Home / اہم ترین / بنگلہ دیش:معاشی بحران،ایندھن کی قیمت میں اضافہ،عوام کا احتجاج

بنگلہ دیش:معاشی بحران،ایندھن کی قیمت میں اضافہ،عوام کا احتجاج

ڈھاکہ:(ہرپل نیوز؍ایجنسی)8؍اگست:بنگلہ دیش میں حکومت نے مہنگائی کے ستائے عوام کو ایک اور بڑا جھٹکا دیا ہے۔ گزشتہ رات پٹرول-ڈیزل کی قیمتوں میں 51.7 فیصد اضافہ کیا گیا تھا۔ یہ ملکی تاریخ میں ایندھن کی قیمت میں سب سے بڑا اضافہ بتایا جا رہا ہے۔ یہ پہلے ہی مہنگائی کا شکار عوام پر دوہرا عذاب ہے۔عوامی حلقوں کی طرف سے احتجاج شروع ہوگیاہے۔

رات 12 بجے سے نافذ ہونے والی نئی قیمتوں کے مطابق ایک لیٹر آکٹین ​​کی قیمت اب 135 ٹکے ہو گئی ہے جو کہ گزشتہ 89 ٹکے کے نرخ سے 51.7 فیصد زیادہ ہے۔ بنگلہ دیش میں اب ایک لیٹر پیٹرول کی قیمت 130 ٹکے ہے، یعنی کل رات سے اس میں 44 ٹکا یا 51.1 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

بجلی، توانائی اور معدنی وسائل کی وزارت نے ایندھن کی قیمتوں میں اضافے سے متعلق اعلامیہ جاری کیا ہے۔ اس میں کہا گیا ہے کہ یہ فیصلہ بین الاقوامی مارکیٹ میں ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے کیا گیا ہے۔ کم قیمت پر ایندھن فروخت کرنے کی وجہ سے بنگلہ دیش پیٹرولیم کارپوریشن (بی پی سی) کو فروری اور جولائی کے درمیان 8,014.51 ٹکا کا نقصان ہوا ہے۔

وزارت کی پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ بین الاقوامی منڈی میں ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے ہندوستان سمیت کئی ممالک پہلے ہی یہ فیصلہ کر چکے ہیں۔ بنگلہ دیش اپنے زرمبادلہ کے ذخائر کو بڑھانے کی کوششوں کے درمیان عالمی بینک اور ایشیائی ترقیاتی بینک سے 2 بلین ڈالر کا مطالبہ کر رہا ہے۔

بنگلہ دیش کی 416 بلین ڈالر کی معیشت برسوں سے دنیا کی سب سے تیزی سے ترقی کرتی ہوئی معیشت رہی ہے، لیکن روس-یوکرین جنگ کی وجہ سے توانائی اور خوراک کی بڑھتی ہوئی قیمتوں نے اس کے درآمدی بل اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کو بڑھا دیا ہے۔

رپورٹ میں اس سے متعلق لوگوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ حکومت نے اے ڈی بی اور ورلڈ بینک کو خط لکھ کر ایک ارب ڈالر کا مطالبہ کیا ہے۔ اسی وقت، صرف گزشتہ ہفتے، آئی ایم ایف نے کہا تھا کہ وہ بنگلہ دیش سے قرض حاصل کرنے کی درخواست پر بات کرے گا۔

بنگلہ دیشی میڈیا نے چند روز قبل اپنی ایک رپورٹ میں بتایا تھا کہ ملک انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) سے 4.5 بلین ڈالر چاہتا ہے، جس میں بجٹ اور ادائیگیوں کے توازن کی مدد شامل ہے۔ آپ کو بتاتے چلیں کہ بنگلہ دیش کی ٹیکسٹائل انڈسٹری چین کے بعد دنیا کی نمبر 2 ایکسپورٹر ہے۔ فیشن برانڈ ٹامی ہل فیگر کی کمپنی پی وی ایچ کارپوریشن کو جولائی میں نئے آرڈرز موصول ہوئے، جو پچھلے سال کے مقابلے میں 20% کم ہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/Yd1Ak

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.