Breaking News
Home / اہم ترین / کمار سوامی دوبارہ ریاستی جے ڈی ایس صدر منتخب

کمار سوامی دوبارہ ریاستی جے ڈی ایس صدر منتخب

بنگلورو(ہرپل نیوز)10/دسمبر: سابق وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی آج دوبارہ اتفاق رائے سے ریاستی جنتادل (ایس) کے صدر منتخب ہوگئے۔آج بنگلور پیالیس میں منعقدہ جنتادل (ایس) کی قومی مجلس عاملہ میٹنگ میں کمار سوامی کو ریاستی صدر کے طور پر چنا گیا۔ اس موقع پر پارٹی نے دیگر ریاستوں بشمول مہاراشٹرا، کیرلا، آندھرا پردیش اور اترپردیش کی یونٹوں کیلئے بھی پارٹی صدور کا انتخاب عمل میں لایا۔ پارٹی کے قومی صدر کے طور پر سابق وزیراعظم ایچ ڈی دیوے گوڈا کا انتخاب کیاگیا۔ آنے والے اسمبلی انتخابات کیلئے پارٹی کو مستعد کرنے اور تنظیمی سطح پر پارٹی کو اور بھی مضبوط کرنے کیلئے میٹنگ میں تفصیلی تبادلہئ خیال کیاگیا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ایچ ڈی کمار سوامی نے کہاکہ موجودہ سیاسی حالات کے پیش نظر ریاست میں جنتادل (ایس) کی اگلی حکومت کا قیام ضروری ہوچکا ہے۔ ریاست کے مفادات کی حفاظت کرنے میں برسر اقتدار کانگریس اور اپوزیشن بی جے پی کو بری طرح ناکام قرار دیتے ہوئے کمار سوامی نے کہاکہ ریاست میں کرپشن سر چڑھ کر بول رہاہے۔ پانچ سال تک ریاست میں لوٹ مچاکر بے دخل ہونے والی بی جے پی دوبارہ ریاست میں اقتدار پر آنے کے خواب دیکھ رہی ہے۔ ان دونوں پارٹیوں کو اقتدار سے دور رکھنا عوام کی ذمہ داری ہے۔پچھلے تین سال سے ریاست کے بیشتر علاقے خشک سالی سے بدحال ہیں۔ کسان مشکلات میں پڑگئے ہیں، لیکن کانگریس اور بی جے پی کو اپنی سیاسی لڑائی سے آگے کچھ دکھائی نہیں دے رہا ہے۔قومی سیاسی جماعتوں کو ریاست کے مفادات میں ناکام قرار دیتے ہوئے کہاکہ جنتادل جیسی ایک علاقائی قوت ہی ریاستی عوام کے مفادات کی کھل کر حفاظت کرسکتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جنتادل (ایس) کی بنیادیں ریاست کے کونے کونے میں پھیلی ہوئی ہیں بشرطیکہ کارکنوں کو کام کرنے کابھرپور موقع فراہم کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ ضلعی سطح پر پارٹی کی شاخوں کو آنے والے دنوں میں مضبوط کیاجائے گا۔ پارٹی کے کارکن اور عہدیدار جدوجہد کے جذبے سے آگے بڑھیں۔ عوام تک رسائی حاصل کرکے دونوں قومی جماعتوں کی ناکامی سے آگاہی دینے کے ساتھ اگلے انتخابات کیلئے جنتادل (ایس) کے منصوبوں سے بھی عوام کو آگاہ کرائیں۔ کمارسوامی نے کہاکہ ریاست میں اگر اگلے انتخابات کے بعد جنتادل (ایس) برسر اقتدار آتی ہے تو کسانوں کی طرف سے لئے گئے تمام قرضہ جات معاف کردئے جائیں گے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/e9NkT

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے