Breaking News
Home / اہم ترین / مجلس اتحاد المسلمین کرناٹک اسمبلی انتخابات 2018میں100امیدوار کھڑا کرے گی۔بی جے پی کے سوا کسی بھی پارٹی سے مفاہمت ممکن ۔ ایم ائی ایم

مجلس اتحاد المسلمین کرناٹک اسمبلی انتخابات 2018میں100امیدوار کھڑا کرے گی۔بی جے پی کے سوا کسی بھی پارٹی سے مفاہمت ممکن ۔ ایم ائی ایم

گلبرگہ (ہرپل نیوز، شاکر حکیم ) 21نومبر۔ آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین اب کرناٹک میں بھی اپنی پارٹی کی جریں مضبوط کرنے کے منصوبے بنارہی ہے ۔ مجلس کے صدر مسٹر اسد الدین اولیسی کے منصوبہ کے مطابق اس بار کرناٹک اسمبلی کے انتخابات 2018میں مجلس اتحاد المسلمین کے کم از کم 100امیدوار کھڑا کرنے کے منصوبے پر غور کر رہی ہے ۔ اس بات کا انکشاف گروشانت پٹہ دار ریاستی سیکریٹری مجلس اتحاد المسلمین نے اپنے صحافتی بیان میں کیا ہے ۔انھوں نے کہا کہ اگرچہ آل اندیا مجلس اتحاد المسلمین کو گزشتہ بار اسمبلی انتخابات میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا لیکن اس نے مقامی مجالس کےانتخابات میں کرناٹک میں اپنا کھاتہ کھول دیا ۔ مسٹر گروشانت پٹہ دار نے جو ریاست کرناٹک میں مجلس اتحاد المسلمین کی ریاستی مجلس عاملہ کے رکن بھی ہیں اپنے بیان میں کہاکہ ایم آئی ایم ملک گیر سطح پر مقبول ہوچکی ہے ۔ اس پارٹی کی سرگرمیوں کو وسعت دینے کے لئے کرناٹک ریاست میں جہاں 100نشستوں پر انتخاب لڑنے کا مجلس کا پروگرام ہے وہیں علاقہ حیدر آباد کرناٹک سے مجلس اپنے 25امیدوار اسمبلی کے لئے کھڑا کرے گی۔ مسٹر گروشانت پٹہ دار نے بتایا کہ گلبرگہ ڈویژن سے 25،, بیلگام سے 25, منگلور سے 25اور بنگلور سے 25نشستوں پر اس طرح جملہ 100نشستوں پر مجلس اتحاد المسلمین کے امیدوار انتخاب لڑیں گے۔ انھوں نے توقع کا اظہار کیا کہ کم از کم 50مجلسی امیدوار انتخابات میں کامیاب ہوسکتے ہیں ۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ ایم آئی ایم پارٹی کرناٹک میں بی جے پی کو چھوڑ کر تمام سیاسی جماعتوں سے مفاہمت اورسیاسی اتحاد کے لئے تیار ہے۔پریس کانفرنس میں مسرز سنتوش انکلگی،شیو کماؤر مدرن، سید چاند پاشاہ، ،مقبول خان، پون کمار کھیونی و دیگر شریک تھے ۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/ab5Bo

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے