Breaking News
Home / تازہ ترین / پندرہ سال سے زیادہ پرانی گاڑیوں پر پابندی کی تجویز

پندرہ سال سے زیادہ پرانی گاڑیوں پر پابندی کی تجویز

بنگلورو(,ہرپل نیوز،ایجنسی)12اگست:۔ نیشنل گرین ٹریبونل کے حکم کے مطابق پندرہ سال سے زیادہ پرانی گاڑیوں پر پابندی لگانے کیلئے بہت جلد ریاست میںبھی قانون لاگو کیاجائے گا۔ بنگلور میں فی الوقت جو 61 لاکھ گاڑیاں چل رہی ہیں ،ان میں سے5.5لاکھ گاڑیاں ایسی ہیں جو پندرہ سال سے زیادہ پرانی ہیں۔ان میں 2.58لاکھ ٹو وہیلرس ، 1.78لاکھ کاریں، 36173 آٹو رکشا اور 21371 مالبردار گاڑیاں شامل ہیں۔ ان کے علاوہ 1070تعلیمی اداروں کی بسیں ، 8100 ٹیکسیاں بھی پندرہ سال سے زیادہ پرانی ہیں۔ان گاڑیوں کے دوڑنے سے شہر میں فضائی آلودگی پھےلنےکی بات کہی گئی ہے۔ گرین ٹریبونل نے جس طرح دہلی میں پندرہ سال سے پرانی گاڑیوں پر پابندی لگائی۔انہی خطوط پر بنگلور میں بھی پابندی لگانے پر غور کیا جارہا ہے۔دہلی میں اروند کجرےوال حکومت کی طرف سے گرین ٹریبونل کی حکم عدولی کے نتیجہ میں جس طرح کی سرزنش کاسامنا کرنا پڑا وہی صورتحال کرناٹک میں پیش نہ آئے یہ یقینی بناتے ہوئے حکومت نے گرین ٹریبونل کے فیصلے کو لاگو کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔فی الوقت پندرہ سال سے زیادہ پرانی گاڑیوں کو از سرنو رجسٹریشن کیلئے گرین ٹیکس بھرنا پڑتا ہے، اور ساتھ ہی آلودگی پھیلانے پر روک لگانے کیلئے ان پر سخت شرائط لاگو کی جاتی ہیں۔تاہم گرین ٹریبونل کے فیصلے کے مطابق اگر پابندی لگادی گئی تو یہ نظام ختم ہوجائے گا۔

بسوں اور ریلوے اسٹیشنوں پر کم قیمت کا کھانا جلد: قادر

بنگلورو(,ہرپل نیوز،ایجنسی)12اگست:ریاستی وزیر برائے شہری رسد وخوراک یوٹی قادر نے کہاکہ تملناڈو کی اما کینٹین کی طرز پر ریاست میں بھی تمام بس اسٹیشنوں اور ریلوے اسٹیشنوں میں کم قیمت پر مسافروں کو کھانا مہیا کرانے کی اسکیم بہت جلد متعارف کرائی جائے گی۔میسور میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ بس اسٹیشنوں،ریلوے اسٹیشنوں اور مصروف عوامی مقامات پر کم قیمت پر کھانا فراہم کرنے کی تجویززیرغورہے۔ وزیر اعلیٰ سدرامیا کو اس تجویز سے با خبرکیا گیا ہے۔ سٹی کارپوریشن اورایک نجی ادارہ کے اشتراک سے اس منصوبے کو آگے بڑھایا جائے گا۔ پہلے مرحلے میں یہ پروگرام بنگلور کی سطح پر آزمایا جائے گا۔ مرحلہ وار اسے ریاست بھر میں وسعت دی جائے گی۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/bCS5n

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے