Home / اہم ترین / راجستھان: ہنومان گڑھ کے تین قصبوں میں تشدد ، انٹرنیٹ سروس ٹھپ، 32 افراد گرفتار

راجستھان: ہنومان گڑھ کے تین قصبوں میں تشدد ، انٹرنیٹ سروس ٹھپ، 32 افراد گرفتار

جے پور:(ہرپل نیوز؍ایجنسی)13؍مئی: راجستھان کے ہنومان گڑھ ضلع کے نوہر قصبے میں کچھ سماج دشمن عناصر نے وشو ہندو پریشد کے ایک عہدیدار کی پٹائی کی۔ اس کی وجہ سے نوہر کے علاوہ بھدرا اور راوتسر قصبوں میں انٹرنیٹ سروس بند کر دی گئی ہے۔ پولیس کے مطابق قصبے میں کشیدگی کے پیش نظر پولیس کی اضافی نفری تعینات کر دی گئی ہے اور 32 افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

شہر میں حالات معمول کے مطابق ہیں۔ ریاستی ڈائریکٹرجنرل آف پولیس ایم ایل لاتھر نے یہاں نوہر میں امن و امان کی صورتحال کا اعلیٰ سطحی جائزہ لیا اور سماج دشمن عناصر کے خلاف سخت کارروائی کی ہدایت دی۔ لاتھر نے کہا ہے کہ آپریشن وکوس کے تحت انتشار پیدا کرنے کی کوشش کرنے والے 32 افراد کو تعزیرات ہند کی دفعہ 151 کے تحت گرفتار کیا گیا ہے۔ پولیس کو بتایا کہ علاقے میں لاٹھیاں تقسیم کرنے اور اشتعال انگیز تقریریں کرنے کے وائرل ویڈیوکی تحقیقات کے بعد کارروائی کرے گی۔

انہوں نے کہاہے کہ احتیاط کے طور پر، نوہر میں کافی پولیس فورس تعینات کی گئی ہے اور نوہر کے ساتھ ساتھ قریبی بھدرا اور راوتسر قصبوں میں انٹرنیٹ کو بند کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نوہر میں امن و امان کی صورتحال بالکل نارمل ہے، بازار کھلے ہیں۔ پولیس کے مطابق بدھ کی رات دیر گئے اقلیتی برادری کے کچھ لوگ مندر سے متصل ایک خالی پلاٹ میں بیٹھے تھے۔ تب ستویر سہارن اورکونسل کے دوسرے لوگوں نے اسے وہاں سے جانے کو کہا۔گرماگرم بحث کے بعد ملزمان نے سہارن اور دیگر کو مارا پیٹا۔

پولیس کے مطابق زخمی ستویر بیکانیر کے پی بی ایم اسپتال میں زیرعلاج ہے اور اس کی حالت اب ٹھیک ہے۔ بیکانیر کے ڈویژنل کمشنر نیرج کے۔ پون، انسپکٹر جنرل آف پولیس اوم پرکاش، ڈسٹرکٹ سپرنٹنڈنٹ آف پولیس اجے سنگھ اس وقت نوہر میں ڈیرے ڈالے ہوئے ہیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/jicnj

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.