Home / اہم ترین / جاری رہے گی تحریک، یہ ہندوستان ہے شمالی کوریا نہیں کہ صاحب نے یکطرفہ فیصلہ سنادیا : ٹکیت کی دو ٹوک

جاری رہے گی تحریک، یہ ہندوستان ہے شمالی کوریا نہیں کہ صاحب نے یکطرفہ فیصلہ سنادیا : ٹکیت کی دو ٹوک

لکھنو:(ہرپل نیوز؍ایجنسی)23؍نومبر:  سنیکت کسان مورچہ کی مہاپنچایت میں راکیش ٹکیت نے کہا کہ جب نریندر مودی گجرات کے وزیر اعلیٰ تھے تو انہوں نے حکومت ہند کو ایک رپورٹ بھیجی تھی جس میں ایم ایس پی پر گارنٹی قانون بنانے کی سفارش کی گئی تھی۔ اب اس پر عملدرآمد کیوں نہیں ہو رہاہے؟۔

انہوں نے کہا کہ واضح جواب دینا ہو گا، گھومنے سے کام نہیں چلے گا۔ کسانوں کو حکومت کو اپنی بات سمجھانے میں ایک سال لگا۔ مسئلہ ایک نہیں بہت سے ہیں۔ بیج بل، ایم ایس پی گارنٹی، دودھ کی پالیسی، بجلی کے بل جیسے کئی مسائل ہیں، جن پر کسانوں کی جدوجہد جاری رہے گی۔انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ میں جو 17 قوانین لائے جارہے ہیں ان کی منظوری بھی نہیں ہونے دیں گے، ملک بھر میں ان کی مخالفت کی جائے گی۔ کسان اس وقت تک اپنے گھروں کو واپس نہیں جائیں گے جب تک حکومت بات چیت کے بعد ہر مسئلہ پر بات نہیں کرتی۔انہوں نے مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ اجے مشرا کو بھی نشانہ بنایا اور کہا کہ وہ لکھیم پور کھیری میں ایک شوگر مل کا افتتاح کرنے جا رہے ہیں۔ اگر ٹینی نے شوگر مل کا افتتاح کیا تو کسان ڈی ایم کے گھر پر سارا گنا ڈال کر آئیں گے۔

انہوں نے اپنے مطالبات کو دہرایا کہ جب تک کسانوں کے خلاف درج مقدمات کو واپس نہیں لیا جاتا، جب تک ایم ایس پی پر گارنٹی کا قانون نہیں بنایا جاتا، فصلوں کی مناسب قیمت اس طرح کے تمام مسائل پر بات چیت تک کوئی معاہدہ نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ یوپی حکومت گنے کی شرح کا اعلان کرنے میں تیسرے نمبر پر ہے۔ ابھی تک اوپر سے کسانوں کو بقایا جات نہیں دئے گئے۔ ان کے واجبات فوری ادا کئے جائیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/bvzEV

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.