Breaking News
Home / ریاستی خبریں / شہری اور دیہی علاقوں میں روزانہ22سے24گھنٹے برقی فراہم کی جارہی ہے۔امتحان کے پیش نظر طلباء کو برقی کٹوتی کا سامنا نہ ہو اس کیلئے بھی ضروری اقدامات کئے جائیں گے

شہری اور دیہی علاقوں میں روزانہ22سے24گھنٹے برقی فراہم کی جارہی ہے۔امتحان کے پیش نظر طلباء کو برقی کٹوتی کا سامنا نہ ہو اس کیلئے بھی ضروری اقدامات کئے جائیں گے

بیدر(ہرپل نیوز۔محمدامین نواز)25؍مارچ۔ریاستی وزی ربرائے توانائی مسٹرڈی کے شیو کمار نے کہا کہ برقی کا سامان خردینے میں ہوئے ہزاروں کروڑ روپیے کے گھوٹالے کی تحقیقات کیلئے قائم کی گئی ایوان کمیٹی 15اپریل تک رپورٹ پیش کردے گی۔انکوائری رپورٹ میں تاخیر کے خلاف جنتادل(ایس) کے ایچ ڈی ریوناکی قیادت میں پارٹی کے ارکان نے اسمبلی میں دھرنا دیا ۔تفصیلات کے بموجب وقفہ سوالات کے بعد ایچ ڈی ریونا یہ مسئلہ اُھاتے ہوئے کہا کہ کمار سوامی نے2سال قبل یہ مسئلہ ایوان میں اُٹھاتے ہوئے ا س وقت کے نائب صدر سے ایوان کمیٹی قائم کرنے کا مطالبہ کیا تھا ۔صدر نے شیو کمار کی صدارت میں کمیٹی قائم کردی تھی ‘لیکن آج تک رپورٹ پیش نہیں کی گئی۔انھو ں نے رپورٹ فوری طورپرایوان میں پیش کرنے کی کوشش کی جس کا جنتادل(ایس) کے دیگر ارکان نے حمایت کی ۔چیف منسٹر کرناٹک مسٹر سدارامیا نے دخل دیتے ہوئے کہا کہ توانائی وزیر کو 15؍اپریل تک رپورٹ پیش کرنے کیلئے کہا ۔اس لئے دھرنا واپس لیا جانا چاہئے۔اس یقین دہانی کے بعد جنتادل(ایس) ارکان اپنی جگہ واپس لوٹ گئے۔اس سے قبل شیو کمار نے کہا کہ ایوان کی کئی بار ملاقاتیں ہوئیں‘لیکن ایچ ڈی کمار سوامی ایک بار بھی اجلاس میں شرکت کیلئے نہیں پہنچے ۔اسی طرح بی جے پی کے ارکان نے بھی اپنی رائے پیش نہیں کی ۔جبکہ کمیٹی میں تمام سیاسی جماعتوں کے ارکان کو اپنی رائے رکھنی چاہئے ۔اگر مٹینگ میں نہیں آسکے تو تحریری طورپر رائے بھیجی جاسکتی تھی۔ ایسا نہیں ہوا۔ اب دونوں جماعتوں کے ارکان ماہ کے اختتام تک اپنی رائے بھیجنے کا وقت دیا گیا ہے ۔15؍اپریل تک ایوان کمیٹی رپورٹ پیش کردے گی۔توانائی کے وزیر نے یقین دلایا جون کے مہینے کے آخر تک ریاست کے کسی بھی شہر یا قصبے میں برقی کی کمی نہیں ہوگی۔امتحان کے وقت طلباء کو برقی کٹوتی کا سامنا نہ کرنا پڑا۔اس کیلئے بھی ضروری اقدامات اُٹھائے جائیں گے ۔وقفہ سوالات کے دوران بی جے پی کے اروند لمباولی کے سوال پر وزیر موصوف نے کہا کہ مسلسل خشک سالی کے باوجود کہیں بھی برقی کا مسئلہ نہیں ہے۔ برقی کی کمی کو دور کرنے کیلئے 1000میگا واٹ برقی خریدی جارہی ہے ۔شہری اور قصبہ علاقوں میں روزانہ22سے24گھنٹے برقی فراہم کی جارہی ہے ۔دیہی علاقوں میںآبپاشی کیلئے روزانہ7گھنٹے تھری فیس برقی دو مراحل میں سپلائی کی جارہی ہے ۔دیہی علاقوں میں شام6بجے سے صبح6بجے تک سنگل فیز برقی دی جارہی ہے ۔وزیر نے صفائی دیتے ہوئے کہا کہ برقی کی پیدا وار پلانٹس میں تکنیکی خرابی آنے سے برقی کی پیداوار اور برقی سپلائی میں رکاؤٹ آنے کے امکان سے انکار نہیں کیا جاسکتا ۔مارچ اور اپریل میں طلباء کے امتحانات ہوتے ہیں اس وجہ سے خاص خیال رکھا گیا ہے کہ برقی کی کٹوتی نہ ہونے پائے ۔شرواتی ڈیم کی مرمت شروع کرنے کیلئے ذخائر میں جمع پانی سے برقی کی پیداوار کی جارہی ہے۔انھوں نے خبردار کیا کہ اگر آئندہ برسات کے موسم میں بھی اچی بارش نہیں ہوئی تو سنگین حالات کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے ۔تنگبھدرا ذخائر میں نمی کی وجہ سے رائچور تھرمل پاءئر اسٹیشن میں برقی کی پیداوار روکنا پڑا ہے

The short URL of the present article is: http://harpal.in/BhAqB

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے