Breaking News
Home / اہم ترین / مسلمانوں کا ایمان کمزور ہورہا ہے،اس لئے مسلمان پریشانیوں میں ہیں:مفتی شعیب اللہ قاسمی کا بیان ۔ جمعیۃ علماء ہند شیموگہ کے زیر اہتمام حالات حاضرہ پر اہم اجلاس

مسلمانوں کا ایمان کمزور ہورہا ہے،اس لئے مسلمان پریشانیوں میں ہیں:مفتی شعیب اللہ قاسمی کا بیان ۔ جمعیۃ علماء ہند شیموگہ کے زیر اہتمام حالات حاضرہ پر اہم اجلاس

شیموگہ:(ہرپل نیوزز) 21مارچ: موجودہ حالات مسلمانوں کیلئے نئے نہیں ہیں ،آج سے 1400سال قبل بھی مسلمانوں کو مختلف امتحانوں کا سامنا کرنا پڑرہا تھا، آپﷺ کے دورنبوت میں بھی آزامائشوں کا دور گذر ا ہے،اس کے بعد صحابہ کے دور میں بھی مسلمانوں کو آزامائشوں کا سامنا کرنا پڑا تھا،لیکن اس وقت صحابہ کا ایمان پختہ تھا اس وجہ سے سنگین حالات کامقابلہ کرتے رہے اور اسلام کو دنیا کے ہر کونے تک پہنچایا۔لیکن آج ہمارا ایمان کمزور ہوچکا ہے،اس لئے ہمارے لئے حکومتوں کی چھوٹی سے چھوٹی مشکلات بھی سخت ترین دکھائی دے رہی ہیں ۔اس بات کااظہارجامعہ اسلامیہ مسیح العلوم بنگلورو کے بانی و مہتمم مولانامفتی محمد شعیب اللہ خان مفتاحی نے کیا ہے۔جمعیۃ علماء ہند شاخ شیموگہ کے زیر اہتمام کل یہاں منعقدہ جلسہ عام بعنوان ہندوستان کے موجودہ حالات میں مسلمانوں کی ذمہ داریاں اسوۂ رسول ﷺ کی روشنی میں بطور صدر جلسہ خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ لوگ کہتے ہیں کہ اسلام تلوارکی نوک پر پھیلا ہے،یہ الزام دنیا کے بدترین جھوٹ میں سے ایک جھوٹ ہے ۔اسلام کوماننے والوں نے اسلام کو پھیلانے کیلئے تلوار نہیں اٹھائی تھی بلکہ اس کی دفاع کیلئے انہوں نے تلوار کاسہارا لیا تھا،اصل میں اسلام ایمان کی قوت،اخلاقی معیار اور انسانوں میں بہترین تعلقات کے سبب پھیلا ہے۔ہر زمانے میں اسلام اور مسلمانوں کو ختم کرنے کی کوشش کی گئی ہے،لیکن یہ دین اللہ کا دین ہے اسے کوئی ختم نہیں کرسکتا۔مزید انہوں نے کہا کہ آج مسلمانوں کا ایمان کمزور ہوتا جارہا ہے۔ہمارا یقین دھاگوں، دھاتوں،تنکوں، منکوں اور پیڑوں پر مضبوط ہورہا ہے جبکہ پوری کائنات بنانے والے ہمارے رب اللہ پر سے ہمارا یقین کمزور ہورہا ہے۔ہمارے اخلاق میں گراوٹ آرہی ہے ، امت میں نمازیوں کی کمی ہورہی ہے،جہاں نمازیوں کی کمی ہوجائے وہاں اللہ کی رحمت کہاں سے آئیگی؟۔مزید انہوں نے کہا کہ ہم نے ہماری نمازوں سے خشوع و خضوع ختم ہوتا جارہا ہے اور نمازوں کے بعد ذکر واذکارکیلئے وقت نکالنا بھی ضروری نہیں سمجھ رہے ہیں، ان حالات میں اللہ اگر ہمیں مصیبتوں میں ڈالتا ہے اور ہم پر ظالم حکمران مسلط کرتا ہے تو یہ ہمارے اعمال کی وجہ سے ہے۔اس موقع پردارالعلوم شاہ ولی اللہ کے استاذ الحدیث مفتی نظام الدین قاسمی نے بات کرتے ہوئے کہا کہ مسلمان پہلے زبر تھے ،اب زیر ہوگئے ہیں۔جو اللہ کی جانب سے عذاب ہم اتر رہا ہے وہ عذابِ ادنیٰ ہے، اسے اللہ نے محض چکنے کیلئے نازل کیا ہے ، تاکہ ہم اپنے اخلاق وایمان کو صحیح کرسکے۔ آج وہ وقت آگیا ہے جس میں مسلمانوں کو وہ دعا پڑھنی پڑیگی جو صحابہ آپﷺ کے دورمیں بھی پڑا کرتے تھے جس میں کہا گیا ہے کہ’’اے اللہ ہم پر ظالموں کو مسلط نہ کر اور ہم پر انصاف کرنے والے حکمران عطا فرما‘‘۔جلسہ میں جمعیۃ علماہند شاخ شیموگہ کے صدر مولانا سید مذکر قاسمی،سکریٹری مولانا ارشاد بیگ قاسمی،مولانا عمر،حافظ انجم،مولانا عثمان بیگ رشادی کے علاوہ مقامی و بیرونی علماء شریک تھے ۔ سامعین میں مرداور خواتین سینکڑوں کی تعداد میں شریک رہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/aCCmo

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے