Breaking News
Home / اہم ترین / پی ایف ائی کارکنان پرپولیس کی لاٹھی چارج کا معاملہ۔ ملی اور سیاسی جماعتوں کی چو طرفہ مذمت، ریاست بھر میں احتجاج، 72 نوجوانوں کے رہائی کی خبر

پی ایف ائی کارکنان پرپولیس کی لاٹھی چارج کا معاملہ۔ ملی اور سیاسی جماعتوں کی چو طرفہ مذمت، ریاست بھر میں احتجاج، 72 نوجوانوں کے رہائی کی خبر

منگلورو(ہرپل نیوز)4 اپریل :منگلورو میں  پاپولر فرنٹ آف انڈیا نے سٹی پولیس کمشنر کے دفتر کے روبرو احتجاجی   دھرنا دینے کے دوران پی ایف ائی کے کارکنوں پر پولیس نے لاٹھی چارج کر کےسو سے زائد کارکنوں کو گرفتار کیا ہے۔  پولیس کی اس کارروائی میں کئی  نوجوان زخمی ہوئے ہیں ۔ مظاہرین  گزشتہ دنوں قتل کے  الزام میں گرفتار ایک نوجوان احمد قریشی پر پولیس کسٹڈی میں ڈھائے گئے ظلم کی جانچ کرکے انصاف دلانے اور احمد کو فوری طور پر رہا  کر نے کا مطالبہ کر ہے تھے ۔      اس بیچ پولیس ذرائع کی اگر مانیں تو مظاہرین نے  کمشنر  آفس کے گھیراؤ کی کوشش کی تو پولیس نے  لاٹھی چارج  کیا۔   بتایا گیاہے کہ اس واقعہ میں  دو۔ اے سی پی سمیت گیارہ پولیس اہلکاروں کو چوٹیں آئی ہیں ۔  واقعہ پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے  منگلور سٹی پولیس کمشنر  ایم چندرا شیکھر نے  مظاہرین کی جانب سے سرکاری عمارت پر پتھراؤ کرنے اور بعض پولیس اہلکاروں پر حملہ کی بات کرتے ہوئے  کمشنر نے  پولیس کی کارروائی کا بھر پور دفاع کیا ہے ۔  دوسری جانب احتجاجیوں پر پولیس کی جانب سے ہوئے لاٹھی چارج کو لیکر پی ایف ائی کارکنان میں سخت ناراضی پائی جا رہی ہے ۔ میڈیاسے بات چیت کرتے ہوئے  پی ایف ائی کے ایک لیڈر کا کہنا تھا  پولیس نے ہفتہ گزرنے کے بعد بھی احمد کو عدالت میں پیش نہیں کیا ہے۔   ذرائع کے حوالے سے خبر ملی ہے کہ پی ایف ائی آج کے واقعہ کے خلاف  کل ریاست کے مختلف مقامات پر   مظاہرے کر ے گی ۔  پی ایف ائی کا مطالبہ ہے کہ پولیس پی ایف ائی کے گرفتار شدہ نوجوان کو رہا کرکے احمد قریشی  پر پولیس کسٹدی میں ہوئے مظالم  کی ہائی لیول انکوائری کی جائے اور پولیس اہلکار احمد کو ہرجانہ ادا کر ے ۔

واقعہ پر ملی اور سیاسی جماعتوں کی سخت ناراضی:منگلورو میں کل پیش آئے واقعہ کی چوطرفہ مذمت کی جار ہی ہے ۔   ملی  اور سیاسی جماعتوں  میں جماعت اسلامی ہند منگلور ، ایس ڈی پی ائی  ، ویلفئر پارٹی آف انڈیا ،  سمیت دیگر جماعتوں نے واقعہ پر سخت بر ہمی کا اظہار کیا ہے  اور اعلی سطحی جانچ کا مطالبہ کیا ہے ۔  کسی بھی قسم کے خطرات سے قبل از وقت نمٹنے کے لئے  پی ایف ائی کے  کیڈران کو حراست میں لیا گیا تھا ۔ ڈبلیو پی ائی نے پولیس کی غنڈہ گردی پر  پولیس اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی مانگ کی ہے ۔ ادھر سنی اسٹو ڈنس فیڈریشن نے   اس کارروائی کو مسلمانوں کو خوف میں مبتلا کرنے کی کوشش قرار دے کر  سخت مذمت کی ہے ۔ ۔منگلورو سے تعلق رکھنے والے   کا بینی وزیر یوٹی قادر نے  پولیس کے اعلی حکام سے مل کر واقعہ کی رپورٹ  طلب کی ہے  اور کہاہے کہ واقعہ میں خاطی پولیس والوں کے خلاف کارروائی ہو گی ۔   پی ایف آئی کارکنوں پر پولس لاٹھی چارج کو لے کر آل انڈیا امام کونسل دکشن کنڑا ضلعی جنرل سکریٹری حارث انیس نے پولس کے اقدام کی سخت مذمت  کرتے ہوئے    احتجاجیوں پر لاٹھیاں برسانے کا  کا حکم دینے والےپولس کمشنرکاتبادلہ  کرنے  اور تمام  گرفتار شدہ پی ایف آئی کارکنوں کو فوری رہا  کرنے کا  مطالبہ کیا ہے ۔  اس بیچ عوام یہ سوالات اٹھا رہے ہیں کہ ایسے ماحول میں  ریاست  میں کانگریس کی حکومت کا  نہیں بلکہ کسی اور پارٹی کی حکومت کا شائبہ گزرتا ہے ۔ ۔ خیال رہے کہ کل منگلورو میں سٹی پولس کمشنر کے دفترکا گھیراؤ کرنے کی کوشش کرنے  کا الزام لگا کر پر پاپولر فرنٹ آف انڈیا (پی ایف آئی) کے کارکنوں پر زبردست لاٹھی چارج کرکے   سو سے زائد کارکنوں کو حراست میں لیا گیا تھا ۔

مسلم کانگریسی لیڈران کی پریس میٹ :ادھر دوسری جانب اس واقعہ سے ناراض منگلور میں مسلم کانگریسی لیڈران اور کارکنان نے مذمتی جلسہ منعقد کرکے پولس محکمہ کو پندرہ دنوں کی مہلت دیتے ہوئے پولس کے ظلم کے شکار ہونے والے احمد قریشی کو معاوضہ دینے ، اور متعلقہ پولیس اہلکاروں کو معطل کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔ ساتھ ہی احمد قریشی کے تمام طبی اخراجات کو سرکار ہی ادا کرنے کی پرزور مانگ کی ہے ۔مذمتی جلسہ میں کانگریس لیڈران ، کارپوریٹس، تعلقہ پنچایت ، گرام پنچایت ممبران سمیت سیکڑوں کانگریسی کارکنان سے کانگریس لیڈر اور سابق میئر اشرف نے ان خیالات کا اظہار کیا ۔مقررین نے کہا کہ موجودہ سی سی بی ٹیم سے کسی طرح کے انصاف کی امید نہیں کی جاسکتی ، اسی لئے اس ٹیم کو فوری طورپر برخاست کرکے نئی ٹیم تشکیل دی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ان کی مانگیں پوری نہیں کی گئیں تو مزید احتجاج کیا جائے گا۔

واقعہ پر پی ایف ائی بھٹکل کا رد عمل : منگلورو  میں کل پی ایف ائی کے ساتھ پیش آئے واقعہ کی ملی اور سیاسی جماعتوں کی جانب سے چو طرفہ شدید مذمت کے بعد  آج بھٹکل  میں پی ایف  ائی نے اپنا رد عمل ظاہر کرتے ہوئے اسے پولیس کی جانب سے ظلم قر ار دے کر انصاف کا  مطالبہ کیا ہے ۔ پی ایف ائی کے سابق صدر امجد نے میڈیا سے بات چیت میں  اس ظلم کے خلاف قانو نی  لڑائی لڑنے  کی بات کہی ہے ۔

ریاست بھر میں احتجاج: واقعہ سے ناراض پی ایف ائی کارکنان نے ریاست کے مختلف مقامات پر آج احتجاج کرتے  ہوئے ضلعی حکام کو میمورنڈم سونپ کر  انصاف دلانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ جن مقامات پر احتجاج ہوا ہے ان میں منگلورو ، بی سی روڈ ، پتور، بنگلورو ، اڈپی  رام نگر ، گدگ ، ہاسن  کولار، ہبلی ،دھارواڑ، بیجاپور،  چتر درگہ ، گلبرگہ شامل ہے ۔

گرفتار شدگان میں سے کئی لوگوں کی  رہائی : ریاست کے مختلف مقامات پر ہوئے احتجاج کے بعد منگلورو پولیس نے 72  نوجوانوں کو رہا کیا ہے اور 26  کو عدالتی تحویل میں  بھیج کر مقدمہ درج کیا  گیا ہے ۔

 کل ملا کر اس واقعہ پر احتجاج شدت اختیار کر رہا ہے ، جہاں لوگ پولیس کے کردار پر شک کا اظہار کر رہے ہیں وہیں خاطی پولیس اہلکاروں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی  بھی مانگ کر رہے ہیں ۔ دیکھنا یہ  ہے کہ  اب یہ معاملہ کہا ں تک پہنچے گا۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/tBhWH

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے