Home / اہم ترین / شراب نہیں تو سینیٹائزر ہی سہی ۔ آندھرا میں سینیٹائزر پینے سے، 9 کی موت۔ کئی کی حالت نازک

شراب نہیں تو سینیٹائزر ہی سہی ۔ آندھرا میں سینیٹائزر پینے سے، 9 کی موت۔ کئی کی حالت نازک

پرکاشم ،اندھرا( ہرپل نیوز، ایجنسی) 31جولائی ۔آندھرا پردیش کے پرکاشم ضلع میں لاک ڈاؤن کے سبب شراب نہ ملنے کی وجہ سے سینیٹائزر کا استعمال کرنا کچھ لوگوں کے لیے مہلک ثابت ہو گیا۔ شراب کی طلب میں سینیٹائزر پینے کی وجہ سے 9 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔ پولس نے جمعہ کو اس سلسلے میں بتایا کہ تین لوگوں کی موت جمعرات کو ہی ہو گئی تھی جب کہ 6 کی موت آج ہوئی ہے۔ یہ واقعہ پرکاش ضلع میں کروچیدو ڈویژن ہیڈکوارٹر کا ہے۔لاک ڈاؤن کے سبب شہر اور اس کے آس پاس کے سبھی گاؤں میں شراب کی دکانیں گزشتہ دس دنوں سے بند ہیں۔ ایسے میں شراب کے عادی ان لوگوں نے سینیٹائزر کا ہی استعمال کرنا شروع کر دیا جس کا استعمال ہاتھوں کی صفائی کے لیے کیا جاتا ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ مہلوکین میں تین بھکاری بھی شامل ہیں۔ ان میں سے دو یہیں واقع ایک مقامی مندر میں بھیک مانگا کرتے تھے۔ جمعرات کی رات ان کی پیٹ میں اچانک تیز جلن کا مسئلہ پیدا ہو گیا جس کے بعد ایک کی فوراً موت ہو گئی اور دوسرے کو دارسی میں اسپتال لے جایا گیا جہاں علاج کے دوران موت واقع ہو گئی۔ایک دیگر 28 سالہ شخص نے دیسی شراب میں سینیٹائزر کو ملا کر اسے پیا جس کے بعد وہ اپنے گھر پر بیہوش ہو کر گر پڑا۔ اسپتال لے جانے کے دوران اس کی موت ہو گئی۔ 6 دیگر لوگوں کو جمعہ علی الصبح اسپتال لے جایا گیا جہاں ان سبھی کی موت کی خبر دی گئی۔ پولس اب یہ پتہ لگانے کی کوشش م یں مصروف ہے کہ کیا اسی طرح کی شکایتوں کے ساتھ مزید لوگوں کو بھی اسپتال لے جایا گیا ہے یا نہیں۔پولس سپرنٹنڈنٹ سدھارتھ کوشل نے واقعہ کی جانچ کا حکم صادر کر دیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ سینیٹائزر کو علاقے کی دکانوں سے ضبط کر لیا گیا ہے جنھیں اب کیمیائی تجزیہ کے لیے بھیجا گیا ہے۔ پولس یہ جاننے کی کوشش کر رہی ہے کہ کیا یہ سبھی صرف سینیٹائزر کا ہی استعمال کر رہے تھے یا کسی دیگر کیمیکل کے ساتھ بھی اس کو ملایا گیا تھا۔بشکریہ قومی آواز

The short URL of the present article is: http://harpal.in/arnzM

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.