Breaking News
Home / اہم ترین / 27شہروں کے ترقیاتی کاموں کیلئے 2070کروڑ منظور:وینکیا نائیڈو کا اعلان

27شہروں کے ترقیاتی کاموں کیلئے 2070کروڑ منظور:وینکیا نائیڈو کا اعلان

بنگلورو۔(ہرپل نیوز، ایجنسی)5فروری :مرکزی وزیر برائے شہری ترقیات وینکیا نائیڈو نے کہا کہ اٹل اربن رینیوبل اینڈ مینٹینینس( امروت) اسکیم کے تحت ریاست کے 27شہروں کی ترقی کیلئے 2017سے 2020ء (تین سال کی میعاد) کے لئے مرکزی حکومت نے 2070کروڑ روپئے منظور کئے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ 2015-16کے دوران جاری مذکورہ اسکیم کے تحت ریاست کے 27شہروں کیلئے مرکزی حکومت نے 4791کروڑ روپئے جاری کرنے کا اعلان کیا تھا ۔ جس کے تحت سال2015-16کے دوران 1259کروڑ اور سال 2016-17کے دوران 1642کروڑ روپئے جاری کئے گئے تھے ۔ بقیہ 2070کروڑ روپئے 2017سے 2020ء تک جاری کرنے کیلئے منظوری دے دی گئی ہے ۔ اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے وینکیا نائیڈو نے مزید بتایا کہ 2017ء سے 2020تک کیلئے منظورشدہ 2070ء کروڑ میں پینے کے پانی کے لئے 822کروڑ ڈرینج کیلئے 1061کروڑ ، نالو ں کی مرمت اور تعمیراتی کام کیلئے 119کروڑ ، سٹی ٹرانسپورٹیشن کیلئے 21کروڑ اورپارک اور ماحولیات کے تحفظ کیلئے 47کروڑ روپئے مختص کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ اسمارٹ سٹی کی فہرست میں کرناٹک کے بلگاوی اور داونگیرے شہروں کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ ان شہروں کی ترقی کیلئے 388کروڑ روپئے جاری کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ کرناٹک میں ریلوے پراجیکٹوں کی تکمیل کیلئے بھی مرکزی حکومت نے کرناٹک کو افزود فنڈ جاری کی ہے ۔ سال 2009ء تا2014ء جہاں جملہ 835کروڑ روپئے جاری کئے گئے تھے وہیں نریندر مودی کی مرکزی حکومت نے اب تک 2196کروڑ روپئے کا فنڈ جاری کیا ہے ۔مرکزی وزیر برائے مالیات ارون جیٹلی کے پیش کردہ مرکزی بجٹ پر اپنا رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ بجٹ کی ہر جگہ تعریف ہورہی ہے ۔ کسی بھی میڈیا نے بجٹ پر نکتہ چینی نہیں کی ہے ۔ کسان ،مزدور، خواتین ، نوجوان اور درمیانی طبقہ کے افراد کے مفادات کو مد نظر رکھ کر بجٹ پیش کیا گیا ہے ۔ وینکیا نائیڈو نے کہا کہ غیر ملکی سرمایہ کاری میں 5فیصد کا اضافہ ہوا ہے ۔2016-17کے دوران جملہ 1.45لاکھ کروڑ روپیوں کی غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی ہے ۔ نوٹ بندی کی وجہ سے اب حالات کافی سدھر چکے ہیں اورملک کی معاشی حالت میں کافی سدھار بھی آچکا ہے ۔ نائیڈو نے کہا کہ شہر میں سب اربن ریلوے کی سہولت شروع کرنے کیلئے حکومت کو سب سے پہلے اراضی معاملات کے تنازعات کو سلجھانا پڑے گا اور اراضی کو قبضہ میں کیا گیا تو مرکزی حکومت اپنی طرف سے فنڈ جاری کرنے کیلئے تیار ہے ۔انہوں نے کہا کہ مرکز نے ریاست کے ریلوے پراجکٹوں کی تکمیل کیلئے فنڈ جاری کرنے کے معاملے میں کسی بھی طرح کا سوتیلا پن کارویہ نہیں اپنایا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ بنگلور شہر کو سب اربن ریل کا خواب شرمندہ تعبیر ہورہا ہے ۔ شہر میں گزشتہ ماہ سب اربن ریل کی سہولت شروع کی گئی ہے ۔ صرف تین ریل گاڑیوں کو ہی دوڑایا جارہا ہے ۔اس سرویس کی توسیع کرنے کیلئے مزید رقم کی ضرورت ہے ۔ اس ضرورت کو پورا کرنے مرکز اپنے وعدہ پر پابند ہے ۔ لیکن ریاستی حکومت کو سب سے پہلے سب اربن ریل کی توسیع کے لئے درکار زمینات کو اپنے قبضہ میں لینے کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ کرناٹک حکومت نے ابھی تک کئی زمینات کو اپنے قبضہ میں لینے میں ناکام رہی ہے ۔ اس کیلئے ابھی تک کوئی پراجیکٹ تیار نہیں کی ہے ۔ وزیر اعلیٰ کو چاہئے کہ وہ سب سے پہلے زمینات کو قبضہ میں لے کر سب اربن ریل پراجکٹ کو تیا ر کرکے مرکز کو تجویز روانہ کریں جس کے بعد مرکز مذکورہ پراجکٹ کے لئے فوری فنڈ جاری کرنے کیلئے تیار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملہ میں مرکزی حکو مت سے کسی بھی طرح کی غلط فہمی رکھنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ مرکز تمام ریاستوں کے ساتھ یکساں رویہ اپناتی ہے ۔وینکیا نائیڈو نے سابق وزیراعلیٰ ایس ایم کرشنا کے بی جے پی میں شمولیت کی خبر پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے بتایا کہ وہ اس سلسلے میں کچھ نہیں کہہ سکتے اور انہیں اس کے متعلق کوئی جانکاری نہیں ہے ۔ بی جے پی کے ریاستی صدر ایڈی یورپا نے وعدہ کیا ہے کہ ایس ایم کرشنا بی جے پی میں شامل ہوسکتے ہیں ۔ ایڈی یورپا کے بیان کو بھی مسترد نہیں کیا جاسکتا ۔ کرشنا کی شمولیت کے امکانات کو دیکھ کر ہی شاید ایڈی یورپا نے یہ بیان دیا ہوگا۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/Oc0Z9

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے