Breaking News
Home / اہم ترین / ہندوؤں کو چار چار بچے پیدا کرنا چاہئے۔ دھرم سنسد میں سوامی کا مشورہ

ہندوؤں کو چار چار بچے پیدا کرنا چاہئے۔ دھرم سنسد میں سوامی کا مشورہ

اڈپی (ہرپل نیوز) 26نومبر۔ بجرنک دل اور سنگھ پریوار کے پروگراموں میں سادھو سنتوں کی شرکت اور متنازعہ بیانات کا چولی دامن کا ساتھ ہے ۔ ۔ تازہ خبر دکشن کنڑا کے ضلع کے اڈپی سے موصول ہو ئی ہے جہاں سینئر ہندو سوامی نے ہندوؤں کو شورہ دیا کہ یکساں سول کوڈ کے نفاذ سے پہلے پہلے ہندوؤں کا ہر جوڑا چار چار بچے پیدا کرے۔ سوامی گوونددیوگریجی مہاراج نے کہاکہ صرف ہندوؤں کے لئے ہی دو بچوں کی پالیسی محدود نہیں ہونی چاہئے۔ ساحلی کرناٹک کے مندروں کے شہر اڈپی میں وی ایچ پی کے زیراہتمام منعقدہ تین روزہ دھرم سنسد کے دوسرے دن نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے سوامی نے کہاکہ حکومت زیادہ سے زیادہ دو بچے پیدا کرنے پر زور دے رہی ہے لیکن ملک میں یکساں سول کوڈ نافذ کئے جانے تک ہندو جوڑوں کو بھی کم از کم چار بچے پیدا کرنے چاہئے۔ اس تقریب میں بعض سوامیوں نے گئو رکشکھوں کے نام کے غلط استعمال پر بھی تشویش کا اظہار کیا ۔ اس اہم تقریب میں ملک بھر سے دوہزار سے زائد سوامیوں ، سمیہت مٹھوں کے سربراہان اور وی ایچ پی کے لیڈرز موجود تھے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/zY09J

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے