Breaking News
Home / اہم ترین / ملک کی سلامتی کے لئےجدوجہد کرنے والوں کو عقل وتدبر سے کام لینے کی ضرورت:مولانا سجاد نعمانی

ملک کی سلامتی کے لئےجدوجہد کرنے والوں کو عقل وتدبر سے کام لینے کی ضرورت:مولانا سجاد نعمانی

پی ایف ائی اورنگ آباد کے اجلاس میں مسلمانوں میں سیاسی شعور کے فقدان پرمقررین نے جتائی تشویش 

اورنگ آباد (ہرپل نیوز ۔اے زیڈ شیخ)28 اکتوبر۔ملک میں نظام عدل کے قیام کے لیے حالات جتنے سازگار اس وقت ہیں اس سے پہلے کبھی نہیں تھے ، ملک کی بقا اور سلامتی کی راہ میں جدوجہد کرنے والوں کو فہم و فراست اور تدبر سے کا م لینا ہوگا ، ان خیالات کا اظہار آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے ترجمان مولانا خلیل الرحمان سجاد نعمانی نے کیا وہ پاپولر فرنٹ آف انڈیا کی عظیم الشان کانفرنس سے خطاب کررہے تھے اس کانفرنس میں ملک کے مختلف شہروں سے جید علما و اکابرین نے شرکت کی ۔اورنگ آباد کے عام خاص میدان میں انسانی سروں کا ٹھاٹھیں مارتا یہ سمندر آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے ترجمان مولانا خلیل الرحمان سجاد نعمانی کو سننے کے لیے جمع ہوا ۔ پی ایف آئی کی جانب سے منعقدہ اس کانفرنس میں مختلف تنظیموں کے نمائندوں نے خطاب کیا اور حالات حاضرہ پر روشنی ڈالی کانفرنس سے صدارتی خطاب کرتے ہوئے مولانا خلیل الرحمان سجاد نعمانی نے ہندوستانی تاریخ پر سیر حاصل روشنی ڈالی اور اس بات پر زور دیا کہ مسلمان اپنے اسلاف کے نقش قدم پر چلتے ہوئے مظلوموں کی حمایت کو اپنا مشن بنالیں، مولانا نے کہا کہ موجودہ حالات ملک کے روشن مستقبل کی نوید سنارہے ہیں بس حالات کو صحیح رخ پر ڈالنے کی ضرورت ہے ۔مولانا سجاد نعمانی نے اپنے خطاب میں فرقہ پرستوں کی سازشوں کو اجاگر کیا اور مسلمانوں سے اپیل کی کہ وہ اپنے آپ کو اقلیت تصور کرنا چھوڑ دے کیونکہ اس ملک میں جیسے اقلیت کہا جاتا ہے وہ ملک کی سب سے بڑی اکثریت ہے ہندو کے نام پر دیگر اقوام کو ہمنوا بنانے کی ایک سازش ہے ، مولانا نے مسلمانوں میں سیاسی شعور کے فقدان کا ذکر کیا اور اس کمی کو دور کرنے پر زور دیا اپنے خطاب میں انھوں نے مسلمانوں سے اپیل کی کہ وہ دیگر اقوام کے شانہ بشانہ کھڑے ہوکر ملک کی سیاسی سمت کا تعین کریں مولانا نے موجودہ وزیراعظم کو اول درجے کا دروغ گوقرار دیا اور کہا کہ اب ملک کے لاکھوں باشندے اس فریب کو سجھ چکے ہیں لہذا جن لوگوں نے اقتدار تک پہنچایا تھا اب وہی ان کی آخری کیل ثابت ہونگے ایسے حالات میں مسلمانوں اور دیگر اقوام کو فہم وفراست سےکام لینا ہوگا اور اپنا ایجنڈا طئے کرنا ہوگا۔

اس کانفرنس میں متعدد تنظیموں کے نمائندوں نے اپنے خیالات کا اظہار کیا ۔مجموعی طور پر حالات سے خوفزدہ ہونے کے بجائے باہمی اتحاد اور دیگر اقوام کے اشتراک کے ذریعے حالات کا مقابلہ کرنے پر زور دیا گیا۔کانفرنس میں پاپولر فرنٹ آف انڈیا کی ملی اور سماجی خدمات کا اعتراف کیا گیا اور اس کے کیڈر کومزیدمضبوط کرنے پر زور دیا گیا اس کانفرنس کو سننے کے لیے ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی اور پورے انہماک سے جید علما کا خطاب سماعت کیا، واضح ر ہے کہ مہاراشٹر میں پی ایف آئی سن دو ہزار دس سے اپنی سرگرمیاں انجام دے رہی ہے

The short URL of the present article is: http://harpal.in/EBYDD

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے