Breaking News
Home / تازہ ترین / پارلیمان ہاؤز کے باہر ریاستی اراکین پارلیمان کا احتجاجی دھرنا ؛ کاویری معاملے میں وزیراعظم سے مداخلت پرزور

پارلیمان ہاؤز کے باہر ریاستی اراکین پارلیمان کا احتجاجی دھرنا ؛ کاویری معاملے میں وزیراعظم سے مداخلت پرزور

بنگلورو۔27/ستمبر(ہرپل نیوز) کاویری مسئلے پر کرناٹک کے ساتھ ہورہی مسلسل ناانصافی کو روکنے کیلئے وزیراعظم نریندر مودی سے مداخلت کی گذارش کرنے کیلئے آج پارلیمان ہاؤز کے گاندھی مجسمے کے روبرو کانگریس اراکین پارلیمان نے احتجاجی مظاہرہ کیا۔ اراکین پارلیمان مدو ہنومے گوڈا، ڈی کے سریش، پرکاش ہکیری، آسکر فرنانڈیز، بی کے ہری پرساد، دھروا نارائن، کے ایچ منی اپا، کے سی رام مورتی، پروفیسر راجو گوڈا اور سابق رکن پارلیمان ایچ وشواناتھ کے علاوہ دیگر لیڈران نے یہ مطالبہ کیا کہ وزیراعظم کاویری معاملے میں فوراً مداخلت کریں۔اس موقع پر مخاطب ہوکر کے ایچ منی اپا نے کہاکہ وزیر اعظم کو کاویری معاملے میں مداخلت کرتے ہوئے کرناٹک کو انصاف دلانا چاہئے۔ مہادائی معاملے میں بھی کرناٹک سے انصاف کی خاطر وزیراعظم کی مداخلت ناگزیر ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ماضی میں بھی بین ریاستی آبی تنازعات کو سلجھانے کیلئے وزرائے اعظم کی مداخلت کی بہت ساری مثالیں موجود ہیں، انہیں کی بنیاد پر مودی کو مداخلت کرنی چاہئے۔ کاویری طاس کے آبی ذخائرکبنی، کرشنا راجہ ساگر، ہارنگی اور ہیماوتی میں فی الوقت جو پانی ہے وہ پینے کیلئے بھی کافی نہیں ہے، ان حالات میں تملناڈوکو پانی فراہم کرنے سپریم کورٹ کے فیصلے پر عمل ممکن نہیں۔ ریاستی لیجسلیچر میں بھی یہ فیصلہ کیاگیا ہے کہ کاویری کا پانی صرف پینے کیلئے استعمال میں لایا جائے گا۔ان حالات میں تملناڈو کو پانی فراہم کرنا مشکل ہی نہیں ناممکن ہے۔ وزیراعظم اگر اس معاملے میں مداخلت کریں گے، تو کرناٹک کے عوام کے ساتھ انصاف ہوپائے گا۔ بی کے ہری پرساد، آسکر فرنانڈیز اور دیگر نے بھی وزیراعظم پر زور دیا کہ مشکل کی اس گھڑی میں کرناٹک کا ساتھ دیں۔ ان اراکین پارلیمان نے ملاقات کیلئے وزیراعظم سے وقت طلب کیا لیکن ان کو وقت نہیں دیا گیا۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/SqRJt

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے