Home / ریاستی خبریں / اندھرا ؍تلنگانہ / آندھرا پردیش کے چیف منسٹر نے پی ایم مودی سے ملاقات کی، کئی مسائل پر گفتگو

آندھرا پردیش کے چیف منسٹر نے پی ایم مودی سے ملاقات کی، کئی مسائل پر گفتگو

نئی دہلی:(ہرپل نیوز؍ایجنسی) 18؍مارچ:آندھرا پردیش کے وزیر اعلیٰ وائی ایس جگن موہن ریڈی نے جمعہ (17 مارچ) کو دہلی میں وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کی۔اس میٹنگ کے دوران چیف منسٹر جگن موہن ریڈی نے آندھرا پردیش کی ترقی کے لیے پی ایم مودی سے تعاون بھی طلب کیا۔سی ایم نے پی ایم مودی سے آندھرا پردیش کو خصوصی درجہ دینے کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے وزیر اعظم سے درخواست کی کہ ریاست کی تقسیم کے نو سالوں کے بعد بھی زیر التوا متعدد مسائل پر کام کو تیز کریں۔ اس کے علاوہ انہوں نے وزیر اعظم سے مرکز سے زیر التواء فنڈز اور پڑوسی ریاست تلنگانہ کے ساتھ بقایا رقم کے لین دین میں مداخلت کرنے کی اپیل کی۔

وزیر اعظم مودی کو بھیجے گئے میمورنڈم میں، سی ایم جگن موہن ریڈی نے آندھرا پردیش اور تلنگانہ کے درمیان زیر التواء کئی دو طرفہ مسائل پر ان کی توجہ کی درخواست کی۔انہوں نے پی ایم مودی کو یاد دلایا کہ مرکزی مالیاتی سکریٹری کی سربراہی میں ایک کمیٹی، جو آندھرا پردیش ری پارٹیشن ایکٹ میں مذکور مسائل پر تشکیل دی گئی تھی، پہلے ہی کئی دور کی بات چیت کرچکی ہے، لیکن کچھ مسائل حل نہیں ہوئے ہیں۔

چیف منسٹر ریڈی نے وزیراعظم سے درخواست کی کہ وہ پولاورم پراجکٹ کو تیز کرنے کے لئے ایڈہاک طریقے سے 10,000 کروڑ روپئے منظور کریں۔ انہوں نے پی ایم مودی کو بتایا کہ مالی سال 2014-15 کے ریسورس گیپ فنڈنگ کے تحت 36,625 کروڑ روپے زیر التوا ہیں۔سی ایم ریڈی نے اس رقم کو فوری جاری کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔

اس کے علاوہ انہوں نے 42,472 کروڑ روپے کی قرض کی حد بھی مانگی، جو 2021-22 میں دی گئی تھی اور کووڈ کی وبا کے دوران اس میں 17,923 کروڑ روپے کی کمی کی گئی تھی۔ وزیراعلیٰ نے اسے دوبارہ بڑھانے کا کہا ہے۔ میمورنڈم میں کہا گیا کہ ریاستی قرض لینے کی حد اب محدود ہے کیونکہ پچھلی حکومت حد سے زیادہ قرض لیتی تھی۔ تاہم اس میں حکومت کا کوئی قصور نہیں۔

انہوں نے قواعد کے مطابق دی گئی قرض کی حد کو بھی کم کر دیا ہے۔انہوں نے پی ایم مودی سے اپیل کی کہ وہ پولاورم پروجیکٹ پر تکنیکی مشاورتی کمیٹی کے 55,548 کروڑ روپے کے نظرثانی شدہ تخمینوں کو قبول کریں، پینے کے پانی کی فراہمی کو اپنا حصہ سمجھیں اور تعمیر کو تیز کرنے کے لیے فوری طور پر ایڈہاک بنیادوں پر 10,000 کروڑ روپے جاری کریں۔ بعد میں انہوں نے مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ سے بھی اس پر بات چیت کی۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/Qx94S

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.