Breaking News
Home / اہم ترین / سیکولرازم اور جمہوریت کے تحفظ کے لیے ریاست تمل ناڈو میں فیڈریشن کا قیام

سیکولرازم اور جمہوریت کے تحفظ کے لیے ریاست تمل ناڈو میں فیڈریشن کا قیام

اقلیتی طبقات کو بی جے پی سے خوفزدہ ہونے کی ضرورت نہیں۔ کانگریس، مسلم لیگ ،ایس ڈی پی آئی سمیت اہم سیاسی جماعتوں کا اتحاد

چنئی (ہرپل نیوز ) 28 مارچ:سیکولرازم ، سماجی انصاف، ریاستی حکومت کے حقوق جیسے تین بڑے مسائل پر مرکزی بی جے پی حکومت کی عوام مخالف اقدامات کے خلاف کی جانے والی کارروائیوں کے لیے لائحہ عمل تیار کرنے  چنئی ، پریار میدان میں دراوڈا کژگھم کے صدر کے ویرامنی کی صدارت میں منعقد مشترکہ مشاورتی اجلاس میں ریاست کی مختلف سیاسی پارٹیوں کے رہنماؤں نے شرکت کی۔ اس اجلاس میں شریک تمام سیاسی پارٹیوں کو ملا کر ایک فیڈریشن تشکیل دی گئی۔ مشاورتی اجلاس میں طے پایا کہ اقلیتوں طبقات کو مسلسل ہراساں کرکے سیکولرازم کو غیر مستحکم کرنے میں جٹی بی جے پی حکومت کے خلاف چنئی سمیت ریاست کے اہم شہروں میں عوامی اجلاس کا انعقاد کیا جائے گا۔ ان عوامی جلسوں میں فیڈریشن میں شامل سیاسی پارٹیوں کے رہنمابی جے پی کی عوام مخالف پالیسیوں کو اجاگر کریں گے نیز ریاست تمل ناڈو کی ندیوں کے پانی کے مسائل، میتھین ہائیڈرو کاربن منصوبہ، ریاست کو معالی معاونت جاری کرنے میں لاپرواہی، آثار قدیمہ کے تجزیہ پر روک تھام، ریلوے منصوبوں کی تکمیل میں لاپرواہی، سیلم اسپات فیکٹریوں کی نجکاری،تمل ناڈو ماہی گیروں کے مسائل کے تئیں مرکزی بی جے پی حکومت کی لاپرواہی کو عوام کے سامنے اجاگر کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ فیڈریشن نے نئی تعلیمی پالیسی کے تحت سنسکرتی زبان تھوپنے کی کوشش کی بھی ایک قرارداد پاس کر کےسخت مخالفت کی ہے۔ مذکورہ مشاورتی اجلاس میں تمل ناڈو کانگریس کمیٹی صدر تروونا کرسر، انڈین یونین مسلم لیگ کے قومی صدر پروفیسر قادر محی الدین، سی پی آئی پارٹی کے ریاستی صدر تا پانڈین، وی سی کے پارٹی خازن محمد یوسف، ایم ایم کے ریاستی صدر ڈاکٹر ایم ایچ جواہر اللہ، سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا کے ریاستی صدر تہلان باقوی، ڈی ایم کے پارٹی کے ڈپٹی جنرل سکریٹری وی پی درائی سوامی، دروڈا ایکیا تمژر پیروائی کے بانی سبا۔ ویراپانڈین شریک رہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/jEAwT

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے