Breaking News
Home / اہم ترین / کلکرنی اور جارج کے استعفیٰ کے مطالبہ کے ساتھ بنگلورومیں بی جے کا احتجاج وزیراعلیٰ پر قاتلوں کا دفاع کرنے کالگایاالزام

کلکرنی اور جارج کے استعفیٰ کے مطالبہ کے ساتھ بنگلورومیں بی جے کا احتجاج وزیراعلیٰ پر قاتلوں کا دفاع کرنے کالگایاالزام

بنگلورو(ہرپل نیوز،ایجنسی)30نومبر۔ دھارواڑ ضلع پنچایت کے رکن یوگیش گوڈا کے قتل کے سلسلہ میں ریاستی وزیر ونئے کلکرنی اور ڈی وائی ایس پی گنپتی کی پر اسرار موت کے سلسلہ میں ریاستی وزیر برائے بنگلور ترقیات کے جے جارج کو ریاستی کابینہ سے فوری ہٹانے بی جے پی نے وزیراعلیٰ سدارامیا سے مطالبہ کیا ہے۔ بنگلورو کے آنند راؤ سرکل پر گاندھی مجسمہ کے روبرو بنگلور سٹی بی جے پی کمیٹی کے زیراہتمام بی جے پی لیڈروں نے مذکورہ وزراء کو فوری کا بینہ سے ہٹانے کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاجی مظاہرہ کیا ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سابق وزیر اعلیٰ و اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر جگدیش شٹرنے کہا کہ و ہ وزراء کے استعفیٰ کامطالبہ کرتے ہوئے ریاستی بی جے پی نے اسمبلی اجلاس میں بھی احتجاج کیا تھا ۔ لیکن ریاستی حکومت اس معاملہ کو سنجیدہ ہی نہیں لے رہی ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ وزیر اعلیٰ کے موقف سے شبہ ہورہا ہے کہ ان دونوں معاملات میں وزیر اعلیٰ بھی شریک ہیں ۔

وزیراعلیٰ پرتنقید: ریاست میں بی جے پی کی جانب سے نکالی گئی پریورتن یاترا پر وزیر اعلیٰ سدارامیا کے رد عمل پر وزیر اعلیٰ پر حملہ کرتے ہوئے۔جگدیش شٹر نے کہا کہ پریور تن یاترا کی کامیابی سے سدارامیا لڑ کھڑا گئے ہیں ۔ اس لئے اس طرح کے بیانات دے رہے ہیں ۔ عوام کے روبروجب وہ جائیں گے تو پتہ چلے گا کہ پریورتن یا ترا کا کتنااثر ہوا ہے۔ یاترا کس طرح نکالی جاتی ہے وزیر اعلیٰ کو کیا معلوم؟ پارٹی کی یاترا نکالنی چاہئے یا حکومت کی سدارامیا ابھی اس الجھن میں ہیں۔ پچھلے ساڑھے چار سالوں کے دوران حکومت کچھ کیا ہی نہیں تو وہ ڈر رہے ہیں کہ عوام کا سامنا کیسے کیا جائے ۔ جگدیش شٹر نے کہا کہ عوام کی روبرو جانے سے سدارامیاکترا رہے ہیں۔

عوام نے تائید کی ہے:  سابق نائب وزیراعلیٰ آر اشوک نے دعویٰ کیا کہ گنپتی ہو یا آئی اے ایس افسر ڈی کے روی کا معاملہ ان تمام معاملات میں عوام نے تائید کی ہے ۔ ان معاملات میں عوام نے بی جے پی کی بھر پورتائید کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سدارامیا بی جے پی کی پریورتن یاترا سے پریشان ہوکر خود بھی ریاست کے دورے شروع کردےئے ہیں۔اس احتجاجی مظاہرہ کے دوران بات کرتے ہوئے رکن اسمبلی منی راجو نے کہا کہ ریاستی وزراء ونئے کلکرنی اور کے جے جارج پر شدید حملہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس معاملہ میں وزیراعلیٰ غیر ذمہ دار ی سے کام لے رہے ہیں۔قتل کے ان معاملات میں وزیراعلیٰ قاتلوں کا دفاع کررہے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ریاستی حکومت کے پاس حیا ء شرم کی کوئی چیز ہی نہیں۔ منی راجو نے وزیر کلرنی کو ایک غنڈہ اور نااہل قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایسے وزراء کو کابینہ میں بر قرار رکھنا وزیراعلیٰ کو زیب نہیں دیتا۔اس احتجاجی مظاہرہ میں شرکت کرنے والے اہم لیڈروں میں سابق وزیر رامچندرے گوڈا ،رکن پارلیمان پی سی موہن ، بی جے پی لیڈر عبدالعظیم ، بی بی ایم پی میں اپوزیشن بی جے پی لیڈر پد نابھا ریڈی اور دیگر شامل ہیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/CvFnu

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے