئے کہا کہ اس دوران وہ پارٹی ہیڈ کوارٹر میں رہتے تھے۔ اس وقت میڈیا کی نوعیت ایسی نہیں تھی اس کا دائرہ کار بہت چھوٹا تھا۔ سات آٹھ گنے چنے صحافیوں سے بات چیت کر لیتے تھے اور خبر سب جگہ پہنچ جاتی تھی۔ آج میڈیا بہت وسیع ہے جو ایک چیلنج بھی ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ اب لوگوں کو ان سے نہیں مل پانے کی شکایت ہو سکتی ہے۔ وہ ایک وقت تھا جب وہ میڈیا سے ملنا چاہتا تھا۔ انہوں نے میڈیا سے اپنے طویل تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے مسکراتے ہوئے کہا کہ آج ہم بغیر کاغذ، قلم اور کیمرے کے مل رہے ہیں۔ مسٹر مودی  نے صفائی مہم میں تعاون کے لئے میڈیا کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ اخبارات میں بھلے ہی ان کی کتنی بھی تنقید کی گئی ہو لیکن حفظان صحت کے معاملے پر میڈیا نے قابل ستائش کام کیا ہے۔ تمام فریقوں نے حفظان صحت پر بہتر کام کیا ہے جس کے لئے وہ شکریہ کے مستحق ہیں۔ مسٹر مودی بعد میں منچ سے نیچے آئے اور میڈیا اہلکاروں سے مصافحہ کیا اور ان کی خیریت دریافت کی۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/EIJBW

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے