Breaking News
Home / تازہ ترین / وزیراعلی سدرامیا نے بنگلورشہر کے مختلف علاقوں کاکیامعائنہ

وزیراعلی سدرامیا نے بنگلورشہر کے مختلف علاقوں کاکیامعائنہ

ترقیاتی کاموں میں دلچسپی نہ لینے والے افسران کو لیا آڑے ہاتھوں ،سستی برتنے والےبعض افسران معطلsiddaramaih1

بنگلورو(ہر پل نیوز)24؍مئی وزیر اعلیٰ سدرامیا نے مہینوں بعد آج شہر کے مختلف علاقوں میں جاری ترقیاتی کاموں کا معائنہ کیا اور ان کاموں کے مکمل نہ ہونے پر بی بی ایم پی افسران اور انجینئروں کو آڑے ہاتھوں لیا۔ شہر میں بارش کے سبب عوام کو پریشانیا ں ہونے کے خدشات کو دیکھتے ہوئے وزیراعلیٰ سدرامیا نے آج میئر منجوناتھ ،وزیر برائے ترقیات بنگلور کے جے جارج اور دیگر اعلیٰ افسران کے ساتھ شہر کے بیشتر علاقوں کا دورہ کیا اور مختلف ترقیاتی کاموں سے عوام کو ہونے والی دشواریوں کا جائزہ لینے کے ساتھ ان کاموں کو جلد ازجلد پورا کرنے افسران کو ہدایت جاری کی۔ان کاموں کی سست روی پر انہوں نے افسران کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہاکہ ان کی لاپرواہی کے نتیجہ میں عوام حکومت کو برا بھلا کہتے ہیں۔ پچھلے چار سالوں سے بیشتر ترقیاتی کاموں کو اب تک پورانہ کئے جانے پر وزیراعلیٰ نے افسران کو لتاڑا۔ آج صبح وزیر اعلیٰ نے اپنی سرکاری رہائش گاہ کرشنا سے اپنا سفر شروع کیا۔ اور سب سے پہلے آنند راؤ سرکل پہنچے۔ وہاں انڈر پاس کی تعمیر کے کام کا جائزہ لیا۔ بعد میں وٹھل مالیا روڈ پہنچے اور وہاں ٹنڈر شور کے تحت جاری فٹ پاتھوں کے کاموں کا جائزہ لیا۔ یہاں سے نکل کر وہ ایچ ایس آر لے آؤٹ میں جاری مختلف کاموں کو دیکھنے کیلئے پہنچے ، یہاں کے کاموں کو نامکمل دیکھ کر سدرامیا نے ایک انجینئر کو معطل کرنے کا حکم صادر کیا۔ بی ڈبلیو ایس ایس بی کے ایک انجینئر ردرا مورتی کو پچھلے چار سال سے نالے کاکام مکمل کرنے میں ناکامی پر معطل کیا۔ بتایا گیا کہ ایچ ایس آر لے آؤٹ کے قریب اس نالے کی تعمیر کیلئے اب تک 18 کروڑ روپے صرف کئے جاچکے ہیں۔ غیر ضروری طور پر اس نالے کی تعمیر میں تاخیر ہورہی ہے۔ وزیر اعلیٰ سدرامیا نے جب ردرا مورتی کو طلب کرکے اس سلسلے میں استفسار کیا تو وہ بھوکلا گیا اور وزیر اعلیٰ کو کوئی جواب نہیں دے پایا ، جس کی وجہ سے سدرامیا نے اسی مقام پر ردرا مورتی کی معطلی کا حکم صادر کیا۔اس سے قبل وزیراعلیٰ کنو ٹھیٹر کے پاس زیر تعمیر انڈر پاس کا معائنہ کیا۔ اور یہاں ہر بار بارش کے مرحلے میں پانی جمع ہوجانے سے نمٹنے کیلئے فوری قدم اٹھانے میئر کو ہدایت دی۔ میئر نے بتایاکہ دیڑھ کروڑ روپیوں کی لاگت پر یہاں پر بارش کے پانی کی نکاسی کیلئے پمپ نصب کئے جارہے ہیں۔ یہاں سے پانی نکال کر کرشنا فلور مل کے قریب نالے میں بہادیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے مڑیوال بازار میں جاری سڑک کی تعمیر کے کاموں کا معائنہ کیا۔850 میٹر کی سڑک کی تعمیر 4.5 کروڑ روپیوں کی لاگت پر کی جارہی ہے ، اس میں 740 میٹر کی سڑک کاکام پورا ہوچکا ہے، 110 میٹر سڑک کو جلد ہی مکمل کرلیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے اس بازار کے تاجروں سے خود بات چیت کی اور دریافت کیا کہ ان کی سہولت کیلئے اور کیا کیا جاسکتاہے۔وزیر اعلیٰ نے بتایاکہ نئی سڑک تعمیر ہونے کے بعد یہاں 400دکانوں کی تعمیر کی جارہی ہے جہاں موجودہ تاجروں کو تجارت کا موقع دیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے مڑوال کے ریمانڈ ہوم کا دورہ کیا جہاں پر کمسن مجرموں کو قید رکھاا جاتاہے ، ان قیدیوں سے انہوں نے انہیں دی جارہی سہولیات کے بارے میں دریافت کیا اور ان کو تاکید کی کہ وہ آنے والے دنوں میں وہ ایک اچھے شہری بن کر ریاست اور ملک کا اثاثہ بنیں۔ شہر کے مختلف علاقوں کا اپنے وزراء اور دیگر افسران کے ساتھ معائنہ کرنے کے بعد سدرامیا نے شہر کے حالات کو بہتر بنانے کیلئے حکومت کی طرف سے ٹھوس اقدامات کا وعدہ کیا۔ اور کہاکہ بی بی ایم پی کیلئے پہلے ہی انہوں نے اپنے بجٹ میں چار ہزار کروڑ روپیوں سے زیادہ کی رقم مہیا کرائی ہے۔ انہیں یقین ہے کہ اس رقم سے شہر کی ترقی کیلئے آنے والے دنوں میں بی بی ایم پی اور بھی بہت سارے قدم اٹھائے گی۔شہر میں ٹریفک کے مسئلے سے نمٹنے کیلئے میٹرو کے کاموں کو غیر معمولی تیزی سے مکمل کرنے کا اعادہ کرتے ہوئے سدرامیا نے کہاکہ پہلے اور دوسرے مرحلے میں میٹرو پراجکٹوں کی تکمیل سے ایک اندازے کے مطابق شہر کی ٹریفک آدھی سے زیادہ گھٹ سکتی ہے۔وزیراعلیٰ کے ہمراہ میئر اور جارج کے علاوہ ریاستی وزراء دنیش گندو راؤ ، رام لنگا ریڈی اور دیگر اعلیٰ افسران کثیر تعداد میں شامل تھے

The short URL of the present article is: http://harpal.in/z9n4q

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے