Breaking News
Home / اہم ترین / 30مارچ سے ایس ایس ایل سی امتحانات کا آغاز۔ سابقہ برسوں کے مقابلے میں اس سال الگ رہے گا امتحان کا سسٹم ۔ محکمہ تعلیمات عامہ کے ڈپٹی ڈائریکٹر کی جانب سے دی گئیں ہیں ضروری ہدایات

30مارچ سے ایس ایس ایل سی امتحانات کا آغاز۔ سابقہ برسوں کے مقابلے میں اس سال الگ رہے گا امتحان کا سسٹم ۔ محکمہ تعلیمات عامہ کے ڈپٹی ڈائریکٹر کی جانب سے دی گئیں ہیں ضروری ہدایات

شیموگہ:(ہرپل نیوز، ایجنسی) 21مارچ۔ محکمہ تعلیمی عامہ کی جانب سال2017میں ہونے والے ایس ایس ایل سی امتحانات کا آغاز 30مارچ؍ تا12؍ اپریل تک منعقد کیا گیا ہے۔اس دفعہ چونکہ امتحانات میں چند مخصوص طرح کا ردوبدل کیا جارہا ہے۔ جس کے متعلق محکمہ تعلیمی عامہ کی جانب سے طلباء کوچند ضروری ہدایات سے روبرو کرایا جارہا ہے۔ تبدیل شدہ نظم ونسق کے ماتحت امسال سوالیہ اور جوابی پرچوں کو انفرادی طور پر دیا جارہا ہے۔  نظام الاوقات کےتحت صبح9:30؍ امتحان کا آغاز ہوگا ۔ طالب علم کو9.15؍ سے قبل امتحانی کمروں میں داخلی کیلئے ایک لانگ بیل دی جائیگی۔ بعدازاں کمرہ کے نگران کار افسر طلباء میں سب سے پہلے جوابی پرچوں کی بک لیٹ کو تقسیم کریں گے۔ بعد ازاں ٹھیک 9:25؍ کے دوران دوسری لانگ بیل کی آگاہی پر سوالیہ پرچے کی بک لیٹ تقسیم کی جائیگی۔ واضح رہے کہ امتحانی اوقات 9:30 کے بعد امتحانی مراکزمیں تاخیرسے داخل ہونیوالے طالب علموں کو امتحانی سرگرمی شامل ہونے کا ہر گز بھی موقع نہیں دیا جائے گا۔اورتمام ایام میں بھی ہر دن طالب علموں کو صبح 9:15تا9:30؍ کے منظم اوقات سے قبل از مراکز میں حاضر ہونے پر سخت تاکید دی جارہی ہے۔ سخت بندوبست کے چلتے دوران امتحان طلباء کو 30؍ منٹ کیلئے بھی کمرے سے باہر جانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ طلباء کو سوالات کی جانچ اورانکو سمجھنے کیلئے 15؍ منٹ کا وقت درکار رہے گا۔مزیدسوالیہ پرچوں میں جہاں اپنے پسندیدہ سوالوں کے جواب دینا کا موقع دیا جائے تو طالب علموں کو ایک دفعہ اس کا جواب دینے کی اجازت ہوگی اگر ایک سے زائد دفعہ وہی جواب تحریر کیا جاتا ہے توپرچوں کی جانچ کے دوران پہلی بار تحریر کئے گئے  جواب کو اعداد وشما رمیں شامل کیا جائے گا۔طلباء کو اس بات کا بھی خاص خیال رکھنا ہوگا کہ جو سوال وہ لکھنا چاہتے ہیں اسکافہرست نمبر دئے گئے حاشیہ کے ایک جانب صاف اور واضح الفاظ میں تحریر کریں ۔اگر سوال نمبر کے ساتھ کسی طرح کی کاٹ چھانٹ کی گئی یا مشق کیا گیا تو اس جواب کو بھی جانچ کے دوران شامل نہیں کیا جائے گا۔ لہٰذا طلباء اس بات کا خاص خیال رکھیں کے جو بھی سوال کا جواب دیں اسکا سیریل نمبر واضح اور صاف الفاظ میں تحریر کریں ۔ جوابات کیلئے نیلے رنگ؍کالے رنگ کے بال پن کا ہی استعمال کریں ، اگر کسی وجہ سے اپنے استعمال کرنے والے پن کو تبدیل کرنے کی نوبت آجائے تو اس وقت نگران کار افسران سے دستخط کروانا نہ بھولیں ، دستخط کے بعد ہی بے فکر ہوکر دوسرے رنگ کا بال پن استعمال کریں ۔ اسکے علاوہ پنسل کی مدد سے تحریر کئے گئے جوابات کو بھی قبول نہیں کیا جائے گا۔ صرف (نقشہ، تصاویر، جغرافیہ نقشہ) وغیرہ کیلئے ہی پنسل استعمال کرنے کی اجازت دی جائے گی۔ یہ تمام ضروری ہدایات محکمہ تعلیمات عامہ کے ڈپٹی ڈائریکٹر کی جانب سے دی گئی ہے

The short URL of the present article is: http://harpal.in/Avhwk

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے