Breaking News
Home / اہم ترین / عمر قتل کیس میں نیا موڑ ، الور پولیس نے کہا : گئو رکشکوں کے ہاتھ ہونے کا اب تک کوئی ثبوت نہیں۔ معاوضہ اور ملزموں کی گرفتاری تک پوسٹ مارٹم سے اہل خانہ کا انکار ، مسلم تنظیمیں بھی متحد

عمر قتل کیس میں نیا موڑ ، الور پولیس نے کہا : گئو رکشکوں کے ہاتھ ہونے کا اب تک کوئی ثبوت نہیں۔ معاوضہ اور ملزموں کی گرفتاری تک پوسٹ مارٹم سے اہل خانہ کا انکار ، مسلم تنظیمیں بھی متحد

الور (ہرپل نیوز ، ایجنسی)14نومبر۔ راجستھان میں گائے لے جارہے مسلم نوجوان عمر کے قتل کے سلسلہ میں ایک نیا انکشاف ہوا ہے ۔ پولیس نے اب قتل میں گئو رکشکوں کا ہاتھ نہیں ہونے کا دعوی کیا ہے ۔ علاوہ ازیں الور پولیس نے ایف آئی آر درج کرلی ہے اور اس سلسلہ میں ایک شخص کو حراست میں بھی لیا گیا ہے۔ الور کے ایس پی کے مطابق اب تک کی جانچ میں ایسا کوئی ثبوت نہیں ملا ہے ، جس سے یہ کہا جاسکے کہ اس کے پیچھے گئو رکشکوں کاہاتھ ہے۔الور کے ایس پی راہل پرکاش کے مطابق اس سلسلہ میں ایک شخص کو گرفتار کیا گیا ہے اور دیگر 6 افراد کی شناخت کرلی گئی ہے ۔ الور پولیس کے مطابق جس ٹرک سے گایوں کو لے جایا جارہا

ایس پی نے مزید بتایا کہ گرفتار شخص نے عمر اور اس کے ساتھیوں کے ساتھ مار پیٹ کا اعتراف کرلیا ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ اس نے لاش کو ٹھکانے لگانے کی بات بھی تسلیم کرلی ہے ۔ تاہم پولیس اس واقعہ کو فی الحال صرف قتل کا مان کر تفتیش کررہی ہے۔ پولیس کے مطابق جانچ کے بعد ہی کچھ یقینی طور پر کہا جاسکتا ہے کہ اس میں گئو رکشکوں کا ہاتھ ہے یا نہیں۔خیال رہے کہ پولیس نے عمر کے چچا کی شکایت پر آئی پی سی کی دفعہ 302 (قتل ) ، دفعہ 147 ( فساد کرنا ) اور دفعہ 307 ( اقدام قتل ) کے تحت کیس درج کرلیا ہے ۔

دفاع میں اتریں مسلم تنظیمیں ۔گئو پالک عمر خان کے قتل کے معاملہ میں مسلم تنظیموں نے ایک بڑا فیصلہ کیا ہے ۔ عمر کے اہل خانہ کو انصاف دلانے اور گئو رکشکوں کے خلاف کڑی کارروائی کرنے کیلئے متعدد تنظیموں نے ایک کمیٹی بناتے ہوئے تین اہم مطالباب کئے ہیں اور ان کے پورا ہونے تک عمر کا پوسٹ مارٹم نہیں کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔جے پور کے مسلم مسافر خانہ میں اس کمیٹی کی میٹنگ کے بعد حکومت سے تھانہ انچارج کو سسپینڈ کرنے ، اہل خانہ کو 50 لاکھ روپے کا معاوضہ دینے اور سبھی ملزموں کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔ کمیٹی کے رکن عبد اللطیف نے کہا کہ جب تک مطالبات تسلیم نہیں کئے جاتے ہیں ، اس وقت تک لاش کا پوسٹ مارٹم نہیں ہونے دیں گے۔

اہل خانہ کا دعوی ، عمر کو گئو رکشکوں نے قتل کیا: عمر کے چچا الیاس اور رزاق نے بھی لاش کا پوسٹ مارٹم کروانے اور لاش لینے سے انکار کردیا ہے ۔ اہل خانہ کا مطالبہ ہے کہ پہلے سبھی ملزموں کو گرفتار کیا جائے اور انہیں انصاف ملے ، تبھی وہ لاش لیں گے ۔ اہل خانہ کا کہنا ہے کہ قتل کرنے والے گئو رکشک ہیں ، حکومت ان کی غنڈہ گردی ختم کرے ۔ اہل خانہ نے کہا کہ عمر گائے اسمگلر نہیں بلکہ گئو پالک تھا۔

آٹھ بچوں کا باپ تھا عمر: عمر کے بھائی خورشید نے کہا کہ اس کا بھائی گائے اسمگلر نہیں تھا ۔ وہ گائیں پالتا تھا ۔ اس کے آٹھ بچے ہیں ۔ اس کے قتل سے کنبہ پر دکھوں کا پہاڑ ٹوٹ پڑا ہے۔ خورشید نے مزید کہا کہ جب ہمیں انصاف ملے گا ، تبھی ہم پوسٹ مارٹم کروائیں گے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/YNEny

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے