Home / اہم ترین / اجئے مشرا کے استعفیٰ تک جدوجہد جار ی رہے گی :پرینکا گاندھی
Varanasi: Congress General Secretary Priyanka Gandhi Vadra during Kisan Nyay Rally ahead of UP Assembly Election 2022 in Varanasi on Sunday October 10, 2021.(PHOTO:IANS/Siddharaj Vlog)

اجئے مشرا کے استعفیٰ تک جدوجہد جار ی رہے گی :پرینکا گاندھی

وارانسی: (ہرپل نیوز؍ایجنسی)11؍اکتوبر: کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا نے کہا کہ بی جے پی حکومت میں پارٹی کے قائدین، وزیر اور ان کے چند کھرب پتی دوستوں کے علاوہ کوئی بھی محفوظ نہیں ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی کے پارلیمانی حلقہ وارانسی میں کسان نیائے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے پرینکا واڈرا نے آج کہا کہ ملک میں بے روزگاری عروج پر ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت نجکاری کے نام پر ریلوے، ہوائی جہاز، ائیر پورٹ، پی ایس یو سمیت سرکاری اور نیم سرکاری ادارے اپنے کھرب پتی دوستوں کو فروخت کر رہی ہے۔ گزشتہ دنوں وزیر اعظم نریندر مودی نے 16ہزار رکوڑ روپئے خرچ کر کے اپنے لئے دو ہوائی جہاز خریدے جبکہ ائیر انڈیا کو محض 18ہزار کروڑ میں اپنے دوست کو فروخت کر دیا۔ ملک میں کسی بھی مذہب اورذات کا شخص محفوظ نہیں ہے۔ مزدور، ملاح، غریب، دلت، اقلیتیں اور خواتین محفوظ نہیں ہیں یہ ملک تباہ ہو رہا ہے۔ جو کسانوں کو دہشت گرد کہتے ہیں ان کو انصاف دینے کے لئے مجبور کیجئے۔ ہمیں جیل میں ڈالئے، مار یئے مگر ہم اپنی جگہ ڈٹے رہیں گے۔ جب تک لکھیم پور کھیری معاملے میں مملکتی وزیر استعفیٰ نہیں دے دیتے ہیں ہماری جدوجہد جاری رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ اترپردیش کی یوگی حکومت سے کسی کو انصاف کی امید نہیں ہے۔ سونبھدر میں 13 قبائلیوں کا قتل عام کا معاملہ ہو۔ ہاتھرس کا واقعہ ہو یا پھر لکھیم پور کھیری کا معاملہ ہو۔ یوگی حکومت نے متاثرہ فریق کی سننے کے بجائے پولیس اور دبنگوں کا ساتھ دیا ہے۔پرینکا واڈرا نے کہا کہ لکھیم پور کھری میں مرکزی مملکتی وزیر کے بیٹے نے چھ کسانوں کو کچل دیا۔ پولیس اس پر کاروائی کرنے کے بجائے اسے دعوت نامہ دے رہی ہیکہ آئیے ہم سے بات کیجیے۔ خود چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ بچاؤ کر رہے ہیں۔ اس ملک کو کسانوں نے سینچا ہے۔ کسان کے بیٹے سرحدوں پر ہمارا تحفظ کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ متاثرہ خاندانوں سے ملاقات کرچکی ہیں۔ وہ سبھی انصاف کی امید چھوڑ چکے ہیں۔

مارے گئے ایک کسان کا بیٹا بی ایس ایف میں ہے۔ دوسرے کسان کے تمام بھائی بہن آرمی میں ہیں۔ میڈیا نمائندے رمن کشیپ کے اہل خانہ نے بتایا کہ اسے جیپ سے اس لئے کچلا گیا کیونکہ وہ واقعہ کا ویڈیو بنا رہا تھا۔کانگریس جنرل سکریٹری نے کہا کہ اگر انصاف دلانے میں وزیر اعلی، وزیر اعظم، ایم ایل اے، ایم پی، وزیر سبھی پیٹھ موڑ لیں تو عوام کس کے پاس مدد کے لئے جائیں گے۔ گزشتہ نو دس مہینے سے کسان دہلی کی سرحد پر تحریک چلا رہے ہیں۔

اس دوران 600 سے زیادہ کسان شہید ہوچکے ہیں۔ وہ حکومت کے تین زرعی قوانین کی مخالفت کر رہے ہیں۔کانگریس لیڈر نے کہا کہ مملکتی وزیر کہتے ہیں کہ کسانوں کو دو منٹ میں سبق سکھا دونگا۔ دنیا کے کونے کونے تک گھومنے والے وزیر اعظم اپنے گھر میں محض دس کلومیٹر کی دوری پر کسانوں سے بات کرنے دہلی سرحد تک نہیں جاسکتے۔

خود کو گنگا کا بیٹا کہنے والے وزیر اعظم نے ملک کے کروڑوں گنگا ماں کے کسان بیٹوں کو ذلیل کیا ہے۔ کسان تمام قسم کے مسائل سے نبردآزما ہے۔ پرینکا واڈرا نے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس کے ساتھ کھڑے ہوکر تبدیلی لائیں۔ اپنے ملک کو بدلئے۔ میں اس وقت تک نہیں رکوں گی جب تک ریاست میں تبدیلی نہیں آجاتی۔ اس سے پہلے پرینکا واڈرا نے کاشی وشوناتھ اور ماں درگا مندر کے درشن کئے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/uvldx

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.