Breaking News
Home / اہم ترین / گلبرگہ میں گلشن شجرکاری مہم اختتام پذیر۔ طلبہ کے لئے تقسیم انعامات کا پروگرام ۔ ماحولیاتی تحفظ پر مقررین نے دیا زور 
تصویر میں ذاکر حسین کو طلبا میں انعامات تقسیم کرتے ہوئے دیکھا جساسکتا ہے ساتھ ہی ۔ رکن جماعت اسلامی ہند ضیا اللہ اور ممتاز آرٹسٹ ایاز الدین پٹیل بھی دیکھے جاسکتے ہیں۔

گلبرگہ میں گلشن شجرکاری مہم اختتام پذیر۔ طلبہ کے لئے تقسیم انعامات کا پروگرام ۔ ماحولیاتی تحفظ پر مقررین نے دیا زور 

گلبرگہ (ہرپل نیوز، شاکر حکیم ) 21نومبر۔شہر گلبرگہ کو حقیقی معنی میں گل و برگ کا شہر بنانے کے لئے ضروری ہے کہ ہم یہاں زیادہ سے زیادہ درخت لگائیں اور اپنے ماحول کو آلودہ ہونے سے بچائیں۔ ان خیالات کا اظہار ہدایت سنٹر ،گلبرگہ میں جماعت اسلامی ہند گلبرگہ کی جانب سے گلشن شجرکاری مہم کے اختتامی پروگرام میں صدارتی خطاب کرتے ہوئے ذاکر حسین،امیر مقامی جماعت اسلامی ہند گلبرگہ نے کیا۔

انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ اس کائنات کا نظام ہی کچھ اس طرح بنایا ہے کہ قدرتی طور پر اس کا تحفظ ہوتا رہتا ہے۔اس نظام کے مطابق اگر انسان اپنی زندگی گزارتا ہے تو ماحولیات کا تحفظ ممکن ہے۔ مہمان خصوصی چنا بسّپّامدھول ، بلاک ایجوکیشن آفسر گلبرگہ نارتھ نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ بچوں میں عمل کے ذریعہ شعور بیدار کرنے کا یہ طریقہ کہ انہیں ہی شجرکاری میں حصہ دار بنایا جائے بہت ہی کار گر ہے۔ انہوں نے اس مہم کے ذریعہ کی گئی کوششوں کو سراہا اور کہا کہ سرکاری سطح پر کرنے کے کاموں کو جماعت اسلامی ہند نے اپنے ذمہ لیا ہے۔ آلودہ ماحول کی وجہ سے بچے دمہ کا شکار ہورہے ہیں۔وقت آگیا ہے کہ اگلی نسل کے لئے ماحول کو بہتر بنانے کی کوشش کریں۔ محمد ضیاء اللہ، ناظم ضلع جماعت اسلامی ہند گلبرگہ نے اپنے خطاب میں ملکی و عالمی سطح پر ہورہی ماحولیاتی بحران پر تفصیل سے گفتگو کرتے ہوئے بتایاکہ اس وقت انسان کی اپنی ضروریات کی خاطر قدرتی وسائل جیسے پیٹرل، گیس اور کوئلہ کے استعمال کی وجہ سے ماحولیاتی حرارت میں اضافہ ہورہا ہے، جس کے نتیجہ میں قطبی برف بڑے پیمانے میں پگل رہی ہے۔ جو سمندری سطح کو اؤنچا کرے گی نتیجہ یہ ہوگا کہ کتنے ہی جزیرے اور ساحلی علاقے زیر آب ہوجائیں گے۔ اسی طرح انھوں نے اوزونozone کی پرت میں دراڑیں پڑنا، ہوا، پانی وزمین کا آلودہ ہونا جیسے سنگین مسائل پر روشنی ڈالی۔ زمین پر ماحولیات کے تحفظ کے لئے کوشاں تنظیموں کا بھی ذ کر کیا۔ ان حالات میں شجرکاری کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے کہا کہ پیڑہوں گے تو پاکیزہ ہوا ملے گی،وہ آکسیجن فراہم کرینگے، ماحولیاتی بحران پر قابو پایا جائیگا، پانی کو بچائے رکھنے، زمین کو کھسکنے سے بچایا جائے گا اور جنگلات کی وجہ سے جنگلی جانور وں کا تحفظ ممکن ہوگا۔ معروف آرٹسٹ محمد ایاز ا لدین پٹیل اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ یہ پہلا موقع ہے کہ کسی مسلم تنظیم کی جانب سے اس طرح کا پروگرام منعقد کیا گیا ہے۔انھوں نے کہا کہ بچوں کے اندر کی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے کا یہ ایک اور بہترین طریقہملا ہے۔ اس سے پہلے پروگرام کا آغاز حافظ سجاد احمد امام مسجد ہدایت سنٹر کی تلاوت قرآن مجید اور ارود ترجمانی سے ہوا۔جناب ذولفقار علی نے اس کا انگریز ی ترجمہ پیش کیا۔ اپنے افتتاحی کلمات میں خالد پرواز نے گلشن کا تعارف کراتے ہوئے کہا کہ بچوں میں علم وحکمت ، اخلاقی قدروں کو پروان چڑھانے، ان میں چھپی صلاحیتوں کو پہچاننے، اور ان میں کمال پیدا کرنے جیسے مقاصد کے تحت’ گلشن‘‘کے نام پر بچوں کے حلقہ جماعت اسلامی ہند کی جانب سے پروگرام پوری ریاست بھر میں چلائے جارہے ہیں۔ ان کی دلچسپی کو باقی رکھنے اور انسانیت کو درپیش مسائل سے آگاہی کے لئے ریاست کرناٹک میں بچوں کے ذریعہ شجرکاری کی مہم چلائی جارہی ہے۔ شہر گلبرگہ میں یہ مہم 13 تا19 ؍نومبر 2017 ء چلائی گئی۔ اس ضمن میں مختلف اسکولوں میں ماحولیات کے تحفظ میں شجرکاری کی اہمیت پر شعور بیداری پروگرام، شجرکاری ، شجرکاری پر ڈرائنگ مقابلے،ان بچوں سے بنائے گئے ڈارئنگ کی نمائش کا اہتمام کیا گیا ۔ اس موقع پر شہر کے جن گیارہ اسکولی طلبہ نے ڈرائینگ مقابلوں میں حصہ لیا تھا ان میں اسکولی سطح پر اول، دوم و سوم انعام حاصل کرنے والوں کے ساتھ شہری سطح پر اول دوم و سوم انعام حاصل کرنے والوں کو انعامات دئے گئے اور تمام حصہ لینے والے طلباء کو سند سے نوازا گیا۔ سٹی اکیڈمی اسکول کے سید عارف حسین، جماعت پنجم نے اول انعا م حاصل کیا جبکہ انڈین اسلامک اسکول کی ساتویں جماعت کی طالبہ عفیفہ سہراز نے دوم اور گلشن اطفال کی پانچویں جماعت کی حفصہ بتول نے تیسرا انعام حاصل کیا ۔ محمد مظہر الدین نے نظامت کرتے ہوئے کلمات تشکر بھی پیش کئے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/Obzq7

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے