Home / اہم ترین / آر ایس ایس روٹ مارچ: اجازت نہ ملنے پرعرضی دائر

آر ایس ایس روٹ مارچ: اجازت نہ ملنے پرعرضی دائر

چینئی :(ہرپل نیوز؍ایجنسی)29؍ستمبر: راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) نے مدراس ہائی کورٹ کا رخ کیا ہے اور ریاستی حکومت کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی شروع کی ہے۔ تمل ناڈو حکومت نے آر ایس ایس کو 2 اکتوبر کو روٹ مارچ کرنے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے۔

اس سے قبل ہائی کورٹ نے حکام کو ہدایت کی تھی کہ وہ 28 ستمبر سے پہلے اس کی اجازت دیں۔ سینئر وکیل پربھاکرن نے آج جلد سماعت کی درخواست کی۔ جسٹس جی کے الانتھیریا نے کہا کہ اگر درخواست کو نمبر دیا گیا ہے تو اس کی سماعت کل ہوگی۔

ایڈوکیٹ ربو منوہر اس سے قبل سیکرٹری، ہوم ڈپارٹمنٹ، ڈی جی پی، سپرنٹنڈنٹ آف پولیس (تھروولور) اور انسپکٹر آف پولیس (تھروولور) کو توہین کے نوٹس جاری کر چکے ہیں۔ توہین عدالت کے نوٹس میں کہا گیا ہے کہ عدالت نے 22 ستمبر کو توثیق کی ہدایات جاری کرنے کے باوجود فریقین نے ہائیکورٹ کے حکم کے خلاف جا کر اجازت نہیں دی۔

یہ بھی کہا گیا کہ روٹ مارچ پارٹی کا آئینی حق ہے اور مدعا علیہان اس سے انکار نہیں کر سکتے اور نہ ہی عدالتی حکم کو نظر انداز کرتے ہوئے کوئی نئی شرائط عائد کر سکتے ہیں۔ اس طرح اس نے 27 ستمبر کو روٹ مارچ کی اجازت دینے سے انکار کر دیا اور انسپکٹر آف پولیس کی طرف سے جاری کردہ حکم کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ ریاستی حکومت نے 22 ستمبر کو دیے گئے حکم پر نظرثانی کے لیے مدراس ہائی کورٹ سے بھی رجوع کیا ہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/7aMr3

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.