Home / اہم ترین / سی اے اے مخالف مظاہرے میں تشدد کے22 ملزمان کو سپریم کورٹ سے ملی ضمانت

سی اے اے مخالف مظاہرے میں تشدد کے22 ملزمان کو سپریم کورٹ سے ملی ضمانت

منگلورو(ہرپل نیوز،ایجنسی) 12ستمبر: 19دسمبر 2019کو منگلورو میں سی اے اے اوراین آر سی کی مخالفت میں مظاہرے کے دوران تشدد میں ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار 22ملزمین کو سپریم کورٹ سے ضمانت مل گئی ہے۔اس سے پہلے 17فروری کو کرناٹکا ہائی کورٹ نے مذکورہ ملزمین کو ضمانت منظور کی تھی ، جس پر سپریم کورٹ نے 6مارچ کو روک لگادی تھی۔جس کے بعدسپریم کورٹ میں چیف جسٹس ایس اے بوبڑے ، جسٹس اے ایس بوپنا اورجسٹس وی راما سبرامنین کی بینچ کے سامنے عاشق علی اور دیگر ملزمین کے لئے سینئر ایڈوکیٹ مُکل روہتگی کی قیادت میں کیرالہ ہائی کورٹ کے سابق جج نے پیروی کی ۔دوسری جانب سالسیٹر جنرل تشار مہتہ نے حکومت کی طرف سے پیروی کی۔
خیال رہے کہ احتجاجی مظاہرے کے دوران پھوٹ پڑنے والے تشدد پر قابو پانے کے لئے پولیس نے جو فائرنگ کی تھی اس میں دو مسلم نوجوان ہلاک ہوگئے تھے۔ جس کی انکوائری مجسٹریٹ کے ذریعے کی جارہی ہے۔ضمانت کی عرضی پر سماعت مکمل کرنے کے بعد سپریم کورٹ نے ملزمین کو فی کس 25000روپے کا بانڈ فراہم کرنے اور کسی بھی پرتشدد کارروائی اور میٹنگس میں شرکت نہ کرنے کی ہدایت دیتے ہوئے ضمانت منظور کردی۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/FPiLt

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.