Breaking News
Home / تازہ ترین / چنتامنی میں رسوئی گیس ری فلنگ کےدھندے پر لگام لگانےمیں پولیس پر ناکامی کاالزام

چنتامنی میں رسوئی گیس ری فلنگ کےدھندے پر لگام لگانےمیں پولیس پر ناکامی کاالزام

چنتامنی:(ہرپل نیوز۔ ایجنسی )4 /فروری :گذشتہ چند دنوں قبل شہر کے مضافات میں واقع نائن ہلی گیٹ کے قریب ایچ ۔پی۔گیس ایجنسی کے گودام میں پیش آئے سلنڈر دھماکوں کے حادثے کے بعد تعلقہ بھر میں رسوئی گیس کی غیر قانونی ری فلنگ کے دھندا پر قابو پانے کیلئے چکبالاپور ضلع سپر ٹنڈنٹ آف پولیس چائترا ڈی وائی ایس پی کرشنامورتی کی زیر نگرانی میں خصوصی ٹیم تشکیل دی گئی ہے ، ٹیم نے پچھلے 16جنوری 2017کو شہر کے کولار مین روڈ ٹی۔وی۔ایس۔شوروم کے بازو میں رسوئی گیس ری فلنگ کا دھندا کررہے ایک دکان  پر چھاپہ مار کر ایچ۔پی۔اور بھارت کمپنی کے گیارہ سلنڈروں کو ضبط کرکے ایک شخص کو گرفتار کرلیا تھا، جبکہ وہاں سے مزید  ایک شخص پولیس کو چکمہ دے کر فرار ہوگیا تھا اس سلسلہ میں بتایا گیا ہے کہ  ٹاون پولیس تھانہ کے سب انسپکٹر نرسمہا مورتی نے معاملہ درج کرتے ہوئے شہر کے اکثر محلوں میں ری فلنگ دھندا چلنے کی اطلاع پاکر چھان بین کی، مگر پولیس کو کوئی سراغ نہیں ملا۔
مقامی لوگوں کی مانیں تو  چنتامنی کے اکثر محلوں میں رسوئی گیس ری فلنگ کا دھندا عروج پر ہے لیکن محکمہ پولیس کو اطلاع ہونے کے باجود پولیس خاموش تماشائی بنی بیٹھی ہے ،تجارتی مرکز میں کئی چار پہیوں کی گاڑیاں رسوئی گیس سے ہی چلتی ہے لیکن چنتامنی تعلقہ بھر میں کہیں بھی چار پہیوں کے گاڑیوں کو گیس بھرتی کرنے کے لئے (بنک)بھی نہیں ہے لیکن چار پہیوں کی گاڑیوں کو رسوئی گیس کہاں سے مل رہا ہے ؟لوگوں نے بتایا کہ شہر کے ٹیپونگر محبوب نگرنکندی پیٹ وٖغیرہ محلوں میں چند افراد رسوئی گیس سلنڈر عوام سے 800تا900روپیوں میں خرید کر گھر وں میں چار پہیوں کے گاڑیوں وغیرہ میں  گیس بھرتی کررہے ہیں۔ شہر میں کئی لوگ جن کے پاس  دو سلنڈر ہے وہ لوگ ری فلنگ دھندا کرنے والوں کو سلنڈر فروخت کررہے ہیں اس کے متعلق  گیس ایجنسی کے مالک وغیرہ کو معلوم ہونے کے باجود وہ بھی کچھ کارروائی نہیں کررہے ہیں ۔شہر کے چند احباب نے یہ بھی بتایا کہ محکمہ پولیس کو معلوم ہے کہ شہر چنتامنی میں کہاں کہاں رسوئی گیس ری فلنگ کا دھندا چل رہا ہے لیکن پولیس والے بھی خاموش تماشائی بنے بیٹھے ہیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/DelUS

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے