Breaking News
Home / اہم ترین / گاندھی کے قتل میں ایک تنظیم کے طور پر کبھی آر ایس ایس پر الزام نہیں لگایا:راہل گاندھی

گاندھی کے قتل میں ایک تنظیم کے طور پر کبھی آر ایس ایس پر الزام نہیں لگایا:راہل گاندھی

نئی دہلی، 24؍اگست؍(ہرپل نیوز/آئی این ایس انڈیا)کانگریس نائب صدر راہل گاندھی نے آج سپریم کورٹ سے کہا ہے کہ انہوں نے آر ایس ایس پر کبھی ایسی تنظیم کے طورپرالزام نہیں لگایا ہے جس نے مہاتما گاندھی کو قتل کیا بلکہ کہا ہے کہ اس سے وابستہ ایک شخص ان کے قتل کے لیے ذمہ دارہے۔جسٹس دیپک مشرا اور آر ایس نریمن کی بنچ نے کہا کہ اگر شکایت کنندہ راضی ہو جائے تو وہ درخواست کاتصفیہ کر دیں گے۔بنچ راہل کی اس درخواست کی سماعت کر رہی ہے جس میں ہتک عزت کے ایک معاملہ میں ایک ملزم کے طور پر ان کے نام سمن جاری کرنے کو چیلنج دیا گیا ہے۔بنچ نے توجہ مبذول کرائی کہ کانگریسی لیڈرنے ممبئی ہائی کورٹ میں ایک حلف نامہ دائرکر کے اپنے خلاف دائر ہتک عزتی کے معاملہ کو خارج کرنے کو کہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے گاندھی کے قتل کے لیے ایک تنظیم کے طور پر آر ایس ایس پر الزام نہیں لگایا بلکہ اس سے متعلق ایک شخص پر الزام لگایا تھا ۔بنچ نے اس معاملے کی سماعت یکم ستمبر تک کے لیے ملتوی کر دی۔بنچ نے شکایت کنندہ کے وکیل یوآرللت سے کہا کہ وہ شکایت کنندہ سے ہدایت لیں کہ اگر راہل کے بیان کو ریکارڈ پر لیا جائے تو کیا وہ اپنی شکایت واپس لینے کوتیار ہیں۔کانگریس نائب صدر کی جانب سے پیش ہوئے سینئر وکیل کپل سبل نے ہائی کورٹ میں دائر حلف نامے کی جانب بنچ کی توجہ مبذول کرائی ۔تقریبا آدھے گھنٹے تک معاملہ کی سماعت کرنے والی بنچ نے کہاکہ ہم نے یہ سمجھا ہے کہ ملزم نے آرایس ایس کو اس تنظیم کے طور پرملزم نہیں بنایا ہے جس نے مہاتما گاندھی کا قتل کیا تھی بلکہ اس سے متعلق ایک شخص پرالزام لگایا تھا۔عدالت عظمیٰ نے27؍جولائی کو مہاراشٹر کی نچلی عدالت کی راہل گاندھی کے خلاف دائر مجرمانہ ہتک عزت کی شکایت کے معاملے کی جانچ پولیس سے کروانے کی ہدایت دینے کے لیے تنقید کی۔یہ شکایت اس تبصرہ کو لے کر کی گئی تھی جس میں انہوں نے مہاتما گاندھی کے قتل کے لیے مبینہ طور پر آر ایس ایس پر الزام لگایا گیا تھا ۔اسی بنچ نے یہ بھی تبصرہ کیا تھا کہ کانگریس لیڈر کو کسی تنظیم(آر ایس ایس)کی مذمت نہیں کرنی چاہیے اور اگر انہوں نے افسوس کا اظہار نہیں کیا تو ان کو مقدمے کاسامناکرنا پڑے گا۔آر ایس ایس کی بھیونڈی اکائی کے سکریٹری راجیش مہادیو کنٹے نے اپنی شکایت میں الزام لگایا ہے کہ راہل نے 6 ؍مارچ 2015میں سونالے کی ایک انتخابی ریلی میں کہا تھاکہ آر ایس ایس کے لوگوں نے گاندھی جی کی جان لی تھی ۔یہ معاملہ تھانے ضلع کے بھیونڈی میں مجسٹریٹ عدالت کے سامنے زیر غور ہے۔اس سے قبل بنچ نے سوال اٹھایاتھااورتعجب کا اظہار کیا تھا کہ انہوں نے غلط تاریخی حقائق کو پیش کرتے ہوئے یہ تقریر کیوں کی تھی ؟۔کنٹے نے الزام لگایاہے کہ کانگریس لیڈر نے اپنی تقریر کے ذریعے آر ایس ایس کی شبیہ کو خراب کرنے کی کوشش کی ہے ۔اس شکایت کے بعدمجسٹریٹ کی عدالت نے کارروائی کرتے ہوئے گاندھی کو نوٹس جاری کیا تھا اور اس کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت دی۔کانگریس لیڈر کو اس سال 6 ؍جنوری کو عدالت میں پیش ہونے کے لیے کہا گیا تھا۔راہل نے اس کے بعد ہائی کورٹ کادروازہ کھٹکھٹاتے ہوئے معاملے کو مسترد کرنے اور انہیں پیش ہونے سے چھوٹ دینے کی درخواست کی تھی ۔ہائی کورٹ نے عرضی کو مسترد کر دیا اور اپنے فیصلہ پر روک لگانے سے انکار کر دیا۔اس کے بعد معاملے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیاگیا ۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/589zH

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے