Breaking News
Home / اہم ترین / ٹیپو سلطان جینتی کی آڑ میں بی جے پی فساد برپا کرنے کے درپے؛ حالات کو بگاڑنے کی کوششوں کے ساتھ سختی سے نمٹے گی سرکار۔ سدرامیا کا عہد

ٹیپو سلطان جینتی کی آڑ میں بی جے پی فساد برپا کرنے کے درپے؛ حالات کو بگاڑنے کی کوششوں کے ساتھ سختی سے نمٹے گی سرکار۔ سدرامیا کا عہد

بنگلورو(ہرپل نیوز،ایس او ایجنسی)25؍اکتوبر۔وزیر اعلیٰ سدرامیا نے کہاکہ ریاست میں فرقہ پرست بی جے پی ٹیپو سلطان شہید کے نام پر فرقہ وارانہ فسادات برپا کرنے کی سازش رچا رہی ہے۔ اسی مقصد کو سامنے رکھ کر بی جے پی 10؍ نومبر کو ہونے والی ٹیپو سلطان جینتی تقریبات کی مخالفت کررہی ہے، لیکن ریاست میں حالات کو بگاڑنے کی کسی بھی کوشش کو حکومت سختی سے کچلے گی۔سماج میں ہندو مسلم طبقات کے درمیان نفرت کو بھڑکانے اور امن وامان میں خلل پیدا کرنے کی کسی بھی کوشش کا منہ توڑ جواب دیاجائے گا۔ کسی کی پرواہ کئے بغیر حالات کو بگاڑنے والوں کے خلاف بلامروت کارروائی کی جائے گی۔آج اپنی ہوم آفس کرشنا میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہاکہ ریاستی اسمبلی کے انتخابات چونکہ بہت قریب ہیں حالات کو بگاڑ کر سیاسی فائدہ اٹھانے کی کوشش میں بی جے پی غیر ضروری طور پر انتشار کو ہوا دے رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جب اقتدار پر تھے تو بی جے پی لیڈروں نے ٹیپو سلطان کی تعریفوں کے پل باندھے اب جبکہ اپوزیشن میں ہیں توانہیں ٹیپو سلطان غدار نظر آرہے ہیں۔ ریاستی حکومت کی طرف سے ٹیپو سلطان جینتی تقریبات کا اہتمام ہر حال میں ہوکر رہے گا۔ انہوں نے کہاکہ ریاست کے ہی ایک علاقہ دیونہلی میں جنم لینے والے ٹیپو سلطان نے انگریز حکومت کے خلاف جنگیں لڑیں پھر وہ ملک کے غدار کیونکر ہوسکتے ہیں۔ میسور کے رکن پارلیمان پرتاب سمہا کے اس بیان پر کہ ٹیپو سلطان جینتی کا اہتمام کرنے والوں کو سولی پر چڑھادیا جائے، وزیر اعلیٰ نے کہاکہ جن لوگوں کو اس ملک کے آئین پر یقین نہیں وہی اس طرح کی باتیں کرتے ہیں۔ بحیثیت رکن پارلیمان پرتاب سمہا نے ملک کے آئین کے تحت ہی حلف لیا ہے شاید اسے انہوں نے فراموش کردیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ اقتدار پر رہتے ہوئے جگدیش شٹر، آر اشوک اور کے جے پی میں رہتے ہوئے یڈیورپا نے ٹیپو سلطان جینتی تقریبات میں حصہ لیا۔ پرتاب سمہا کو چاہئے کہ پہلے ان لوگوں کو پھانسی پڑ چڑھا دیں۔ وزیر اعلیٰ نے واضح طور پر کہاکہ جو مخالفت کرنی چاہے کرلیں ، ٹیپو سلطان جینتی کا اہتمام ہوکر ہی رہے گا۔کانگریس لیڈروں کے ٹھکانوں پر انکم ٹیکس کے چھاپوں کو ریاستی کانگریس قائدین کوخوفزدہ کرنے بی جے پی کی کوششوں سے تعبیر کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہاکہ بی جے پی کے کسی بھی لیڈر پر اب تک انکم ٹیکس کا کوئی چھاپہ نہیں پڑا، صرف کانگریس لیڈروں کو نشانہ بنایا جارہاہے۔ محکمۂ توانائی کیلئے کوئلے کی فراہمی کے مقصد سے ریاستی حکومت کی طرف سے کوئلے بلاکس کی خریداری میں مبینہ بے قاعدگیوں کے الزامات مسترد کرتے ہو ئے وزیر اعلیٰ نے کہاکہ کوئلہ کی خریدار ی میں اگر کوئی بے قاعدگی ہوئی ہے تو اس کی جانچ کرکے رپورٹ پیش کرنے ایوان کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جس وقت شوبھا کارند لاجے وزیر توانائی تھیں، اس وقت بیرون ریاستوں اور دیگر ذرائع سے بجلی کی خریداری میں مبینہ دھاندلیوں کی جانچ کیلئے بھی ایک ایوان کمیٹی بٹھائی گئی ہے۔ اس کمیٹی کی رپورٹ ملنے کے بعد حکومت کارروائی کے متعلق فیصلہ کرے گی۔ وزیر اعلیٰ نے واضح کیا کہ محکمۂ توانائی میں بجلی اور کوئلے کی خریداری کا فیصلہ وزیر کی طرف سے یکطرفہ طور پر نہیں کیا جاسکتا، اس کیلئے افسران کی الگ الگ کمیٹیاں موجود ہیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/gszaj

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے