Home / اہم ترین / اذان کے لیے پاکستان جائیں، ہندوستان میں ہنومان چالیسا ہوگی۔ نتیش کمارکی پارٹی کے لیڈر کامتنازعہ بیان،وزیراعلیٰ خاموش

اذان کے لیے پاکستان جائیں، ہندوستان میں ہنومان چالیسا ہوگی۔ نتیش کمارکی پارٹی کے لیڈر کامتنازعہ بیان،وزیراعلیٰ خاموش

پٹنہ:(ہرپل نیوز؍ایجنسی)11؍مئی: نتیش کمارکی جنتا دل یونائیٹڈ (جے ڈی یو) کی ایک لیڈر کے ایک بیان نے اچانک بہار کا سیاسی درجہ حرارت بڑھا دیا ہے۔ ایم پی کویتا سنگھ کے شوہر اجے سنگھ نے کہا ہے کہ اذان کے لیے پاکستان جائیں۔ ان کا یہ بیان ایسے وقت میں آیا ہے جب پورے ملک میں لاؤڈ اسپیکر اور اذان پر بحث جاری ہے۔اس سے سمجھ میں یہ آتاہے کہ نتیش کمارصرف بی جے پی لیڈروں کے ہاتھوں مجبورنہیں ہیں بلکہ ان کابس اپنے لیڈروں پربھی نہیں چلتا،ورنہ اپنے لیڈروں کووہ قابومیں رکھتے۔ بی جے پی لیڈر ہری بھوشن ٹھاکر بچول نے بھی اجے سنگھ کے بیان کی حمایت کی ہے۔

لاؤڈ اسپیکر پر ہنومان چالیسا اور اذان کے تنازع میں جے ڈی یو لیڈر کے اس متنازعہ بیان کی وجہ سے سیاسی گلیاروں میں بھونچال آگیا ہے۔ ایک پروگرام کے دوران جے ڈی یو لیڈر اجے سنگھ نے اذان پر کہاہے کہ پاکستان میں اذان ہوتی ہے۔ اذان پاکستان میں ہونی چاہیے۔ یہاں ہنومان چالیسا ہوگی۔ انہوں نے کہاہے کہ پاکستان میں اذان ہو رہی ہے، جب کہ ہندوستان صدیوں سے ہنومان کا ملک ہے، اور یہاں ہنومان چالیسا ہو گی۔

اجے سنگھ کے بیان پر جے ڈی یو لیڈر نیرج کمار نے کہاہے کہ ہندوستان میں ہر کسی کو مذہبی آزادی ہے اور اس کے اظہار کا اپنا طریقہ ہے۔ جے ڈی یو لیڈر نے بھلے ہی ایسا بیان دیا ہو، لیکن ہندوستان آئین کی پیروی کرتا ہے۔ اسی دوران بی جے پی ایم ایل اے ہری بھوشن بچول نے کہاہے کہ اذان میں اللہ کے قادر ہونے کی بات کی جاتی ہے جبکہ ہنومان چالیسا انسانی فلاح کی بات کرتی ہے۔ اگر ہم چوکنا نہ ہوئے تو ہندوستان کا کلچر مٹ جائے گا۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/Qd3Vi

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.