Breaking News
Home / اہم ترین / یوگی آدتیہ ناتھ بنے اترپردیش کے 21 ویں وزیر اعلی، دو نائب وزیر اعلی اور 46 وزراء نے بھی حلف اٹھا لیا۔ پانچ خواتین کو بھی کابینہ میں ملی جگہ۔ ایک مسلم بھی کابینہ میں شامل ۔ اسٹیج پر ایک ساتھ نظر آئے مودی ،اکھلیش اور ملائم

یوگی آدتیہ ناتھ بنے اترپردیش کے 21 ویں وزیر اعلی، دو نائب وزیر اعلی اور 46 وزراء نے بھی حلف اٹھا لیا۔ پانچ خواتین کو بھی کابینہ میں ملی جگہ۔ ایک مسلم بھی کابینہ میں شامل ۔ اسٹیج پر ایک ساتھ نظر آئے مودی ،اکھلیش اور ملائم

لکھنؤہرپل نیوز،ایجنسی)19مارچ: : گورکھپور سے رکن پارلیمان یوگی آدتیہ ناتھ نے آج یہاں اتر پردیش کے 21 ویں وزیر اعلی کی حیثیت سے حلف لیا۔ ان کے ساتھ دو نائب وزرائے اعلی کیشو پرساد موریہ اور ڈاکٹر دنیش شرما نے بھی حلف لیا۔ مسٹر موریہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ریاستی صدر اور پھول پور سے ممبر پارلیمنٹ ہیں جبکہ مسٹر شرما لکھنؤ کے میئر ہیں۔یوگی کابینہ میں 25 کابینہ، نو وزرائے مملکت (آزادانہ چارج) اور 13 وزرائے مملکت کو شامل کیا گیا ہے۔ حلف لینے والے کابینہ وزراء میں سوریہ پرتاپ شاہی، سریش کھنہ، سوامی پرساد موریہ، ستیش مهانا، راجیش اگروال، ریتا بہوگنا جوشی، دارا سنگھ چوہان، دھرم پال سنگھ، ایس پی سنگھ بگھیل، ستيہ دیو پچوری، رماپتی شاستری، جے پرتاپ سنگھ، اوم پرکاش راج بھر، برجیش پاٹھک ، لکشمی نارائن چودھری، چیتن چوہان، شريكانت شرما، راجندر پرتاپ سنگھ، سدھارتھ ناتھ سنگھ، مکٹ بہاری ورما، آشوتوش ٹنڈن عرف گوپال جي اور نند کمار نندي شامل ہیں۔

یوگی آدتیہ ناتھ بنے اترپردیش کے 21 ویں وزیر اعلی، دو نائب وزیر اعلی اور 46 وزراء نے بھی حلف اٹھا لیا

اسٹیج پر امت شاہ، ملائم سنگھ یادو، لال کرشن اڈوانی، اکھلیش یادو، شیو راج سنگھ چوہان، نتن گڈکری، اوما بھارتی، روی شنکر پرساد سمیت کئی بڑے لیڈر ان موجود تھے ۔ اس کے ساتھ ہی اکھلیش اور ملائم سنگھ یادو سے اسٹیج پر امت شاہ گرم جوشی سے ملے۔ یہی نہیں جب تقریب ختم ہوئی ، تو بھی ملائم سنگھ یادو اور اکھلیش یادو وزیر اعظم مودی سے ملے اور ہاتھ ہلا کر عوام کا شکریہ ادا کیا۔

وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی پہلے کابینہ میں اس وجہ سے ملی پانچ خواتین کو جگہ

 یوپی میں بی جے پی کو واضح اکثریت ملنے کے بعد لکھنؤ کے کانشی رام اسمرتی اپون میں اتوار کو یوپی کے 21 ویں وزیر اعلی کے طور پر مہنت یوگی آدتیہ ناتھ نے 48 وزرا کے ساتھ حلف لیا۔ ان میں 5 خواتین کو بھی جگہ ملی ہے۔ان میں ریتا بہوگنا جوشی، سواتی سنگھ، انوپما جیسوال، گلاب دیوی اور ارچنا پانڈے شامل ہیں۔ جانتے ہیں کہ یوگی کے پہلی کابینہ میں آخر ان خواتین رہنماؤں کو کیوں ملی جگہ؟

وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی پہلے کابینہ میں اس وجہ سے ملی پانچ خواتین کو جگہ

ریتا بہوگنا جوشی:کانگریس کا دامن چھوڑ کر بھارتیہ جنتا پارٹی میں آئیں ریتا بہوگنا جوشی نے ملائم سنگھ کی چھوٹی بہو ارپنا یادو کو دارالحکومت کی لکھنؤ کینٹ سیٹ سے شکست دی۔ یہی وجہ ہے کہ ریتا بہوگنا جوشی کو یوگی آدتیہ ناتھ کی کابینہ میں کابینہ وزیر کے طور پر جگہ ملی ہے۔

سواتی سنگھ:بی جے پی لیڈر اور سواتی سنگھ کے شوہر دياشنكر سنگھ کے مایاوتی پر متنازع تبصرہ کے بعد پہلی مرتبہ وہ میڈیا کے سامنے آنے والی سواتی نے بی ایس پی سپریمو مایاوتی سمیت بی ایس پی کے رہنماؤں اور کارکنوں کے بیانات کا جواب دیا، اس کے بعد وہ راتوں رات سرخیوں میں آ گئیں۔ بی جے پی نے انہیں لکھنؤ کے سروجنی نگر اسمبلی سیٹ سے میدان میں اتارا تھا۔ یہاں سواتی سنگھ نے ملائم سنگھ کے بھتیجے انوراگ یادو کو شکست دی۔

انوپما جیسوال:بہرائچ صدر سیٹ سے بی جے پی لیڈر انوپما جیسوال نے جیت درج کی۔ بتا دیں کہ گزشتہ 25 سالوں سے اس سیٹ پر ایس پی کا قبضہ تھا۔ لیکن انوپما کی قیادت میں یہاں بھگوا پرچم لہرایاگیا۔ یہ علاقہ مسلم اکثریتی علاقوں میں شمار کیا جاتا ہے۔ اس سیٹ پر سابق وزیر ڈاکٹر وقار احمد شاہ کی بیوی رباب سعیدہ کو شکست دے کر انوپما جیسوال نے جیت درج کی۔

گلاب دیوی:سنبھل کے چندوسي سیٹ سے گلاب دیوی کو میدان میں اتارا تھا۔ وہ پارٹی کے دلت چہرے کے طور پر بھی جانی جاتی ہیں۔ اس مرتبہ الیکشن میں گلاب دیوی نے ایس پی کانگریس اتحاد کی امیدوار وملیش کماری کو شکست دی۔ گلاب کی یہ جیت سنبھل کی سب سے بڑی جیت تھی۔

ارچنا پانڈےارچنا پانڈے سابق وزیر رام پركاش ترپاٹھی کی بیٹی ہیں۔ ارچنا چھبرامو سے پہلی مرتبہ رکن اسمبلی بنی ہیں۔ برہمن چہرہ ہونے کی وجہ سے انہیں یوگی کابینہ میں وزیر مملکت بنایا گیا ہے۔

 یوگی کابینہ میں ایک مسلمان کو بھی ملی جگہ

اتر پردیش میں بی جے پی کو واضح اکثریت ملنے کے بعد یوگی آدتیہ ناتھ نے وزیر اعلی کے عہدے کا حلف لے لیا ہے۔ یوگی آدتیہ ناتھ کے 44 ارکان پر مشتمل کابینہ میں محسن رضا کا نام سب کی توجہ کا مرکز بناہوا ہے۔ آدتیہ ناتھ کی کابینہ میں محسن کو وزیر مملکت بنایا گیا ہے۔ تاہم یوگی کابینہ میں وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کے بیٹے پنکج سنگھ کا نام نہیں ہے ، جو ہر کسی کو حیران کررہا ہے ۔ پنکج سنگھ کو نوئیڈا اسمبلی کا ٹکٹ ملنے کے بعد سے ہی بحث چل رہی تھی کہ اگر بی جے پی اقتدار میں آئے گی تو وہ وزیر کے عہدہ کے مضبوط دعویدار ہوں گے، لیکن ایسا نہیں ہوا۔خیال رہے کہ 403 اسمبلی والے اترپردیش انتخابات میں بی جے پی نے کسی بھی مسلمان کو ٹکٹ نہیں دیا تھا، جس کے سبب انہیں مخالفین کے حملے بھی برداشت پڑے تھے ۔ بی جے پی اور اس کے اتحادی جماعتوں کے ٹکٹ پر جیت کر آئے 325 ممبران اسمبلی میں کوئی بھی مسلمان نہیں ہے۔ اس کے بعد بھی یوگی آدتیہ ناتھ کی کابینہ میں محسن رضا کو شامل کیا گیا ہے۔

اترپردیش : یوگی کابینہ میں ایک مسلمان کو بھی ملی جگہ ، جانیں کون ہیں محسن رضا ؟

قابل ذکر ہے کہ اسمبلی انتخابات سے عین قبل بی جے پی میں شامل ہوئے محسن رضا سابق کرکٹر ہیں۔ بی جے پی نے انہیں ترجمان بنایا تھا، جس کی وجہ سے وہ اکثر ٹی وی چینلوں پر بی جے پی کا موقف رکھتے ہوئے دیکھے جاتے رہے ہیں۔محسن رضا پہلی مرتبہ اس وقت موضوع بحث بنے تھے جب انہوں نے 2013 میں بی جے پی کی حمایت میں پوسٹر لگایا تھا۔ 40 سالہ محسن رضا نے گورنمنٹ جوبلی انٹر کالج سے تعلیم حاصل کی ،اس کے بعد انہوں نے لکھنؤ یونیورسٹی سے اعلی تعلیم حاصل کی ۔ وزیر کے عہدے سنبھالنے کے بعد محسن رضا کو چھ ماہ کے اندر اسمبلی یا قانون ساز کونسل کی رکنیت حاصل کرنی ہوگی۔

حلف برداری تقریب میں گرم جوشی سے اسٹیج پر ملے مودی ، ملائم اور اکھلیش

 اترپردیش کے نئے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی حلف برداری کی تقریب میں سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے سرپرست ملائم سنگھ یادو اور سبکدوش وزیر اعلی اکھلیش یادو نے مسٹر یوگی کو اسٹیج پر ہی مبارک باد دی۔ یوگی آدتیہ ناتھ نے دونوں کی مبارک بادیاں قبول کرتے ہوئے ملائم سنگھ یادو احترام سے اسٹیج پر بٹھایا۔ تھوڑی دیر بعد مسٹر ملائم سنگھ یادو کو وزیر اعظم نریندر مودی سے کان میں کچھ باتیں کرتے دیکھا گیا۔ حلف برداری کی تقریب میں ملائم سنگھ یادو اور اکھلیش خوش مزاج لگ رہے تھے۔ بیچ بیچ میں مسٹر ملائم سنگھ یادو بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے لال کرشن اڈوانی اور نتن گڈکری سے بھی بات کرتے دیکھے گئے۔حلف برداری کی تقریب کے بعد اپنی جگہ سے اٹھ کر ایس پی سرپرست ملائم سنگھ یادو اور ان کے بیٹے اکھلیش نے ایک بار پھر مسٹر یوگی کو مبارکباد دی۔ باپ بیٹے نے بعد میں مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان اور کابینہ وزیر سوامی پرساد موریہ کے ساتھ ہاتھ اٹھا کر لوگوں کو سلام کیا اور بعد میں وزیر اعظم مودی اور بی جے پی کے صدر امت شاہ سے بھی کچھ دیر تک بات چیت کی۔ تقریب میں کانگریس اور بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کا کوئی لیڈر نہیں دیکھا گیا۔ تقریب میں اس پر طرح طرح کی باتیں بھی ہوتی رہیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/86XFj

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے