Home / اہم ترین / سعودی کابینہ کا حج انتظامات کا جائزہ: عیدالاضحیٰ پر مسجد الحرام 2 روز بند رہے گی

سعودی کابینہ کا حج انتظامات کا جائزہ: عیدالاضحیٰ پر مسجد الحرام 2 روز بند رہے گی

جدہ/مکہ(ہرپل نیوز؍ایجنسی)23؍جولائی : سعودی حکام نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے باعث عید الاضحیٰ کے موقع پر مسجدالحرام کو نمازیوں کے لیے 2 روز تک بند رکھنے کا اعلان کر دیا۔

عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق سعودی سیکورٹی عہدیدار میجر جنرل محمد الاحمدی نے بتایا کہ مسجد الحرام کو یومِ عرفہ اور عید الضحیٰ کے دن نمازیوں کے لیے بند رکھا جائے گا اور مسجد کے بیرونی احاطے میں بھی نماز کی ادائیگی پر پابندی برقرار رہے گی۔ انہوں نے مکہ کے شہریوں پر زور دیا کہ یوم عرفہ کے دن روزہ اپنے گھروں میں افطار کریں۔ ساتھ ہی انہوں نے بتایا کہ مکہ میں منٰی اور مزدلفہ کے مقام پر بنایا گیا کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر مکمل طور پر فعال ہوگا۔ سعودی وزارت اسلامی امور نے حج مقامات منیٰ، مزدلفہ اور عرفات کی تمام مساجد میں اصلاح ومرمت، صفائی، ایئرکنڈیشن، عبادت اور حج کے تمام انتظامات مکمل کرلیے۔ تمام انتظامات وائرس کی وبا سے نمٹنے کے لیے مقرر حفاظتی تدابیر کو مدنظررکھ کر کیے گئے ہیں۔ وزارت اسلامی امور نے مسجد نمرہ اور مسجد المشعر الحرام کو سینیٹائز کرایا ہے۔ مساجد میں ہوا کی صفائی کا انتظام بھی کیا گیا ہے۔ مسجد میں فاصلے کے لیے علامتیں لگادی گئی ہیں۔ یہ سارا کام انجینیئرز اور انتظامی عملے کے تعاون سے انجام دیا گیا ہے۔

خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعودی کی زیرصدارت کابینہ کا ورچوئل اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں کرونا کی وبا کی روک تھام کے لیے اٹھائے گئے اقدامات ، فریضہ حج کی تیاریوں، حج کے موقعے پر حجاج کرام کی صحت کی حفاظت کے حوالے سے انتظامات کا جائزہ لیا گیا۔ کابینہ کے رکن اور وزیر مملکت ڈاکٹر عصام بن سعد بن سعید نے کہا کہ کابینہ کے اجلاس میں جی20اجلاس کی سعودی عرب کی میزبانی کے سلسلے میں تیاریوں کا جائزہ لیا گیا۔ جی 20اجلاس کے مملکت کی میزبانی میں انعقاد اور اس کی تجارتی اور اقتصادی اہمیت پر روشنی ڈالی گئی۔ اجلاس میں یمن میں حوثی ملیشیا کی دہشت گردانہ کارروائیوں کی مذمت کی گئی اور حوثیوں کی طرف سے سعودی عرب پر بیلسٹک میزائلوں اور بمبار ڈرون طیاروں سے حملوں پر بھرپور جوابی کارروائی کرنے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔ علاقائی اور عالمی مسائل پر بھی غور کیا گیا۔ اجلاس میں لیبیا میں جاری لڑائی اور جنگ بندی کی کوششوں پربھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس کے علاوہ اجلاس میں دہشت گردی کے خلاف جنگ اور اس میں سعودی عرب کے کردار اور ذمہ داریوں پربھی بات چیت کی گئی۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/ECTdF

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.