Home / اہم ترین / سمیر وانکھیڑے کے والد دلت تھے اور ماں مسلمان، جعلی سرٹیفکیٹ سے حاصل کی نوکری : نواب ملک

سمیر وانکھیڑے کے والد دلت تھے اور ماں مسلمان، جعلی سرٹیفکیٹ سے حاصل کی نوکری : نواب ملک

ممبئی: (ہرپل نیوز؍ایجنسی)26؍اکتوبر:مہاراشٹرا کے کابینہ کے وزیر نواب ملک نے دعویٰ کیا ہے کہ این سی بی افسر سمیر وانکھیڑے کے معاملے میں ایک نیا خط سامنے آیا ہے، جسے ایک نامعلوم شخص نے لکھا ہے، جو خود این سی بی کا ایک ملازم بتاتا ہے۔ اس میں انہوں نے اپنا نام نہیں بتایا۔

اس خط کے مطابق امیت شاہ استھانہ اور سمیر وانکھیڑے کو این سی بی لے کر آئے۔ سمیر وانکھیڑے اور کے پی ایس نے دیپکا جیسی بڑی اداکارہ سے بڑی رقم کمائی ہے۔ سمیر وانکھیڑے کو بڑا معاملہ دکھانے کے لیے کبھی کبھی چھاپوں میں ملنے والی منشیات کو زیادہ دکھاتے ہیں۔ نواب ملک نے پریس کانفرنس میں کہا کہ پچھلے دو دنوں میں این سی بی خاص کر زونل ڈائریکٹر کے بارے میں بہت سی معلومات سامنے آئی ہیں، ہماری لڑائی این سی بی سے نہیں ہے۔ پچھلے کئی سالوں میں اس ادارے سے باز پرس نہیں ہوئی۔

ایک افسر نے جعلی سرٹیفکیٹ کے ذریعے نوکری لی۔ میں نے کل برتھ سرٹیفکیٹ شیئر کیا تھا لیکن میں مذہب کے نام پر کبھی سیاست نہیں کرتا۔سوال یہ ہے کہ جو شخص جعلی سرٹیفکیٹ بنا کر درج فہرست ذات کے ذریعے نوکری حاصل کرتا ہو اس نے غریبوں کا حق مارا ہے۔ممبئی میں برتھ سرٹیفکیٹ آن لائن مل جاتی ہے۔

وانکھیڑے کی بہن کا سرٹیفکیٹ آن لائن دستیاب ہے، لیکن سمیر کا نہیں ہے۔ سمیر کے والد پیدائشی طور پر دلت تھے لیکن بعد میں شادی کے بعد مذہب تبدیل کر لیا۔ اس کے بعد تمام لوگ مسلم مذہب کے مطابق زندگی بسر کرتے رہے، بعد میں دلت کے طور پر نوکری کے لیے درخواست دی۔

اگر یہ جعلی سرٹیفکیٹ ہے تو سمیر وانکھیڑے کو اپنا پیدائشی سرٹیفکیٹ رکھنا چاہیے، نہ کہ اپنے والد کا ۔ جب کوئی مسلم یا کسی بھی مذہب کو قبول کرتا ہے تو اس کا اپنی پرانی ذات سے کوئی تعلق نہیں ہوتا۔ اس کے باوجود ریزرویشن کا استعمال کیا گیا۔

انہوں نے بتایا کہ دنیشور وانکھیڑے کا تعلق درج فہرست ذات سے ہے اور جب انہوں نے ایک مسلم خاتون سے شادی کی تو انہوں نے مسلم مذہب کی پیروی کی۔ مجھے لگتا ہے کہ یہ فرضی سرٹیفکیٹ دکھا کر انہوں نے ایک قابل ایس سی امیدوار کا حق چھین لیا ہے۔ پربھاکر سئیل کی طرح دوسرے گواہ بھی میرے پاس آئے ہیں۔

انہوں نے جو معلومات دی، وہی معلومات اس خط میں موجود ہیں۔ اس لیے مجھے یقین ہے کہ یہ این سی بی سے آیا ہواخط ہے۔نواب ملک نے مزید کہا کہ میں یہ نہیں کہہ رہا کہ آپ فوری ایکشن لیں، آپ تحقیقات کریں، جو معلومات آئیں اس کی بنیاد پر کارروائی کریں۔ کئی دلت تنظیمیں اس سرٹیفکیٹ کے بارے میں مجھے فون کر رہی ہیں۔ وہ اس سرٹیفکیٹ کی تصدیق اور درستگی کے لیے اپیل دائر کر سکتے ہیں۔ اگر کسی کو لگتا ہے کہ یہ جعلی سرٹیفکیٹ ہے تو اس کے گھر والوں کو اصلی دکھانا چاہیے۔

معاملہ جلد ہی ویلیڈٹی کمیٹی کے پاس جائے گا۔ اس خط میں انہوں نے این سی بی کے کام کے بارے میں بھی تفصیل سے بتایا ہے کہ کس طرح ایماندار افسران کو دبایا جاتا ہے۔

نواب ملک جھوٹا الزام لگارہے ہیں، ثبوت ہے تو عدالت میں پیش کریں: کرانتی وانکھیڑے

سمیر وانکھیڑے کی اہلیہ کرانتی وانکھیڑے نے نواب ملک کے تمام دعوؤں کو جھوٹا قرار دیا ہے۔سمیر وانکھیڑے کی اہلیہ نے کہا کہ کوئی بھی کسی کے خلاف خط لکھ سکتا ہے۔ ٹویٹر پر کوئی بھی کچھ بھی لکھ سکتا ہے، لیکن یہ سچ نہیں ہے۔ اگر ان کے پاس ثبوت ہیں تو وہ عدالت میں رکھیں گے۔

یہ سچ نہیں ہے. میرے شوہر کی ذات کا اس کیس سے کوئی تعلق نہیں۔ الزامات لگا رہے ہیں تو ثبوت بھی سامنے رکھیں۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ ایک شخص جعلی بنا سکتا ہے لیکن ان کے گاؤں کا سرٹیفکیٹ دیکھ لیں، پورا گاؤں جعلی نہیں بنا سکتا۔

سمیر کے کاغذات اصلی ہیں۔انہوں نے کہا کہ میرے پاس جوسمیر وانکھیڑے کی اصلی پیدائشی سرٹیفکیٹ ہے وہ ’فادر ان لا ‘دکھ چکے ہیں،ایسے میں اگر کوئی ثبوت ہے تو اسے وہ عدالت میں رکھیں۔

کرانتی نے کہا کہ ہم سادہ لوگ ہیں، ہمارے پاس اتنے پیسے نہیں ہیں۔ لیکن اگر ضرورت پڑی تو ہم عدالت سے ضرور رجوع کریں گے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/ZtZ9b

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.