Breaking News
Home / اہم ترین / عام آدمی کو بڑی راحت ، 177 اشیا پر ٹیکس میں کمی ، اب صرف 50 چیزیں 28 فیصد کے دائرہ میں۔ 

عام آدمی کو بڑی راحت ، 177 اشیا پر ٹیکس میں کمی ، اب صرف 50 چیزیں 28 فیصد کے دائرہ میں۔ 

گواہاٹی(ہرپل نیوز، ایجنسی)11نومبر ۔اشیا اور خدمت ٹیکس(جی ایس ٹی)کونسل نے عام لوگوں کو بڑی راحت دیتے ہوئے نقصان دہ اور لگزری کی صرف 50چیزوں کو ہی اب زیادہ سے زیادہ جی ایس ٹی شرح 28فیصد کے دائرے میں رکھنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ اب تک 227چیزیں اس دائرے میں تھیں۔بہار کے نائب وزیراعلی اور وزیر خزانہ سشیل مودی نے جی ایس ٹی کونسل کی یہاں چل رہی 23ویں میٹنگ کے درمیان نامہ نگاروں سے کہا کہ کونسل نے 28فیصدی جی ایس ٹی کے سلیب میں شامل چیزوں کی تعداد گھٹاکر 50کرنے کا فیصلہ کیاہے۔اب تک 227چیزیں اس کے دائرے میں تھیں۔اس فیصلے کے پیش نظر 177چیزیں اب 18فیصدی ٹیکس کے دائرے میں آجائیں گی۔جن زچیزوں میں جی ایس ٹی میں کمی کی گئی ہے ان میں چوئنگ گم،چاکلیٹ ،آفٹرشیو،ڈیوڈرنٹ،واشنگ پاؤڈر،ڈٹرجنٹ اور ماربل وغیرہ شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ فٹمنٹ کمیٹی نے 62چیزوں کو 28فیصدی ٹیکس کے دائرے میں رکھنے کی سفارش کی تھی،لیکن کونسل نے 12اور چیزوں کو اس سے ہٹا دیا ہے۔ملک میں یکم جولائی سے نافذ جی ایس ٹی کے تحت چیزوں کے لئے پانچ طرح کے ٹیکس سلیب بنائے گئے تھے جن میں صفر فیصد ،پانچ فیصد، 12فیصد، 18فیصد اور 28فیصد شامل ہیں۔28فیصدی والے مصنوعات پر ریاستوں کےلئے تلافی سرچارج بھی لگائے ہیں۔

ارون جیٹلی نے جی ایس ٹی نافذ کرتے وقت دماغ کا صحیح استعمال نہیں کیا ،یشونت سنہا کا الزام :بی جے پی کے سینئرقد آور لیڈر اور سابق وزیر خزانہ یشونت سنہا اپنی پارٹی کے خلاف تازہ حملہ کرتے ہوئے کہاکہ وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے جی ایس ٹی نافذ کرتے وقت دماغ کا صحیح استعمال نہیں کیا جس کی وجہ سے آج یہ صورت حال ہے اور بہتر ہوگا وہ استعفی دے دیں انہوں نے یہ بھی کہاکہ نوٹ بندی جس بلیک منی پر قابوپانے کیلئے کی گئی تھی اس میں بھی کوئی کامیابی نہیں ملی ۔انڈین ایکسپریس کی رپوٹ کے مطابق یشونت سنہا نے بہار کے سابق اسپیکر ادے نارائن چودھری کی جانب سے ریزرویشن پر منعقدہ پروگرام کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا ،انہوں نے کہاکہ جی ایس ٹی نافذ کرتے وقت دماغ کا صحیح استعمال نہیں کیا گیا جس کی وجہ مقصد میں کامیابی نہیں مل رہی ہے ،انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم کو چاہیے کہ انہیں برخاست کرکے کسی اورکو ان کی جگہ بحال کریں ،یشونست سنہاکہاکہ میں مکمل ذمہ داری کے ساتھ یہ بات کہ رہاہوں اور ملک کے مفاد کی بات کررہاہوں ۔واضح رہے کہ یشونت سنہا اس سے قبل بھی اپنے ایک مضمون میں ملک تباہ ہوتی معیشت اور نوٹ بندی وجی ایس ٹے کو غلط اقدامات بتاتے ہوئے سخت تبصرہ کرچکے ہیں ۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/dzeTw

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے