Breaking News
Home / اہم ترین / کشمیر کے تعلق سے پاکستان کا رول ’ پاک ‘ نہیں

کشمیر کے تعلق سے پاکستان کا رول ’ پاک ‘ نہیں

مداخلت کے خلاف انتباہ ، کشمیری عوام کے ساتھ جذباتی تعلق کی خواہش، پلیٹ گیس کے استعمال کا جائزہ:راجناتھ سنگھ

(سرینگر/ہرپل نیوز/ایجنسی )25 جولائی  کشمیر میں مختلف سیاسی جماعتوں بشمول بی جے پی کی حلیف پی ڈی پی نے علحدگی پسندوں اور پاکستان کے ساتھ بات چیت کی حمایت کی ہے لیکن مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے علحدگی پسندوں سے بات چیت کا امکان مسترد کردیا ۔ ساتھ ہی پاکستان سے کہا کہ وہ کشمیر پر اپنا ذہن تبدیل کرے ۔ تشدد سے متاثرہ وادی کے دو روزہ دورہ کے بعد سرینگر میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے راجناتھ سنگھ نے کہا کہ سکیورٹی فورسیس کو ہجوم پر جہاں تک ممکن ہوسکے پلیٹ گنس استعمال نہ کرنے کی ہدایت دی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس غیرمہلک ہتھیار کے استعمال کے بارے میں قائم کردہ کمیٹی کی رپورٹ کا انتظار ہے ۔ مرکز نے کشمیر کے عوام تک پہونچنے کی پہل کرتے ہوئے ان کے ساتھ ’’جذباتی‘‘ وابستگی کی خواہش ظاہر کی ۔ راجناتھ سنگھ نے کہا کہ ہم کشمیر کے عوام کے ساتھ ضرورت پر مبنی تعلقات کے نہیں بلکہ جذباتی تعلق کے خواہاں ہیں ۔ انہوں نے وادی میں امن اور عام حالات کی بحالی کیلئے جن سے بھی ضرورت ہو بات چیت کی رضامندی ظاہر کی ۔ راجناتھ سنگھ نے اپنے قیام کے دوران تقریباً 30 وفود سے ملاقات کی ۔ انہوں نے پاکستان کو سخت پیام دیتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ وہ ہندوستان کے داخلی معاملات میں مداخلت نہ کرے ۔ اسے کشمیر کے تعلق سے اپنا رویہ اور طرز عمل تبدیل کرنا چاہئیے ۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر کی صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے کسی تیسری طاقت کی ضرورت نہیں ۔ پاکستان کا رول کشمیر کے بارے میں ’’پاک‘‘ نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ  جہاں تک حکومت ہند کا تعلق ہے وہ اپنا یہ موقف واضح کرنا چاہتے ہیں کہ کشمیر کے ساتھ جذباتی تعلق استوار کیا جائے ۔ انہوں نے وادی میں عوام تک پہونچنے کی کوشش کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں امن اور عام حالات کی بحالی میں مدد کریں ۔ راجناتھ سنگھ نے کہا کہ جو کوئی ریاست میں امن اور عام حالات بحال کرنے کا خواہاں ہے ہم اس سے بات کریں گے ۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا علحدگی پسندوں سے کسی طرح کی بات چیت کی جائے گی ۔ راجناتھ سنگھ نے کہا کہ پہلے امن بحال ہونے دیجئے ۔ ہم یہاں چیف منسٹر سے بات کریں گے اور انہیں اعتماد میں لینے کے بعد ہی بات چیت کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پلیٹ گنس کے استعمال کا جائزہ لے گی اور پہلے ہی اس تعلق سے کمیٹی قائم کی گئی ہے جو دو ماہ میں اپنی رپورٹ پیش کردے گی

The short URL of the present article is: http://harpal.in/CcmxM

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے